حالات حاضرہ میں مسلمانوں کو اخوت، محبت اور بھائی چارگی کا مظاہرہ کر نا چاہئے: ارشد مدنی

Jan 28, 2017 08:36 PM IST | Updated on: Jan 28, 2017 08:37 PM IST

بھیونڈی۔ تمام مذاہب نے امن وامان سے زندگی گزارنے کا سلیقہ سکھایا ہے۔ اسلام نے تو قتل و غارتگری سے منع فرما کر ظالموں پر لعنت ملامت بھی کی ہے لیکن آج یہاں انسانیت کو مٹانے کی کوششیں تیز کر دی گئی ہیں اور فرقہ پرستی اور قوموں کے بیچ تفرقہ پھیلانے کے شرپسندوں کے ناپاک عزائم زور و شور سے شروع ہیں ایسے میں سیکولر ذہنیت اور برادران وطن کواخوت ، محبت اور بھائی چارگی کا مظاہرہ کر نا چاہئے۔ اس قسم کا اظہار خیال کل دیر شب ممبئی سے متصلہ پارو لوم شہر بھیونڈی میں واقع جمعیۃ علماء بھیونڈی کے زیر اہتمام قومی یکجہتی و تحفظ آئین کانفرنس میں جمعیۃ علماء کے قومی سر براہ مولانا سید ارشد مدنی نے کیا ۔ مولانا ارشدمدنی نے فرقہ پرستوں کے ناپاک عزائم کو ملک سے مٹانے کی براداران وطن اور مسلمانوں کو عہد کرنے کی بھی تلقین کی اور کہا کہ آج ملک میں ہر جگہ فرقہ پرست طاقتیں اس قدر سر گر م ہوگئی ہیں کہ معاشرے میں تفرقہ پیدا کرنا اور بدامنی پھیلانا ان کا مقصد ہوگیا ہے۔ کوئی بھی مذہب قتل و غارتگری کی اجازت نہیں دیتا ہمیں اپنی ملک کی گنگا جمنی تہذیب کو بر قرار رکھنا ہے اس کے لئے برادران وطن کو آگے بڑھ کر مسلمانوں کے ساتھ شانہ بشانہ کھڑا ہونا چاہئے۔ سیکولر ہندستان میں فرقہ پرست طاقتیں اس ملک کی فرقہ وارانہ ہم آہنگی کو مکدر کر نے کی کوشش میں مشغول ہیں ۔

انہوں نے دہشت گردی کے مقدمات کی مقررہ مدت میں سماعت مکمل کئے جانے کا مطالبہ کیا اور مہاراشٹر کے مالیگاؤں شہر میں ہوئے بم دھماکوں کے الزامات کے تحت گرفتار کئے گئے بھگوا جماعتوں کے ملزمین کی حکومت کی جانب سے سر پرستی کئے جانے پر سخت لفظوں میں مذمت کی اور کہا کہ ان عناصر کی رہائی سے ملک بھر میں  بد امنی پھیلے گی اور دہشت گردانہ واقعات عمل میں آئیں گے ۔ قومی یکجہتی و تحفظ آئین کانفرنس سے سناتن دھرم کے سنت ستیہ نام داس جی نے بھی خطاب کیا اور کہا کہ فرقہ وارانہ ہم آہنگی کا قیام اس ملک کی ضرورت ہے۔ ہم سب ایک ہی اللہ کی اولاد ہیں، اس لئے ہمیں اس روئے زمین پر مل جل کر رہنا چاہئے۔ فساد اور برائیوں سے گریز کر نا ہی ہمارا مذہب ہے ۔ اس موقع پرمسلم ریزرویشن اور ملک کے سیکولر کردار کو بر قرار رکھنے کے تعلق سے مختلف تجاویز بھی پیش کی گئیں جس کی حاضرین مجلس نے ہاتھ اٹھا کر تائید کی ۔ اس موقع پر جمعیۃ علماء کے ریاستی صدر مولانا مستقیم احسن اعظمی ،بھیونڈی کے صدر مفتی لئیق احمد قاسمی،جنرل سکریٹری گلزار احمد اعظمی،ریاستی جنرل سکریٹری مولانا حلیم اللہ قاسمی کے علاوہ جماعت اسلامی کے محمد اسلم غازی ،بھیونڈی اہلسنت و الجماعت کے مولانا احمد رضا اشرفی،جماعت اہل حدیث کے مولانا عبد السلام سلفی کے علاوہ دیگر علماء کرام اور اہم شخصیات موجود تھیں۔

حالات حاضرہ میں مسلمانوں کو اخوت، محبت اور بھائی چارگی کا مظاہرہ کر نا چاہئے: ارشد مدنی

مولانا ارشد مدنی: فائل فوٹو

مولانا موصوف نے کہا کہ آج جس طرح فرقہ پرست طاقتیں ہندوؤں اور مسلمانوں کو لڑانے میں سر گرم ہیں وہ ملک کو نقصان پہنچانے کے درپے ہیں ہمیں اپنی قدیم روایت کے مطابق زندگی بسر کرنا چاہئے ۔ بھیونڈی کے پرشورام ٹاورے اسٹیڈیم میں منعقدہ جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے مولانا ارشد مدنی نے فرقہ پرستوں کو چیلنج کر تے ہوئے کہا کہ آج اقتدار کی ہوس میں فرقہ پرست طاقتیں ملک میں فرقہ پرستی پھیلا رہی ہیں جو صرف اور صرف اقتدار کی جنگ ہے۔ ایسے میں ہندوستان میں سالمیت کی بر قرار ی کے لئے برادران وطن کو مل کر کوششیں کر نی چاہئے ۔ جانشین شیخ الاسلام مولانا ارشد مدنی نے وشو ہندوپریشد، آر ایس ایس کی گھرواپسی مہم اور مسلمانوں کے خلاف ان کی اشتعال انگیزی کا بھی جواب دیتے ہوئے گھر واپسی مہم کو ملک میں فرقہ پرستی کی سازش قرار دیا  ۔ نیز نوٹ بندی کی  بھی کڑے لفظوں میں تنقید کی اور کہا کہ پانچ سو اور ایک ہزار کی نوٹ کی منسوخی کا مودی حکومت نے جو فیصلہ لیا ہے اس سے ملک کے اقتصادی حالات مزید خراب ہوں گے۔

مسلم نوجوانوں کی دہشت گردی کے الزامات کے تحت گرفتاری پر بھی مولانا ارشد مدنی نے حکومت کوآڑے ہاتھوں لیا اور کہا کہ مسلم اکثریت کو ان معاملات میں جھوٹا پھنسایا جاتا ہے اور آخر میں اعلیٰ عدالتوں سے دس پندرہ سالوں کا عرصہ گذرنے کے بعد قید و بند کی صعو بتیں جھیلنے کے بعد ان کی رہائیاں عمل میں آتی ہیں ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز