گئوركشكوں کے حملے میں زخمی پہلو خان کی موت، حملے کی پوری کہانی سنیں مہلوک کے بیٹوں کی زبانی

گئوركشكوں کے حملے میں زخمی ہوئے تمام لوگ میوات ضلع کے جے سنگھ پور گاؤں کے رہنے والے ہیں۔

Apr 06, 2017 09:09 AM IST | Updated on: Apr 06, 2017 09:09 AM IST

جے پور۔ راجستھان کے الور ہائی وے پر ہفتہ کو مبینہ گئوركشكوں کے حملے میں بری طرح زخمی ہوئے ایک مسلمان شخص نے بدھ کو ہسپتال میں دم توڑ دیا۔ مہلوک پہلو خان ​​کی عمر 55 سال تھی۔ گئوركشكوں نے گئو اسمگلنگ کا الزام لگا کر پہلو خان ​​سمیت قریب 5 لوگوں کو بے رحمی سے پیٹا تھا۔ سنگین حالت میں پہلو خان ​​کو الور کے ہسپتال میں داخل کرایا گیا تھا۔

گئوركشكوں کے حملے میں زخمی ہوئے تمام لوگ میوات ضلع کے جے سنگھ پور گاؤں کے رہنے والے ہیں۔ اس پوری واردات کے وقت مہلوک پہلو خان ​​کے دونوں بیٹے بھی ان کے ساتھ ہی تھے۔

گئوركشكوں کے حملے میں زخمی پہلو خان کی موت، حملے کی پوری کہانی سنیں مہلوک کے بیٹوں کی زبانی

پورے معاملے کی کہانی ان کے بیٹوں کی زبانی

گئوركشكوں کے حملے کے دوران پہلو خان ​​کے بیٹے عارف اور ارشاد بھی ان کے ساتھ موجود تھے۔ عارف اور ارشاد کے مطابق، وہ راجستھان سے پانچ گایوں کو دو الگ الگ پک اپ وین میں بھر کر راجستھان کے جے پور کے قریب لگنے والے میلے سے خرید کر گھر کے لئے آ رہے تھے۔ ایک پک اپ وین گاؤں کی ہی تھی تو دوسری راجستھان سے کرایہ پرلی گئی تھی۔

ایک میں دو گائے اور ان کے بچھڑے اور دوسری میں تین گائے اور ان کے بچھڑے وغیرہ لدے ہوئے تھے۔ جیسے ہی پک اپ وین جے پور شاہراہ پر واقع بہروڑ کے پاس پہنچی تبھی دو تین بائکوں پر سوار نصف درجن سے زیادہ نام نہاد نامعلوم گئوركشكوں نے ان کی گاڑی ركوائی اور ان کے لباس دیکھتے ہی بیلٹ، ڈنڈے، ہاکی وغیرہ سے ان پر تابڑ توڑ حملہ کر دیا۔ جب تک پولیس موقع پر پہنچی تب تک تمام 5 لوگوں کو مردہ سمجھ کر حملہ آور فرار ہو گئے۔

پولیس نے ہم سب کو نجی ہسپتال میں داخل کرایا، جہاں علاج کے دوران آج ہمارے والد کی موت ہو گئی۔

آٹھ بچوں کا باپ تھا پہلو خان

پہلو خان ​​کے آٹھ بچے ہیں۔ ان میں سے چھ بچوں کی شادی ہو چکی ہے، دو ابھی کنوارے ہیں۔

حملہ آوروں کو پھانسی دینے کا مطالبہ

راجستھان پولیس نے اس سلسلے میں نامعلوم افراد کے خلاف قتل کا معاملہ تو درج کر لیا ہے، لیکن ان کی گرفتاری اب بھی بڑا سوال ہے۔ متاثرہ خاندان حملہ آوروں کو پھانسی دینے کا مطالبہ کر رہا ہے۔ متاثرہ خاندان والوں کی مانیں تو ان کے پاس گائے کو خریدنے کے تمام کاغذات تھے، اس کے باوجود گئوركشكوں نے جان بوجھ کر ان کے ساتھ مارپیٹ کی تھی۔ تمام ملزمان کو جلد گرفتار کر انہیں پھانسی کی سزا دی جانی چاہئے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز