این سی پی ہمیشہ سے اپوزیشن اتحاد کا حصہ: مجید میمن نے افواہ کی تردید کی

Aug 12, 2017 03:04 PM IST | Updated on: Aug 12, 2017 03:04 PM IST

ممبئی۔ ملک کی سب سے بڑی اپوزیشن پارٹی کانگریس کی صدرسونیا گاندھی کی جانب سے ملک کی 18حزب مخالف پارٹیوں کی اہم ترین میٹنگ سے شردپوار کی قیادت والی نیشنلسٹ کانگریس پارٹی (این سی پی ) کی غیر حاضری کے بعد جاری چہ می گوئیوں کے درمیان این سی پی کے سنیئر لیڈراور راجیہ سبھا ممبر ایڈوکیٹ مجید میمن نے واضح طورپر اس کی تردید کی ہے بلکہ کہا کہ این سی پی ہرحال میں اپوزیشن کے ساتھ ہے، لیکن میٹنگ میں بطوراحتجاج اس نے شرکت نہیں کی ہے۔ ایڈوکیٹ مجید میمن نے آج یہاں ایک بیان میں کہا کہ این سی پی نے ہمیشہ ایک ذمہ دار اپوزیشن کا رول بخوبی ادا کیا ہے،لیکن ہم نے کانگریس کے اس الزام پر بطوراحتجاج میٹنگ میں شرکت نہیں کی کہ گجرات میں حالیہ راجیہ سبھا الیکشن میں این سی پی نے کانگریس امیدوار احمد پٹیل کے حق میں ووٹ نہیں دیا ہے اورایسی بے بنیاد اور سراسر غلط خبریں اڑائی جا رہی ہیں کہ این سی پی کا جھکاؤ برسراقتدار جماعت کی جانب ہے ۔البتہ یہ بیان بازی کے خلاف احتجاج کا نتیجہ ہے۔

انہوں نے کانگریس کے راجیہ سبھا میں اپوزیشن لیڈر غلام نبی آزاد کے ایک بیان کا حوالہ دیا ،جس میں کہا گیا ہے کہ انہوں نے شردپوارسے بات کی تو پوار نے کہا کہ ان کی طبیعت ٹھیک نہیں ہے ،اس لیے وہ نہیں آ سکتے ہیں اور اس میں سچائی بھی ہے کہ ان کی طبیعت نا ساز ہے ،اور اس وجہ سے انہوں نے تین چار روز سے کسی پروگرام میں شرکت نہیں کی ہے۔ لیکن جس قسم کی افواہیں پھیلائی جارہی ہیں ،ان کا انکشاف بھی ضروری ہے۔  مجید میمن نے واضح طورپر کہا کہ گجرات کے راجیہ سبھا الیکشن میں احمد پٹیل کو کامیاب کرنے میں این سی پی نے اہم رول ادا کیا ہے ۔ گجرات اسمبلی میں این سی پی کے صرف دوایم ایل اے تھے اور پارٹی نے اس ووٹنگ کے سلسلہ میں وہپ جاری کی ،اس کے باوجودایم ایل اے جڈیجہ نے پارٹی کے حکم کی خلاف ورزی کی اور احمد پٹیل کے خلاف ووٹ دیا ،اس کے بارے میں پارلیمانی بورڈ اور پارٹی ہائی کمان فیصلہ کرے گا۔

این سی پی ہمیشہ سے اپوزیشن اتحاد کا حصہ: مجید میمن نے افواہ کی تردید کی

کانگریس صدر سونیا گاندھی اور مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی ودیگر لیڈران جمعہ کو اپوزیشن پارٹیوں کی میٹنگ کے بعد باہر آتے ہوئے۔ تصویر، یو این آئی۔

انہوں نے کہا کہ دوسرے ایم ایل اے اور این سی پی گجرات پردیش کے صدر جینت بھائی پٹیل بوسکی نے احمد پٹیل کو ووٹ دیا جو44ووٹ ثابت ہوا ، کانگریس کے 43ووٹ تھے جبکہ ایک ووٹ این سی پی کا تھا۔ اس کے باوجود کانگریس نے غلط پروپیگنڈہ کیا ہے ،حالانکہ ہم اپوزیشن اتحاد کے حامی ہیں،لیکن جمعہ کی میٹنگ میں شریک نہ ہونے کا غلط مطلب نہیں نکالا جائے بلکہ ہم ایک مضبوط اپوزیشن کے لیے ہمیشہ کام کرتے رہے ہیں اور کرتے رہیں گے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز