ممبئی بم دھماکوں کے مجرم مصطفی دوسہ کا انتقال ، سینہ میں تکلیف کے بعد اسپتال میں کرایا گیا تھا داخل

Jun 28, 2017 05:01 PM IST | Updated on: Jun 28, 2017 05:02 PM IST

ممبئی: ممبئی میں 1993 میں ہونے والے سلسلہ وار بم دھماکوں کے مجرم مصطفی دوسہ  کا حرکت قلب بند ہو جانے سے آج یہاں جے جے اسپتال میں انتقال ہوگیا۔ اسپتال کے ڈین ٹی پی لهانے نے دوسا کی موت کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ شام ڈھائی بجے حرکت قلب بند ہو ہوجانے سے اس کی موت ہو گئی۔ مصطفی دوسہ 1993 کے ممبئی میں ہونے والے سلسلہ وار بم دھماکوں کا مجرم تھا۔ اس کو رات تین بجے سینے میں درد کی شکایت کے بعد جیل وارڈ سے جے جے اسپتال میں داخل کرایا گیا تھا۔

دوسہ کو خصوصی ٹاڈا عدالت میں رواں مہینے 16 تاریخ کو مجرم قرار دیا تھا۔ مرکزی تفتیشی بیورو (سی بی آئی) نے ٹاڈا عدالت سے دوسہ کو پھانسی کی سزا دینے کی درخواست کی تھی، جس کو آرتھر روڈ جیل میں بند رکھا گیا تھا۔ اس کیس میں یعقوب میمن کو پہلے ہی پھانسی دی جا چکی ہے۔

ممبئی بم دھماکوں کے مجرم مصطفی دوسہ کا انتقال ، سینہ میں تکلیف کے بعد اسپتال میں کرایا گیا تھا داخل

file photo

دوسہ کو 2004 میں متحدہ عرب امارات میں گرفتار کر کے ہندوستان لایا گیا تھا۔ ٹاڈا عدالت نے گزشتہ 16 جون کو اس معاملے میں فیصلہ سناتے ہوئے دوسہ اور گینگسٹر ابو سلیم سمیت پانچ ملزمان کو مجرم قرار دیا تھا۔ اس معاملے میں چھٹے ملزم ریاض صدیقی کو صرف ٹاڈا کے تحت ہی سزا دی گئی تھی۔بارہ مارچ 1993 کو ممبئی میں ہونے والے ان دھماکوں میں 257 افراد ہلاک ہو گئے تھے اور 700 سے زائد زخمی ہوئے تھے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز