new hajj policy without mahram not a single application received yet in gujrat na– News18 Urdu

حج 2019: مودی کے گجرات میں اس بار بھی بغیر محرم ایک بھی خاتون کی درخواست نہیں

پورے گجرات سے اس بار بھی ایک بھی ایسی خاتون نے درخواست نہیں دی ہے جو شریعت سے اوپر اٹھ کر بغیر محرم حج کے سفر پر جانا چاہتی ہو

Feb 08, 2019 04:29 PM IST | Updated on: Jul 16, 2019 08:00 PM IST

نئی حج پالیسی نافذ ہونے کے بعد گجرات میں حج درخواستوں میں کافی کمی دیکھنے کو مل رہی ہے۔ گزشتہ سال جہاں 45 ہزار لوگوں نے گجرات سے درخواستیں دی تھیں وہیں، اس سال یہ تعداد صرف 30 ہزار تک ہی محدود ہو کر رہ گئی ہے۔ گجرات کا کل کوٹہ 6602 کا ہے۔ بغیر محرم کے حج  سفر پر جانے والی خواتین کو قرعہ اندازی میں حصہ نہیں لینا پڑتا ہے۔  باوجود اس کے پورے گجرات سے اس بار بھی ایک بھی ایسی خاتون نے درخواست نہیں دی ہے جو شریعت سے اوپر اٹھ کر بغیر محرم حج کے سفر پر جانا  چاہتی ہو۔

اس سلسلے میں نیوز 18 سے بات کرتے ہوئے گجرات حج کمیٹی کے سیکشن افسر مبین صدیقی نے کہا کہ نئی حج پالیسی نافذ ہونے کے بعد سے ہم امید کرتے تھے کہ گجرات سے بھی ایسی درخواستیں آئیں گی لیکن اس سال اور گزشتہ سال بھی گجرات حج کمیٹی کو ایک بھی ایسی درخواست موصول نہیں ہوئی۔

حج 2019: مودی کے گجرات میں اس بار بھی بغیر محرم ایک بھی خاتون کی درخواست نہیں

گجرات حج کمیٹی کے سیکشن افسر مبین صدیقی: فوٹو نیوز 18

بغیر محرم کے حج  کے سفر پر جانے کی نئی پالیسی کو لے کر احمد آباد کے ایک علاقہ میں موجود مدرسہ جامعہ ابن عباس کے مہتمم مفتی رضوان تارا پوری نے کہا کہ ایک عورت مالی اعتبار سے بھلے ہی کافی مضبوط ہو لیکن جب تک اس کے ساتھ کوئی محرم نہیں ہے اس کے اوپر حج فرض نہیں ہوتا۔ انہوں نے کہا کہ بھلے ہی  چارعورتیں ایک ساتھ اجتماعی شکل میں بغیر محرم کے حج کے سفر پر جانا چاہتی ہوں لیکن وہ بھی جائز نہیں کیونکہ ایک عورت دوسری عورت کی محرم نہیں ہوسکتی ہے۔ محرم صرف اور صرف ایک آدمی ہی بن سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پورے گجرات سے ایک بھی مسلم خاتون نے بغیر محرم کے حج کے سفر پر جانے کی درخواست نہیں دی۔ اس سے صاف ہو جاتا ہے کہ مسلم برادری کے لوگوں کو اپنی شریعت سے کس قدر محبت ہے۔

وہیں، اس سلسلے میں جماعت اسلامی ہند کی رکن فاطمہ تنویر نے کہا کہ اسلام میں حج ایک فرض ہے لیکن اس میں بھی کچھ شرطیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مودی حکومت مسلم خواتین کو انصاف دلوانے کے نام پر  تین طلاق اور بغیر محرم کے حج کے سفر پر جانے کی اجازت دے کر مسلم خواتین کےساتھ انصاف نہیں بلکہ ہماری شریعت میں دخل اندازی کر رہی ہے۔ ساتھ ہی ساتھ انہوں نے گجرات کی عورتوں کو مبارکباد پیش کرتے ہوئے کہا کہ پی ایم نریندر مودی کے آبائی وطن کی مسلم خواتین ان کے بہکاوے میں نہیں آئیں۔ اس سے صاف ظاہر ہوتا ہے کہ مسلم عورتوں کو بھلے ہی چاہے جتنی چھوٹ دے دی جائے لیکن وہ اپنے شریعت کے ساتھ ہی ہمیشہ جڑی رہیں گی۔

عارف عالم کی رپورٹ

 

Loading...