مودی حکومت کیلئے ملک کی ترقی راشٹر دھرم ، اقلیتی فرقہ کو احساس کمتری سے باہر نکلنا ہوگا : نقوی

Nov 05, 2017 04:00 PM IST | Updated on: Nov 05, 2017 04:00 PM IST

ممبئی : مرکزی وزیر برائے اقلیتی امور مختارعباس نقوی نے آج یہاں اس بات کااظہار کیاکہ مرکز میں نریندرمودی کی قیادت میں حکومت ملک کی ترقی کو اپنا 'راشٹر دھرم سمجھتی ہے اور وہ غریبوں اور کمزور طبقات کی مساوی فلاح وبہبودوترقی کو قومی پالیسی کادرجہ دیتی ہے اور گزشتہ تین سال کے دوران مختلف منصوبوں کے تحت 50لاکھ سے زائدلوگوں کوروزگاراورروزگار مہیاکرانے میں کامیابی حاصل ہوئی ہے۔

مختار عباس نقوی جنوبی ممبئی میں واقع وائی بی چوان آڈیٹوریم میں منعقد صدیقی ایجوکیشنل اور ویلفئیر ٹرسٹ کے زیر اہتمام اقلیتوں کی ترقی میں تعلیم اورہنرمندی کارول کے موضوع پر ایک سمینار سے خطاب کرتے ہوئے مزید کہا کہ اقلیت کو احساس کمتری سے باہر ہونا چاہیئے۔کیونکہ مودی حکومت مذہب، فرقہ اور علاقائیت سے اوپر اٹھ کر غریب اور کمزور طبقوں کی ترقی کو اہم مقصد بنا کر مضبوطی سے سرگرم ہے اور اس کے مثبت نتائج سامنے آرہے ہیں۔

مودی حکومت کیلئے ملک کی ترقی راشٹر دھرم ، اقلیتی فرقہ کو احساس کمتری سے باہر نکلنا ہوگا : نقوی

اقلیتی امور کے مرکزی وزیر مختار عباس نقوی۔ فائل فوٹو

وزیر موصوف نے کہاکہ یہ قابل فخر بات ہے کہ دستور کے تحت ہندوستان میں اقلیت کو دوہرے اختیارات حاصل ہیں، ایک عام لوگوں کے ساتھ اوردوسرا اقلیت کی حیثیت سے انہیں حاصل ہیں۔انہوں نے واضح طور پر کہا کہ مودی حکومت غریب اور کمزور طبقات کی طرح اقلیتوں اور خصوصاً مسلمانوں کی سماجی، تعلیمی اورروزگار کے میدانوں میں بہتری پرتوجہ دیتے ہوئے کام کررہی ہے۔

مختار نقوی نے کہاکہ وزارت اقلیتی امور کی جانب سے 'سکھواور سکھاؤ'، 'نئی منزل'، 'نئی روشنی'اور 'غریب نواز ہنرمندی ترقی منصوبہ' اقلیتوں کی ترقی کے لئے اہم قدم ثابت ہورہے ہیں۔اور اس کے تحت پچاس لاکھ افراد کوروزگاراور روزگار مہیاکرانے میں کامیابی ملی ہے۔انہوں نے کہا کہ ملک بھر میں سو'غریب نوازکوشل وکاس مرکز'کھولے جارہے ہیں اور ان مراکز میں اقلیتی نوجوانوں کو ہنر مندی کے کورس سکھائے جائیں گے، بلکہ کئی مراکز میں سکھائے جارہے ہیں۔

نقوی نے کہا کہ اس کے علاوہ ملک بھر میں 'ہنرہاٹ' کے ذریعہ لاکھوں غریب دستکاروں، فن کاروں کوروزگاراورروزگاکے مواقع مہیا کرائے گئے ہیں۔انہوں نے کہاکہ ان کی کوشش ہوتی ہے کہ مختلف وزارتوں اور محکموں کے افسران سے میٹنگ کرکے ان شعبوں میں اقلیت کو حاصل 15 فیصدسہولت کا فائدہ پہنچے۔انہوں نے واضح طور پر کہاکہ ملک کے حالات بہتر ہیں اور کسی بھی طرح مایوس نہیں ہوناچاہئے۔بلکہ ڈٹ کر پریشانیوں کا سامنا کیاجانا ہے۔

اس سے قبل انجمن اسلام کے صدر ڈاکٹر ظہیرقاضی نے کہاکہ موجودہ حکومت کے دور میں اقلیتوں کو ترقی کے بہتر مواقع فراہم ہیں ،صرف ہمیں انہیں حاصل کرنے کے لئے کوشش کرنا چاہیے۔انہوں نے انجمن اسلام کی تعلیمی خدمات اور ایک لاکھ سے زائد طلباکوبہتر ومعیاری تعلیم کے لیے اقدامات کیے جائیں گے۔آغاز میں ٹرسٹ کے صدر محمد انیس صدیقی نے ادارہ کی تعلیمی خدمات کی تفصیل سے آگاہ کیااور یقین دلایا ہے کہ مستقبل میں تعلیمی ترقی کے لیے جدوجہد جاری رہیگی۔سمینار سے بی جے پی ایم پی گوپال شیٹی ،ڈاکٹر محمد قطب الدین، بھیونڈی کے ضیاء الرحمن انصارینے خطاب کیا جبکہ اردوٹائمز کی منیجنگ ڈائریکٹر قمر سعید احمد اور یونس صدیقی بھی موجود تھے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز