نوی ممبئی کی مسجد میں مؤذن کا بہیمانہ قتل ، ملزم فرار

Jan 08, 2017 08:49 PM IST | Updated on: Jan 08, 2017 08:49 PM IST

ممبرا : نوی ممبئی کے ایئرولی علاقہ کی مسجد و مدرسہ مدینتہ العلوم کے 55 سالہ مؤذن اشتیاق احمد کو مسجد میں ایک شب کے لئے رکنے والے مسافر نبی عبداللہ شیخ نے اذان دینے والے مائک کے اسٹینڈ سے بڑی ہی بے رحمی سے قتل کردیا اور پھر وہ فرار ہوگیا۔

اطلاعات کے مطابق گزشتہ شب محلہ کے ہی ایک شخص نے نبی عبداللہ کو مسجد میں ایک شب ٹھہرانے کی مؤذن و خادم سے اپیل کی تھی۔ انہوں نے کہا تھا کہ عبد اللہ کل صبح ٹرین پکڑ کر وطن چلا جائے گا، جس کے بعد مؤذن اشتیاق احمد نے اسے مسجد میں پناہ دیدی ۔ تاہم بتایا جاتا ہے کہ نصف شب میں وہ مسافر خود بخود چیخنے او چلانے لگا ، جس کے بعد مؤذن کا بھائی اس شخص کو پڑوس سے بلانے گئے جنہوں نے اسے مسجد میں ایک رات رکھنے کیلئے تھا۔

نوی ممبئی کی مسجد میں مؤذن کا بہیمانہ قتل ، ملزم فرار

مگر جب تک مؤذن کا بھائی اسحاق احمد اور پڑوسی شہاب الدین وہاں آتے ، تب تک نبی عبداللہ مسجد سے نکل کر بھاگنے لگا۔ لوگوں نے کچھ دور اس کا تعاقب کیا ، لیکن جب وہ نہیں ملا ، تو لوٹ آئے ۔ لوٹنے کے بعد جب انہوں نے مسجد کا نظارہ دیکھا تو دنگ رہ گئے ۔ مؤذن اشتیاق کی لاش خون میں لت پت پڑی ہوئی تھی ۔

نوی ممبئی پولیس نے قتل کی دفعات کے تحت معاملہ درج کرلیا ہے۔سینئر انسپکٹر پردیپ کے مطابق ملزم ان کے رڈار میں آچکا ہے اور جلد ہی وہ سلاخوں کےپیچھے ہوگا ۔ پولیس کے مطابق ملزم نے مؤذن کا قتل اذان دینےوالے مائک کے اسٹینڈ سے کیا ۔ تاہم اس نے ایسا کیوں کیا ، اس کی سچائی تو ملزم کی گرفتاری کے بعد ہی معلوم ہوسکے گی ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز