دائیں بازوکی ہندوتنظیم کے رکن کوبڑی مقدارمیں دھماکہ خیزاشیا کے ساتھ ممبئی اے ٹی ایس نے گرفتارکیا

مہاراشٹراے ٹی ایس نے ایک دائیں بازو ہندو تنظیم کے ایک مشکوک رکن کو گرفتارکیا ہے۔ پولیس نے کہا ہے کہ پال گھرضلع میں نالا سپارا علاقے میں اس کے گھرسے بڑی مقدار میں دھماکہ خیزاشیا ملے ہیں۔

Aug 10, 2018 05:46 PM IST | Updated on: Aug 10, 2018 05:52 PM IST

مہاراشٹرمیں انسداد دہشت گردی اسکواڈ (اے ٹی ایس) نے ایک دائیں بازو ہندو تنظیم کے ایک مشکوک رکن کو گرفتارکیا ہے۔ پولیس نے کہا ہے کہ پال گھرضلع میں نالا سپارا علاقے میں اس کے گھرسے بڑی مقدار میں دھماکہ خیزاشیا ملے ہیں۔

پولیس کےایک افسر نے کہا کہ "ہندو گئو ونش رکشا سمیتی" (ہندو گایوں کا تحفظ کرنے والی کمیٹی) کے رکن ویبھوراوت کو جمعرات کو نالا سپارا مغرب میں بھنڈارعالی سے گرفتارکیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ اے ٹی ایس کے افسران نے اس کے گھرپرچھاپہ مارا، جہاں انہیں بم سمیت بڑی مقدار میں دھماکہ خیزمواد ملے ہیں۔

Loading...

انہوں نے بتایا کہ ملزم کو گرفتار کرلیا گیا ہے اوراس بات کی تفتیش کی جارہی ہے کہ کیا دھماکہ خیز مواد میں آرڈی ایکس بھی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اے ٹی ایس کی ٹیم ملزم کو لے کرممبئی لوٹ آئی ہے، اس سے پوچھ گچھ کی جائے گی۔ ملزم کی جمعہ کی شام تک ملزم کو عدالت میں پیش کئے جانے کا امکان ہے۔

ایک بیان میں "ہندو جن جاگرتی سمیتی" نے راوت کی گرفتاری کو "مالیگاوں پارٹ ٹو" قرار دیا ہے۔ واضح رہے کہ مہاراشٹرکے مالیگاوں کے انجمن چوک اوربھیکوچوک پر 29 ستمبر 2008 کوبم دھماکے ہوئے تھے۔ ان میں 6 لوگوں کی موت ہوگئی تھی اور 101 لوگ زخمی ہوئے تھے، ان دھماکوں میں موٹرسائیکل استعمال کی کی گئی تھی۔

ہندو جن جاگرتی سمیتی کے ریاستی کنوینر سنیل گھنوت نے کہا کہ "ویبھو راوت ایک گئو رکشک ہیں، وہ ہندو گئو ونش سمیتی کے لئے کام کرتے ہیں، وہ ہندو جن جاگرتی سمیتی کے پروگراموں اور تحریکوں میں حصہ لیتے تھے۔ حالانکہ انہوں نے دعوی کیا کہ گزشتہ کچھ ماہ سے راوت نے کسی بھی پروگرام میں حصہ نہیں لیا تھا"۔

گھنوٹ نے مزید کہا کہ ہندو تنظیم کے کارکنان کو فرضی معاملات میں پھنسا کر انہیں غیر ضروری طور پر پریشان کیا جانا کوئی نئی بات نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ آ ج شائع خبروں کو دیکھتے ہوئے شک ہوتا ہے کہ ویبھو راوت کی گرفتاری کیا "مالیگاوں پارٹ -2 معاملہ ہے"؟

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز