ناندیڑمیں مومنٹ فار پیس اینڈ جسٹس نے مزدروں کے حق میں شروع کی تحریک

May 01, 2017 05:43 PM IST | Updated on: May 01, 2017 05:43 PM IST

ناندیڑ۔ مزدوروں کو انصاف دلانے کیلئے ایم پی جے نے ریاست گیر تحریک شروع کی ہے ۔ اس سلسلے میں ناندیڑ میں ایک مزدور کانفرنس کا انعقاد کیا گیا ۔ کانفرنس میں مزدوروں پر ہونے والی ناانصافیوں پر تشویش ظاہر کی گئی اور اس معاملے میں ریاستی حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا گیا ۔ سماجی تنظیم مومنٹ فار پیس اینڈ جسٹس کی جانب سے شہر کے انورگارڈن میں مزدوروں کے حق کے عنوان سے کانفرنس کا انعقاد کیا گیا ۔ مزدروں پر ہونے والی نا انصافیوں کو دورکرنے کے لیے ایم پی جے نے یہ تحریک شروع کی ہے ۔  تنظیم نے حکومت سے یہ مطالبہ کیا ہے کہ غیرمنظم شعبہ کے تحت آنے والے مزدوروں کے لئے بھی حکومت کوئی پالیسی بنائے تاکہ وہ مزدرو جو حکومت کی اسکیموں سے محروم ہیں انہیں اس کا فائدہ پہنچ سکے۔

 ایم پی جے کے نیتاؤں نے کہا کہ انہوں نے اپنے جائزہ میں یہ پایا ہے کہ غیر منظم شعبہ میں کام کرنے والے مزدوروں کا مجموعی تناسب 93 فیصد ہے ۔ ان میں تعمیراتی اور دیگر شعبوں میں کام کرنے والے مزدوروں کے لئے تو حکومت کی پالیسی میں سہولتوں کا اعلان کیا گیا ہے لیکن کسان، اخبار فروش، ڈرائیور، پھل سبزی بیچنے والے اور اسی طرح کے دیگر چھوٹے بڑے کاروبار سے وابستہ مزدوروں کو حکومت کی کوئی سہولت نہیں مل پاتی ہے ۔ ایسے میں حکومت کو اس مسئلہ کی جانب سے متوجہ کرنے کے لیے اس تحریک کا آغاز کیا گیا ہے ۔ جلسہ میں مزدوروں کے ساتھ ساتھ مزدور خواتین کے مسائل پر بھی تبصرہ کیا گیا اور ان کے حل کے لئے ایک مضبوط لائحہ کا اعلان کیا گیا ۔

ناندیڑمیں مومنٹ فار پیس اینڈ جسٹس نے مزدروں کے حق میں شروع کی تحریک

یکم مئی کو ہر سال عالمی سطح پر مزدور ڈے کے طورپر منایا جاتا ہے ۔ اسی مناسبت سے ایم پی جے نے ناندیڑ میں یہ مزدور حق کانفرنس رکھی ہے ۔ مزدوروں کے حق میں شروع کی گئی یہ لڑائی ابھی اپنے ابتدائی مرحلے میں ہے ۔ایم پی جے نے حکومت کو یہ اشارہ دیا ہے کہ جلد اگران کے مطالبات منظور نہیں کیے گئے تو وہ اس معاملے میں مزید بڑے پیمانے پر احتجاج ، دھرنے مورچے نکالے گی اور ضرورت پڑنے پر عدالت کا دروازہ بھی کھٹکھٹا نے میں گریز نہیں کریگی ۔ اب دیکھنا یہ ہے کہ حکومت ان مطالبات پر سنجیدگی کا مظاہرہ کرتی ہے یا نہیں ۔

ری کمنڈیڈ اسٹوریز