متحدہ محاذ نے وزیراعلیٰ سے ملاقات کرمالیگاؤں کارپوریشن کا بجٹ رد کرنے کا کیا مطالبہ

Oct 21, 2017 07:39 PM IST | Updated on: Oct 21, 2017 07:39 PM IST

 مالیگاؤں۔ مالیگاؤں میونسپل کارپوریشن کی اپوزیشن پارٹی متحدہ محاذ نے مہاراشٹر کے وزیراعلیٰ سے ملاقات کرکے مطالبہ کیا کہ مالیگاؤں کارپوریشن کا 18-2017 ءکا بجٹ رد کیا جائے کیوں کہ اس بجٹ میں اقتدار میں بیٹھے لوگوں نے غیر جمہوری طریقے سے ایسے کاموں کو شامل کرلیا ہے جو کام پہلے ہوچکے ہیں۔ اُسی طرح اس بجٹ کو چند منٹوں میں جنرل بورڈ میں پاس کیا گیا, اس لئے یہ بجٹ ترقی کا بجٹ ہو نہیں سکتا۔ وہیں کانگریس کے میئر نے پریس کانفرنس کے ذریعہ اس الزام کو خارج کرتے ہوئے کہا کہ شہر کی ترقی کے لئے ہم نے یہ بجٹ تیار کیا ہے۔ اپوزیشن کا الزام غلط ہے۔

مالیگاؤں میونسپل کارپوریشن کا سالانہ بجٹ الیکشن کی وجہ سے تاخیر سے پیش کیا گیا۔ بجٹ پیش اور پاس تو ہوا مگر ابھی تک اس بجٹ سے کام شروع نہیں ہوا لیکن اس سے پہلے اپوزیشن پارٹی اور اقتدار کے لوگوں میں الزام تراشی شروع ہو گئی۔ اپوزیشن کے متحدہ محاذ جس میں این سی پی اور جنتا دل کے 27 کارپوریٹر شامل ہیں نے ایک پریس کانفرنس کر کہا کہ اقتدار میں بیٹھے لوگوں نے جمہوری طریقے کو بالائے طاق رکھتے ہوئے بجٹ تیار کیا ہے ۔ اپوزیشن کے کارپوریٹروں کو بجٹ کم دیا گیا ہے۔ اُسی طرح عید گاہوں کی دیواروں کی تعمیر ہوچکی ہے۔ اُسے دوبارہ بجٹ میں شامل کرکے کھلی بدعنوانی کی گئی ہے۔ اس لئے انہوں نے مطالبہ کیا کہ وزیر اعلیٰ اس بجٹ کی تجویز کو رد کریں اور عوامی بجٹ دوبارہ پیش ہو۔ متحدہ محاذ کی الزام تراشی کے بعد شہر کے میئر شیخ رشید نے آناً فاناً ایک پریس کانفرنس بلا کر الزامات کو مسترد کرنے کی کوشش کی ۔

متحدہ محاذ نے وزیراعلیٰ سے ملاقات کرمالیگاؤں کارپوریشن کا بجٹ رد کرنے کا کیا مطالبہ

انہوں نے کہا کہ بجٹ میں سبھی کارپوریٹروں کو یکساں رقم دی گئی ہے۔ عیدگاہوں کی دیوار کے کام کے تعلق سے بھی انہوں نے صفائی پیش کی۔  انہوں نے کہا کہ بجٹ جس طرح پہلے تیار کیا جاتا تھا۔  اُسی طرح ابھی تیار کیا گیا ہے۔ کانگریس کے میئر نے کہا کہ بدعنوانی ثابت ہونے پر وہ جیل جانے کو تیار ہیں۔ مگر پہلے بدعنوانی ثابت ہوجائے۔

ری کمنڈیڈ اسٹوریز