لاوڈاسپیکر کی تیزآوازپر پابندی کا مطالبہ ،مفاد عامہ کی عرضداشت دائر،فجر کی اذان پر اثرپڑنے کا امکان

ممبئی۔ بامبے ہائی کورٹ میں دائرکردہ ایک مفاد عامہ کی عرضداشت میں لاوڈاسپیکر کی تیز آواز کو کم کرنے اور مقررہ اوقات صبح 6بجے سے رات 10بجے کے بعد لاوڈاسپیکر پر پابندی کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

Jan 21, 2017 09:24 AM IST | Updated on: Jan 21, 2017 09:30 AM IST

ممبئی۔ بامبے ہائی کورٹ میں دائرکردہ ایک مفاد عامہ کی عرضداشت میں لاوڈاسپیکر کی تیز آواز کو کم کرنے اور مقررہ اوقات صبح 6بجے سے رات 10بجے کے بعد لاوڈاسپیکر پر پابندی کا مطالبہ کیا گیا ہے۔اس عرضداشت میں عبادت گاہوں میں تیز آواز میں اسپیکر کے استعمال پر بھی پابندی پرزور دیاگیا تاکہ صبح شہریوں کی نیند خراب نہ ہو،اس مقدمہ کے پیش نظرفجر کی اذان پر اثر ہوسکتا ہے۔ محکمہ پولیس میں اس مفاد عامہ کی عرضداشت کے سبب بے چینی پھیل گئی ہے۔امکان ہے کہ اس عرضداشت کے بعد پولیس نے تیز آواز میں لاؤڈاسپیکر بجانے اور مقررہ اوقات سے پہلے یا بعد میں بھی اس کا استعمال کرنے والوں کے خلاف سخت کارروائی کا فیصلہ کیا ہے ۔

ذرائع کے مطابق بامبے ہائی کورٹ میں لاوڈاسپیکر کے حد سے زیادہ اور تیز آواز میں استعمال کرنے کے خلاف دائر کردہ مفاد عامہ کی عرضداشت پی آئی ایل نمبر 10/173اور20/15ڈاکٹر مہیش بیڈیکر اور بھاویش پینڈینیکر نے دائر کی ہے اور اس میں حکومت مہاراشٹر اورمحکمہ پولیس کو پارٹی بنایا ہے اور یہ کہا گیا ہے کہ پابندی اور مقررہ اوقات کے باوجود لاوڈاسپیکر کا بے جا استعمال کیا جاتا ہے اور اس سلسلے میں کوئی کارروائی نہیں کی جاتی ہے ،اس لیے پولیس کو سخت ہدایت دی جانی چاہئے کہ سخت کارروائی کرے ۔ بتایا جاتا ہے کہ مفاد عامہ کی عرضداشت میں الزام لگایا گیا ہے کہ شہر میں لاوڈاسپیکر کا بے جا استعمال عبادت گاہوں کے ساتھ شادی بیاہ ،سالگرہ اور دیگر خوشی کے موقعوں پر کیاجاتا ہے اور مقرر ہ اوقات کے بعد رات دیر گئے تک استعمال ہوتاہے ۔اس عرضداشت میں یہ بھی کہا گیاہے کہ اعدادوشمار کے مطابق جنوبی وسطی ممبئی کے تین پولیس تھانوں انٹاپ ہل ،وڈالا اور وڈالا ٹی ٹی یا ٹرک کرمنل کی حدودمیں رات دن لاوڈاسپیکر بلا اجازت استعمال کیے جاتے ہیں اور ان تنظیموں اور اداروں کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی جاتی ہے ۔

لاوڈاسپیکر کی تیزآوازپر پابندی کا مطالبہ ،مفاد عامہ کی عرضداشت دائر،فجر کی اذان پر اثرپڑنے کا امکان

File image of Bombay high court

مفاد عامہ کی عرضداشت کے سبب پولیس تھانوں اور خصوصاً ان تین پولیس اسٹیشنوں میں عبادت گاہوں اور تنظیموں کے ذمہ داروں کی ایک میٹنگ طلب کی گئی ہے تاکہ شہریوں میں بیداری پیدا کرنے کے ساتھ ساتھ انہیں متنبہ بھی کیا جاسکے کہ لاوڈاسپیکر کا بیجا استعمال نہ کریں اور اس کے لیے اب پولیس اسٹیشن سے منظوری حاصل کرنا لازمی ہوگا اور وہ بھی چھ مہینے کے لیے اور پھر اس کی تجدید کرانا ہوگی۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز