دارالعلوم نعمانیہ للمومنات : پربھنی میں یتیم بچیوں کی تعلیم و تربیت کے لئے کمربستہ

Mar 22, 2017 10:55 PM IST | Updated on: Mar 22, 2017 10:55 PM IST

پربھنی : یتیم بچیوں کی تعلیم ہر دور میں ایک سنگین مسئلہ رہی ہے ۔ اس مسئلہ کے حل کے لیے کئی ادارے اپنے اپنے طورپر کام کررہے ہیں ۔مہاراشٹر کے پربھنی میں واقع ایسے ہی ایک ادارے نے یتیم بچیوں کودینی اور عصری تعلیم دے کر اپنی ایک الگ شناخت بنائی ہے ۔

مولانا محظو الرحمن فاروقی نے تین دو دہائی قبل جب یہ مدرسہ شروع کیا تھا ، تو ان کے ذہن میں کئی الجھنیں تھی ، لیکن اللہ کی ذات سے امید اور دل میں پختہ عزم ہونے کی وجہ سے ان کے لیے یہ کام آسان ہوگیا اور آج یہ ادارہ پورے مراٹھواڑہ میں اپنی ایک الگ شناخت رکھتا ہے ۔ محدود وسائل کے باوجود ادارہ کی کارکردگی میں کوئی کمی نہیں ہے ۔

دارالعلوم نعمانیہ للمومنات : پربھنی میں یتیم بچیوں کی تعلیم و تربیت کے لئے کمربستہ

دارالعلوم نعمانیہ للمومنات نام کے اس مدرسہ کو پربھنی میں 1989 میں مولانا محفوظ الرحمن فاروقی نے قائم کیا تھا ۔ اپنے قیام سے لے کر اب تک اس مدرسہ میں ہزاروں لڑکیاں زیور تعلیم سے آراستہ ہوکر خوش گوار زندگی گزار ہی ہیں ۔ مدرسہ کی فارغین میں کئی طالبات ایسی بھی ہیں ، جو مختلف مقامات پر بحیثیت معلمہ درس و تدریس کے فرائض انجام دے رہی ہیں ۔ یہاں دین کی ابتدائی تعلیم سے لے کر عالمیت اور حفظ قرآن کا نصاب بھی پڑھایا جاتا ہے ۔

اس مدرسہ میں عام طالبات کے علاوہ بڑی تعداد میں یتیم بچیاں زیر تعلیم ہیں ۔ یتیم بچیوں کے لئے طعام و قیام کے بہترین انتظامات کیے گئے ہیں ۔ آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ کے رکن مولانا محفوظ الرحمن فاروقی کی زیر سرپرستی چلنے والے اس مدرسہ میں طالبات کیلئے دینی تعلیم کے ساتھ ساتھ عصری تعلیم کا بھی نظم کیا گیا ہے ۔ بیک وقت عالمیت کے ساتھ ساتھ پرائمری اور ہائی اسکول کی تعلیم بھی دی جاتی ہے ، جس کی وجہ سے لڑکیوں کی شخصیت میں ہمہ جہت ترقی ہورہی ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز