ادھو ٹھاکرے نے گری ہوئی گندی سیاست اختیار کی ہے : راج ٹھاکرے

Oct 16, 2017 08:10 AM IST | Updated on: Oct 16, 2017 08:10 AM IST

ممبئی۔ مہاراشٹر نونرمان سینا (منسے) کے صدر راج ٹھاکرے نے یہاں ان کی پارٹی کے چھ کونسلروں کے شیوسینا میں شمولیت پر سینا سربراہ ادھو ٹھاکرے کو تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ ادھو ٹھاکرے گری ہوئی اور نیچ حرکتیں کرکے گندی سیاست کررہے ہیں نیز ان کی اس حرکت کو وہ زندگی میں کبھی نہیں بھول سکتے ہیں ۔ منسے کے کونسلروں کی بغاوت پر انہوں نے کہا کہ اب تالی ہاتھ پر نہیں بلکہ ’’گال‘‘ پر ماری جائے گی ۔

راج ٹھاکرے نے الزام عائد کیا کہ شیوسینا نے ایک ایک کونسلروں کو پانچ کروڑ روپیہ دے کر خریدا ہے نیز ادھو ٹھاکرے کی اوچھی حرکتوں کی وجہ سے خود انہوں نے شیوسینا کو خیر آباد کہہ کر اپنی نئی سیاسی جماعت منسے قائم کی ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ریاست کی عوام اس کو نہیں فراموش کرے گی اور وہ خود بھی اس کو نہیں بھول پائیں گے۔ پارٹی میں بغاوت پر دو دنوں تک خاموشی اختیار کئے راج ٹھاکرے سے جب اخبار نویسوں سے یہ دریافت کیا کہ آیا ان کی پارٹی اور شیوسینا کے درمیان کوئی خفیہ سمجھوتہ ہوا ہے تو پارٹی سربراہ نے کہا کہ یہ تمام بے بنیاد باتیں ہیں نیز اگر اس میں رتی بھر بھی صداقت ہوتی تو وہ اپنے تمام سات کونسلروں کو پارٹی چھوڑ کر نیامیں جانے کا حکم دیتے ۔

ادھو ٹھاکرے نے گری ہوئی گندی سیاست اختیار کی ہے : راج ٹھاکرے

راج ٹھاکرے: فائل فوٹو۔

انہوں نے اس بات کا اعتراف کیا کہ ہمیشہ سے انہوں نے اپنے چچا زاد بھائی ادھو ٹھاکرے کی مدد کی ہے لیکن انھیں شیوسینا سے یہ توقع نہیں تھی ۔ واضح رہے کہ گذشتہ دنوں منسے کے کونسلروں نے اپنی پارٹی سے بغاوت کی تھی ۔ اور اسکے ساتھ میں سے چھ کونسلروں نے شیوسینا میں شمولیت اختیار کرلی تھی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز