Live Results Assembly Elections 2018

تحریک اوقاف کے ذمہ داروں نے مہاراشٹراسٹیٹ وقف بورڈ کے دفتر پر لگایا تالہ

اورنگ آباد۔ مہاراشٹر اسٹیٹ وقف بورڈ پر تالا لگا دیا گیا۔ یہ انتہائی اقدام تحریک اوقاف مہاراشٹر کے صدر شبیر انصاری کی قیادت میں کیا گیا ۔

Nov 07, 2017 07:24 PM IST | Updated on: Nov 07, 2017 07:24 PM IST

اورنگ آباد۔ مہاراشٹر اسٹیٹ وقف بورڈ پر تالا لگا دیا گیا۔  یہ انتہائی اقدام  تحریک اوقاف مہاراشٹر کے صدر شبیر انصاری کی قیادت میں کیا گیا ۔ تحریک کے ذمہ داروں نے وقف حکام  پر لاپروائی کا الزام عائد کرتے ہوئے ریاستی حکومت سے قصور واروں کے خلاف فوری کارروائی  کا مطالبہ کیا ۔ یہ سب کچھ ایسے وقت ہو رہا ہے جب  وقف بورڈ کے چیئرمین ایم ایم شیخ پرعدم اعتماد کی تلوار لٹک رہی ہے ۔  مہاراشٹر اسٹیٹ وقف بورڈ کے حکام کو تحریک اوقاف کے ذمہ داروں کی برہمی کا سامنا کرنا پڑا ۔ تحریک  اوقاف کے کارکنوں نے وقف بورڈ کے اکاؤنٹ سیکشن کو  لاک کردیا ۔ ان کا دعوی ہے کہ وہ  صبح دس بجے سے وقف افسر کا انتظار کر رہے  تھے لیکن متعلقہ افسر اپنی سیٹ پر موجود نہیں تھے ۔ تحریک کے  صدر شبیر انصاری کی قیادت میں تحریک کے کارکنوں نے  وقف بورڈ کو تالا لگایا ۔ اس موقع پر بورڈ حکام کے خلاف نعرے بازی بھی کی گئی ۔ تحریک اوقاف کے ذمہ داروں  نے بورڈ کو تحلیل کرنے کا مطالبہ کیا ہے ۔  شیبر انصاری کا کہنا ہے کہ  وقف حکام کی  تاناشاہی کو اجاگر کرنے کے لیے انھیں یہ حتمی قدم اٹھا نا پڑا۔

ویسے مہاراشٹر اسٹیٹ وقف بورڈ کی گورننگ کمیٹی کے ارکان کی آپسی چپقلش اور کھینچا تانی کوئی نئی یا ڈھکی چھپی بات نہیں ۔  لیکن اس کا راست اثر بورڈ کی کارکردگی پر پڑ رہا ہے ۔  چینج رپورٹ ہو یا رجسٹریشن ہزاروں کی تعداد میں  فائلیں التوا میں پڑی  ہیں ۔  پچھلے تین سال میں پانچ  مرتبہ بورڈ ارکان  کی میٹنگ ہوئی لیکن ان میٹنگوں میں بھی سیاسی رسہ کشی کھل کرسامنے آئی ۔ ایسے میں سب سے زیادہ متاثر کوئی ہورہا ہے تو وہ عام آدمی ہے ۔

تحریک اوقاف کے ذمہ داروں نے مہاراشٹراسٹیٹ وقف بورڈ کے دفتر پر لگایا تالہ

مہاراشٹر اسٹیٹ وقف بورڈ پچھلے کئی مہینوں سے مستقل چیف اگزکیٹیو افسر سےمحروم ہے۔ بورڈ کا کام کاج ایڈیشنل سی ای او ایس سی تڑوی کے سہارے  چل رہا ہے۔ تڑوی ریاستی محکمہ اقلیتی فلاح میں جوائنٹ سکریٹری ہیں ۔ ان کے تعلق سے یہ کہا جاتا ہے کہ وہ مہینے میں ایک مرتبہ وقف بورڈ کے دفتر میں حاضری دیتے ہیں۔ ایسے میں بورڈ میں  کام کاج کیسا ہوتا ہوگا، اس کا اندازہ بخوبی لگایا جاسکتا ہے۔ ان سب کے باوجود کچھ لوگوں نے تحریک اوقاف کے اس اقدام  کی مذمت کی ۔ بی جے پی  کے دور حکومت میں تین سال قبل کانگریس لیڈر ایم ایم شیخ کو اتفاق رائے سے وقف بورڈ  کا چیئرمین منتخب کیا گیا تھا۔ اس دوران بورڈ کی سابقہ میٹنگوں میں کچھ اہم فیصلے بھی ہوئے ۔ ان میں پیش امام اور موذنوں کی تنخواہوں میں اضافہ، انکے دو بچوں کی پڑھائی کا خرچ، درخواستوں پر اندرون تیس دن عمل آوری  لازمی،  ممبئی میں ریاستی وقف بورڈ کا دفتر قائم کرنا، ریجنل آفس پر بھی درخواست دینے کی سہولت، پانچ ریجنل دفاتر پر بائیو میٹرک سسٹم کی تنصیب، وقف بورڈ کے لیے ایک فل ٹائم لا آفیسر کا تقرر اور پینسٹھ جائیدادوں پرتقررات کی تجویز حکومت کو روانہ کرنا جیسے فیصلے شامل تھے ۔

لیکن ان فیصلوں میں سے ایک فیصلے پر بھی عمل ہوتا دکھائی نہیں دیا ۔ جس کا نتیجہ  بورڈ ارکان کی برہمی کی صورت میں ظاہر ہوا اور بورڈ کی میٹنگیں اکھاڑے میں تبدیل ہوتی نظر آئیں۔ بات یہی ختم نہیں ہوئی اب تو بورڈ چیئرمین  ایم ایم شیخ کے خلاف ہی تحریک عدم اعتماد پیش کردی گئی ہے ۔ چیئرمین پر الزام  ہے کہ  وہ بورڈ ارکان کو اعتماد میں نہیں لیتے اور من مانے انداز میں فیصلے کرتے ہیں، جس سے بورڈ کو فائدہ ہونے کے بجائے نقصان ہو رہا ہے ۔ چیئرمین کے خلاف داخل تحریک عدم اعتماد پراگلے کچھ دنوں میں فیصلہ متوقع ہے ۔ باوثوق ذرائع کےمطابق چیئرمین پر تحریک عدم اعتماد کی تلوار لٹک رہی ہے ۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز