آکولہ میں قومی یکجہتی کے فروغ کے نام پر اویناش دیشمکھ کے یوم پیدائش پر مشاعرہ

May 13, 2017 06:28 PM IST | Updated on: May 13, 2017 06:28 PM IST

آکولہ ۔ مہاراشٹر کا  آکولہ شہر محبان اردو کا مرکز رہا ہے۔ یہاں نہ صرف مسلمان بلکہ دوسرے مذاہب کے لوگوں میں بھی اردو کے تئیں محبت پائی جاتی ہے۔ ایسے ہی ایک محب اردو اویناش دیشمکھ نے اردو سے محبت کی ایک مثال پیش کی ۔ اویناش دیشمکھ نے اپنے یوم پیدائش کے موقع پر کل ہند مشاعرے کا انعقاد کیا۔ شاہد انجمن اردو ادب کے زیر اہتیمام  منعقدہ اس کل ہند مشاعرے  میں  ملک کے نامور شعرا  نے شرکت کی  اور اپنے کلام سے  سامعین کو خوب محظوظ کیا۔ اپنے یوم پیدائش کے موقع پر اردو کا انعقاد کر کے اویناش دیشمکھ نے ایک بار پھر یہ ثابت کردیا ہے کہ اردو  کسی خاص طبقہ یا مذہب کی زبان نہیں بلکہ محبت کرنے والوں کی زبان ہے۔

  اردو کا گہوارہ  کہلانے والے آکولہ شہر میں ادبی سرگرمیوں کی ایک طویل روایت رہی ہے۔ شہر میں ادب کا چراغ ہمیشہ ہی روشن رہا ہے۔  ادب نوازحلقے اپنی بساط بھر کوششوں سے  اردو کے گیسو سنوارتے رہے ہیں ۔ شہر میں کئی ایسی انجمنیں ہیں جو اردو کے فروغ کے لیے نمایاں کام انجام دے رہی  ہیں ۔ یہی وجہ ہے کہ  دیگر مذاہب کے لوگوں میں بھی محبان اردو کی تعداد میں دن بدن اضافہ ہوتا جا رہا ہے۔ اس بدلتے منظرنامے کی  بہترین مثال سماجی کارکن اویناش دیشمکھ کے یوم پیدائش کے موقع پر دیکھنے ملی ۔ جہاں محب اردو اویناش دیشمکھ نےاردو مشاعرے کا اہتمام کیا۔ سابق رکن اسمبلی لکشمن راو تائڑے کی صدارت میں سجی اس ادبی محفل نے شہر میں تاریخ رقم کی ۔ اس موقع پر اویناش دیشمکھ نے مستقبل میں بھی اسی طرح اردو کے حق میں کام کرنے کا عہد کیا ۔

آکولہ میں قومی یکجہتی کے فروغ  کے نام پر اویناش دیشمکھ کے یوم پیدائش پر مشاعرہ

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز