عالمی شہرت یافتہ صوفی مخدوم فقیہ علی مہائمی کے آستانہ پرقومی یکجہتی کی انوکھی مثال ، شیواجی بینڈ نے دی سلامی

Mar 17, 2017 07:36 PM IST | Updated on: Mar 17, 2017 07:36 PM IST

ممبئی : عالمی شہرت یافتہ صوفی حضرت مخدوم فقیہ علی مہائمی کے آستانہ پرقومی یکجہتی اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی کی فضاء اس پرفتن دور میں دیکھنے کو ملی جب فرقہ پرستی عروج پر ہے ۔ آستانہ مخدوم فقیہ علی مہائمی رحمتہ اللہ علیہ کے صحن میں اس وقت شیواجی بینڈ کی سلامی دی گئی جب میئر آف ممبئی وشوناتھ مہاڈیشور ، وزیر ارجن کھوتکر ,شیوسینا کے ڈپٹی لیڈر اورواہتوک سینا کے سر براہ حاجی عرفات شیخ و درگاہ کے منیجنگ ٹرسٹی سہیل کھنڈوانی نے آستانہ پر حاضری دی سہیل کھنڈوانی نے بتایاکہ درگاہ انتظامیہ نے یہاں آنے والے زائرین کا استقبال کیاہے جبکہ اس شیواجی بینڈ کا اہتمام یہاں کارپوریٹر کرن لانگڑے نے کیا تھا اس کا مقصد قومی یکجہتی اور فرقہ وارانہ ہم آہنگی کوفروغ دینا ہے ایسے پر فتن دور میں آستانہ مخدوم اور خانقاہیں جو قومی یکجہتی کا مظہر ہے یہاں بلا تفریق مذہب وملت ہر کوئی حاضری دیتا ہے۔

شیواجی بینڈ سے جب درگاہ انتظامیہ میں بابا مخدوم کوسلامی دی گئی تو انتہائی روایتی انداز میں سازندوں نے ڈھول تاشہ بجا کر بھگوا پرچم درگاہ کے صحن میں اچھال کر نہ صرف یہ کہ مخدوم شاہ بابا کو سلامی دی بلکہ درگاہ انتظامیہ کے پرچم کو بھی اس روایتی جلوس اور بینڈمیں شامل کیا گیا تھایہ دونوں پرچم ہندو مسلم اتحاد کی علامت بھی ثابت ہوا یہاں زائرین کا اس قدر تانتا لگا تھا کہ درگاہ کا صحن بھی تنگ دامانی کا شکوہ کر رہا تھا۔

عالمی شہرت یافتہ صوفی مخدوم فقیہ علی مہائمی کے آستانہ پرقومی یکجہتی کی انوکھی مثال ، شیواجی بینڈ نے دی سلامی

file photo

آستانہ مخدومیہ پر حاضری کے بعد میئر آف ممبئی وشو ناتھ مہاڈیشور نے اسے باعث افتخار قرار دیااور کہا کہ میں یہاں بابا سے آشرواد کیلئے آستانہ پر آیا تھا یہاں سے ہی قومی یکجہتی اور فرقہ وارانہ یکجہتی کو فروغ ملتی ہے یہ فضا ہمیشہ قائم رہے ۔

شیوسینا کے ڈپٹی لیڈر حاجی عرفات نے کہا کہ آستانہ مخدومیہ پر آج جو شیواجی بینڈ کا اہتمام کیا گیا تھا وہ اس بات کاثبوت ہے کہ ہمارے ملک میں ہندو مسلم بھائی چارہ موجود ہے اور یہی خانقاہ سے ہمیشہ یہ کام کیا جاتاہے یہ ہمارے لئے باعث فخر بھی ہے کہ قطب کوکن کی بارگاہ سے اتحاد کا پیغام عام ہوتاہے۔اس تقریب میں وزیرارجن کھوتکر , ایم ایل اے سدا سر ونکر , کارپوریٹر سمادھن سرونکر , مفتی منظور ضیائی , صابر سید اور اجمیر شریف درگاہ کے نائب صدر جاوید پاریکھ اور دیگر اشخاص موجود تھے ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز