ناندیڑ کی کئی مسلم بستیوں میں بنیادی سہولتوں کا فقدان، میونسپل انتظامیہ مسائل کو حل کرنے میں ناکام

Feb 05, 2017 05:23 PM IST | Updated on: Feb 05, 2017 05:23 PM IST

ناندیڑ۔ ناندیڑ کی کئی بستیوں میں آج بھی بنیادی مسائل کی وجہ سے لوگوں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے ۔ خاص طورپر مسلم آبادی والےعلاقوں میں ترقیاتی کام نہیں کیے جا رہے ہیں، جس کی وجہ سے مقامی لوگوں میں عوامی نمائندے اور میونسپل انتظامیہ کے خلاف شدید برہمی ہے ۔ شہر سے قریب واقع خستہ حالی کی علامت علاقہ عمران کالونی  کو پانچ سال قبل یہ کہہ کر میونسپل حدود میں شامل کیا گیا کہ یہاں ترقیاتی کام کیے جائیں گے ۔ لوگوں کو بنیادی سہولتیں مہیا کی جائیں گی لیکن عملی طورپر یہاں کوئی کام نہیں ہوا ہے ۔ نہ ہی سڑکیں بنائی گئی ہیں اور نہ نالیوں کا کوئی انتظام ہے، جس کی وجہ سے پوری بستی میں ہرجگہ گندہ پانی جمع رہتا ہے ۔ ان مسائل کو لیکرمقامی لوگوں میں شدید برہمی ہے ۔

یہی صورت حال محبوبیہ کالونی کی بھی بنی ہوئی ہے ۔ کثیر مسلم آبادی والاعلاقہ ہونے کی وجہ سے یہاں کام نہیں کیا جا رہا ہے ۔ اس طرح کے احساسات مقامی لوگوں میں پائے جاتے ہیں ۔ اس پورے علاقہ میں صاف صفائی کا کوئی نظم نہیں ہے ۔ ہرجگہ گندگی ہی گندگی پھیلی ہوئی ہے جس کی وجہ سے آئے دن یہاں پر لوگ بیمار پڑتے رہتے ہیں ۔ کارپوریشن انتظامیہ یہاں کے مکینوں سے ہر سال ٹیکس وصول کرتی ہے لیکن انہیں بنیادی سہولتیں پہنچانے میں کوئی دلچسپی نہیں لے رہی ہے ۔

ناندیڑ کی کئی مسلم بستیوں میں بنیادی سہولتوں کا فقدان، میونسپل انتظامیہ مسائل کو حل کرنے میں ناکام

عوامی نمائندے بھی محض انتخابات کے دنوں میں ہی نظر آتے ہیں ۔ بار بار شکایت کرنے پر بھی نہ تو میونسپل انتظامیہ کوئی کارروائی کرنے کے لیے تیار ہے اور نہ ہی عوامی نمائندے ان مسائل کو حل کرنے میں دلچسپی لے رہے ہیں، جس کی وجہ سے اب ان لوگوں نے اپنے مسائل کو حل کرنے کے لیے ایک منظم احتجاجی تحریک چلانے کا فیصلہ کیا ہے ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز