نریندرمودی نے ایک اور کانگریسی لیڈر سلمان نظامی پر لگایا غیر مہذب ہونے کا الزام

لوناؤڑہ/ احمد آباد۔ وزیر اعظم نریندر مودی نے آج کشمیر کے یوتھ کانگریس کے لیڈر سلمان نظامی پر ان کے خلاف نازیبا زبان استعمال کرنے کا الزام لگاتے ہوئے آج کہا کہ کیا 'صوفیانہ' باتیں کرنے والی کانگریس کی قیادت ان کے 'باپ'کے بارے میں پوچھنے والے اس رہنما کے خلاف بھی کارروائی کی ہمت کرے گی۔

Dec 09, 2017 02:27 PM IST | Updated on: Dec 09, 2017 02:27 PM IST

لوناؤڑہ/ احمد آباد۔  وزیر اعظم نریندر مودی نے آج کشمیر کے یوتھ کانگریس کے لیڈر سلمان نظامی پر ان کے خلاف نازیبا زبان استعمال کرنے کا الزام لگاتے ہوئے آج کہا کہ کیا 'صوفیانہ' باتیں کرنے والی کانگریس کی قیادت ان کے 'باپ'کے بارے میں پوچھنے والے اس رہنما کے خلاف بھی کارروائی کی ہمت کرے گی۔ دوسری طرف کانگریس لیڈر راجیو شکلا نے کہا کہ مسٹر مودی اصلی مسائل اور بی جے پی حکومت کی ناکامی سے گجرات انتخابات میں توجہ بھٹکانے کے لئے ایسی باتیں اٹھا رہے ہیں۔ وہ سلمان نام کے کسی لیڈر کو نہیں جانتے۔ یہ کوئی بڑا لیڈر نہیں ہو سکتا۔ مسٹر مودی نے گجرات کے قبائلی اکثریتی لوناؤڑہ میں ایک انتخابی ریلی میں کہا کہ فوج کو زانی قرار دینے اور کشمیر کی آزادی کے حامی اور گھر گھر سے افضل (پارلیمنٹ پر حملہ کے لئے پھانسی کی سزا پانے والے دہشت گرد) کے نکلنے کی باتیں کرنے والے سلمان گجرات میں کانگریس کے اسٹار کمپینر ہیں۔ انہوں نے ایک ٹویٹ میں کہا ہے کہ راہل کے والد اور دادی نے ملک کے لئے قربانی دی اوران کے نانا آزادی سےجڑے تھے۔  یہاں تک تو ٹھیک ہے لیکن وہ آگے لکھتے ہیں- ’مودی تم بتاؤ تمہارا باپ کون ہے تمہاری ماں کون ہے‘۔

مسٹر مودی نے کہا کہ ایسی زبان کا استعمال تو ہم اپنے دشمن کے لئے بھی نہیں کرتے۔ میں سلمان کو بتانا چاہتا ہوں کہ میرا باپ اور ماں دونوں ہندوستانی ہیں اور اس کے بیٹے کے طور پر میں زندگی بھر اس کی خدمت کرتا رہوں گا۔ انہوں نے کہا کہ گجرات کے مسلمان بھی ایسی زبان کا استعمال نہیں کرتے۔ انہوں نے کہا-’’ ایسا کہنے والا سلمان راہل کے لئے ووٹ مانگتا ہے، کیا انہیں معاف کیا جا سکتا ہےکیا ملک کی فوج زانی ہے۔ یہ اس ملک کی فوج کی توہین ہے یا نہیں۔ کیا گجرات میں بھی گھر گھر سے افضلوں کو پیدا کرنا ہے۔‘‘مسٹر مودی نے منی شنکر ایئر کے انہیں نیچ کہنے کے واقعہ کا ذکر کرتے ہوئے لوگوں سے سوالیہ لہجے میں کہا کہ اگر کوئی دلت، پسماندہ اور قبائلی سماج کا ہو لیکن کیا اس کو نیچ کہا جانا کسی کو منظور ہوگا۔

نریندرمودی نے ایک اور کانگریسی لیڈر سلمان نظامی پر لگایا غیر مہذب ہونے کا الزام

وزیر اعظم نریندر مودی گجرات میں ایک انتخابی مہم میں: فائل فوٹو۔

انہوں نے کہا کہ ایسے لوگوں کو سزا ملنی چاہئے اور ان کی پارٹی کو گجرات سے صاف کیا جانا چاہئے۔ کانگریس کا ملک سے خاتمہ کرنے والی ملک کے عوام کوئی پاگل نہیں ہیں۔اس کا امیٹھی سمیت کانگریس کا گڑھ کہے جانے والے اتر پردیش سے خاتمہ ہو گیا ہے۔ عوام نے بھی ملک سے سیاسی صفائی مہم شروع کی ہے۔

ادھر کانگریس لیڈر مسٹر شکلا نے کہا کہ بی جے پی کے وزیر گری راج سنگھ، ایم پی ساکشی مہاراج اور ترجمان جی وی ایل نرسمہا راؤجیسے بڑے رہنماؤں نے کانگریس کی قیادت اور محترمہ سونیا گاندھی کے بارے میں انتہائی نازیبا تبصرے کئے ہیں ان میں ان کے خلاف کوئی کارروائی نہیں ہوئی۔ جبکہ راہل جی نے وزیر اعظم کے لئے سطحی زبان استعمال کرنے پر مسٹر ائیر کو نکال باہر کیا۔ سلمان نظامی کانگریس کے کوئی بڑے لیڈر نہیں ہیں، نہ وہ کسی عہدے پر ہیں۔ ہم انہیں نہیں جانتے۔ یہ سب کہہ کر مسٹر مودی انتخابات میں اصل ایشوز سے بھٹکار ہے ہیں۔ واضح رہے کہ مسٹر مودی نے کل احمد آباد کے ایک اجتماع میں ایسے سینئر کانگریسی لیڈروں کی پوری فہرست پیش کی تھی جنہوں نے ان کے لئے نامناسب زبان کا استعمال کیا تھا۔

Loading...

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز