ممبئی لوکل ٹرین دھماکہ کیس میں باعزت بری عبدالواجد شیخ نے کہا : مسلمان دہشت گرد نہیں ہوتا ، اگر ہوتا تومیرے ہاتھ میں قلم نہیں ہتھیار ہوتا

اورنگ آباد میں 25 ملی سماجی اور فلاحی تنظیموں کی فیڈریشن مسلم نمائندہ کونسل کے بینر تلے ریاستی ’’ دہشت گردی اور مسلم نوجوان ‘‘ کے عنوان سے ایک سمینار منعقد کیا گیا ۔

Apr 28, 2017 09:24 PM IST | Updated on: Apr 28, 2017 09:24 PM IST

اورنگ آباد: اورنگ آباد میں 25 ملی سماجی اور فلاحی تنظیموں کی فیڈریشن مسلم نمائندہ کونسل کے بینر تلے ریاستی ’’ دہشت گردی اور مسلم نوجوان ‘‘ کے عنوان سے ایک سمینار منعقد کیا گیا ۔ سمینار سے سابق ڈی آئی جی مہاراشٹر ایس ایم مشرف اور تہلکہ ڈاٹ کام سے وابستہ رہے سینئر صحافی اجیت ساہی نے بھی خطاب کیا ۔ سمینار میں ملک کے موجودہ حالات پر سیر حاصل روشنی ڈالی گئی ۔

سمینار میں ممبئی لوکل ٹرین دھماکوں میں عدالت سے رہا ہونےوالے ممبئی کے عبدالواحد شیخ کی کتاب بے گناہ قیدی کی داستان الم کا اجرا عمل میں آیا۔ اس موقع پر عبدالواحد نے اپنی روداد سنائی اور کہا کہ مسلمان دہشت گرد نہیں ہوتا اگر ہوتا تومیرے ہاتھ میں قلم نہیں ہتھیار ہوتا ۔ عبدالواحد نے نو سال جیل میں قید و بند کی صعوبیتیں برداشت کیں ۔

ممبئی لوکل ٹرین دھماکہ کیس میں باعزت بری عبدالواجد شیخ نے کہا : مسلمان دہشت گرد نہیں ہوتا ، اگر ہوتا تومیرے ہاتھ میں قلم نہیں ہتھیار ہوتا

اورنگ آباد کے مولانا آزاد ریسرچ سینٹر میں معروف قانون داں اورسابق ڈی آئی جی ایس ایم مشرف اور اجیت ساہی کو سننے کیلئے بڑی تعداد میں لوگ جمع ہوئے ۔ اس موقع پر ایس ایم مشرف نے جانچ ایجنسیوں کے طریقہ کار اوران کی خامیوں پرتفصیلی روشنی ڈالی ۔ انہوں نے ایک طرف سے مہاراشٹر میں تمام تخریب کاریوں کا بیورہ پیش کیا اور ان میں کیسے بے قصور نوجوانوں کو پھنسایا گیا اس کی روداد پیش کی ۔ ایس ایم مشرف نے عدالتوں میں ہونے والے جانبدارانہ فیصلوں کے خلاف آواز اٹھانے پر زور دیا ۔ ان کا کہنا تھا کہ اگراس کے خلاف کمر بستہ نہیں ہوئے ، تو ملک میں انارکی پھیل جائے گی۔

اس موقع پر وحدت اسلامی کے صدرضیاالدین صدیقی نے کہا کہ سیاسی اورمذہبی مقاصد کے حصول کے لیے تشدد کا راستہ اختیار کرنا دہشت گردی ہے، لیکن کمزوروں پرحکومتیں جو ظلم کرتی ہیں ، وہ بھی ریاستی دہشت گردی ہے ۔ انھوں نے اس بات پرافسوس کا اظہار کیا کہ تفتیشی ایجنسیاں آج حکومت کے ہاتھوں کا کھلونا بن گئی ہیں۔ فسطائی طاقتیں ملک میں تہذیبی یلغارکررہی ہیں اور دوسروں پراپنی مرضی مسلط کرنے کی کوششیں کی جارہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جس معاشرے میں جانوروں کی اہمیت انسانوں سے بڑھ جاتی ہے، وہاں انسان پھرجانور بن جاتا ہے ۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز