اکھلیش یادو کے متنازع بیان پر گجرات کے شہید اسماعیل شیخ کے کنبہ کا شدید ردعمل

May 12, 2017 08:41 PM IST | Updated on: May 12, 2017 08:42 PM IST

احمد آباد : اتر پردیش کے سابق وزیر اعلی اکھلیش یادو کے متنازع بیان کے بعد گجرات کے شہیدوں کے خاندان کے لوگ ناراضگی کا اظہار کر رہے ہیں ۔ اکھلیش نے بیان دیتے ہوئے کہا تھا کہ اترپردیش، مدھیہ پردیش، جنوبی ہندوستان اور ملک کے دوسرے حصے کے بہت سے جوانوں نے شہادت دی ہیں ، کوئی مجھے بتا سکتا ہے کہ گجرات کا کوئی جوان ملک کی حفاظت کے لئے شہید ہوا ہو۔ اکھلیش کے بیان کو لے کر شہید جوان اسماعیل کے کنبہ کے لوگوں نے نارازگی کا اظہار کیا ہے ۔ وہیں مرکزی وزیر ڈاکٹر ہرش وردھن احمد آباد کے ہوائی اڈے پر اتر پردیش کے سابق وزیر اعلی اکھلیش کے بیان پر دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان کے جوانوں کی اس سے بڑی کوئی توہین نہیں ہو سکتی کہ ملک کی حفاظت کے لیے شہید ہونے والوں کو ریاستوں میں تقسیم کر دیا جائے۔ ملک کے لیے شہید ہونے والا جوان پورے ہندوستان کا ہوتا ہے ۔

احمد آباد کے شاہ عالم علاقہ میں رہنے والے اسماعیل شیخ ہندوستانی فوج میں 41 آرمڈ ریجمنٹ میں رہ کر ملک کی خدمت کر رہے تھے، لیکن 1998 میں جموں و کشمیر کے كپواڑہ میں دہشت گردوں کے ساتھ لڑتے ہوئی 28 گولی لگنے کے بعد وہ شہید ہو گئے ۔ شہيد اسماعیل نے جب اس دنیا کو الوداع کہا تھا ، اس دوران ان کی ایک 7 ماہ معصوم بچی تھی ۔ آج بچی بھی بڑی ہو گئی ہے اور ان کا خاندان اتنے سالوں کے بعد جدوجہد کر کے زندگی گزار رہا ہے۔

اکھلیش یادو کے متنازع بیان پر گجرات کے شہید اسماعیل شیخ کے کنبہ کا شدید ردعمل

اسماعیل کی بہن اكھلیش کے بیان کا سخت الفاظ میں مذمت کر رہی ہیں۔ وہ کہتی ہے کہ گجرات کے لوگ بھی ملک کی خدمت کر رہے ہیں۔شہید اسماعیل کی شہادت کو یاد رکھنے کے لئے علاقہ میں ایک راستے کا نام شہید اسماعیل رکھا گیا ہے ۔ اس سلسلے میں کانگریس کے لیڈر بدرالدین شیخ کا کہنا ہے کہ دشمن کی گولی مذہب اور ریاست کو نہیں دیکھتی ہے ، اس لئے شہیدوں کے نام پر سیاست نہیں ہونی چاہئے۔

انہوں نے کہا کہ اکھلیش کو جاننا چاہئے کہ گجرات کے سابركانٹھا ضلع کے كوڈياواڑا نامی گاؤں میں 700 خاندان رہتا ہے ۔ اس گاؤں میں رہنے والے خاندان سے ایک سے زیادہ لوگ فوج میں ہیں ۔ ایسے میں سوال یہ اٹھتا ہے کہ کیا اکھلیش کو گجرات میں ہونے والے شہیدوں کے بارے میں معلومات ہی نہیں ہے ۔ یا پھر سستی شہرت حاصل کرنے کے لیے وہ ایسے بیانات دے رہے ہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز