ہجومی تشدد دراصل مسلمانوں کی حب الوطنی کا امتحان ہے: مولانا توقیر رضا خان

Jul 29, 2017 05:57 PM IST | Updated on: Jul 29, 2017 05:57 PM IST

اورنگ آباد۔  بھیڑ کا تشدد دراصل  مسلمانوں کی حب الوطنی کا امتحان ہے ۔ وطن پرستی  کی اس جنگ میں  ہم سر خرو ہوں گے ۔ ان خیالات کا اظہارمولانا توقیر رضا خان نے کیا ۔ وہ اورنگ آباد میں ماب لینچنگ کے خلاف ایک روزہ احتجاجی دھرنے سے خطاب کر رہے تھے ۔ اس دھرنے میں  ہزاروں کی تعداد میں لوگوں نے شرکت کی ۔ اس موقع پر سوامی اگنی ویش اور عمران پرتاپ گڑھی نے بھی خطاب کیا۔

 بھیڑ کے تشدد کے خلاف اورنگ آباد میں آپسی اتحاد کی ایک اور تاریخ رقم کی گئی ۔  مہاراشٹر مسلم عوامی کمیٹی کی کال پرہزاروں کی تعداد میں لوگوں نے ماب لنچنگ کے خلاف دھرنے میں حصہ لیا ۔ ملک کے نامورعلما اوردانشوروں نےاس احتجاجی دھرنے سے خطاب کیا ۔ باہمی اتحاد کےعلمبردارمولانا توقیر رضا خان نے ملک کے موجودہ حالات پرروشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ  ہمارے علما اس معاملے میں بہت اہم رول ادا کررہے ہیں۔ حکومت کو ان کا مرہون منت ہونا چاہیئے ۔ گئورکشا کے نام پر قانون اپنے ہاتھ میں لیا جا رہا ہے لیکن ہمیں صبرکا دامن تھامے رہنا ہے۔

ہجومی تشدد دراصل مسلمانوں کی حب الوطنی کا امتحان ہے:  مولانا توقیر رضا خان

اسی طرح معروف شاعر عمران پرتاپ گڑھی نے  کہا کہ مسلمان  اگر یہ سوچ رہے ہیں  کہ وہ تنہا  ہوچکے ہیں تو وہ غلط فہمی کا شکار ہیں ۔ ہزاروں افراد کے اس مجمع سے آریہ سماج کے دھرم گرو سوامی اگنی ویش نے  بھی خطاب کیا ۔ اپنی تقریر میں  سوامی اگنی ویش نے اسلام کو امن وسلامتی کا مذہب قرار دیا۔ متنازعہ رام مندر۔ بابری مسجد تنازعہ پر سوامی  نے کہا کہ اگر متنازعہ مقام پر زبردستی مندرتعمیر کیا گیا تو ملک ٹوٹ جائیگا ۔  بھارت ماتا کی جئے اور وندے ماترم  جیسے نعروں پر  سوامی اگنی ویش نے  اپنے انداز میں تبصرہ کیا ۔

imran pratapgadhi

اس اجلاس میں  شہر اور اطراف کے علاقوں سے بڑے پیمانے پر لوگوں نے شرکت کی ۔  ڈیویژنل کمشنر آفس کا وسیع و عریض احاطہ اپنی تنگ دامنی کا مظاہرہ کررہا تھا ۔معروف شاعر عمران پرتاپ گڑھی نے اپنے اشعار اور تقریرکے منفرد انداز سے سامعین میں نیا جوش وو لولہ پیدا کیا ۔ ساتھ  ہی موجودہ حکومت کی پالیسیوں پر بھی شاعرانہ انداز میں چوٹ کی ۔

swami agnivesh

 اس موقع پر مولانا توقیر رضا اور سوامی اگنی ویش نے ایک  دوسرے سے بغل گیر ہوکر پورے ملک کو آپسی اتحاد کا پیغام دیا ۔ مولانا توقیر رضا خان نے کہا کہ ملک کی سالمیت آپسی  اتحاد میں مضمر ہے ۔ دھرنے کے دوران ہی  مہاراشٹر مسلم عوامی کمیٹی کی جانب سے ڈیویژنل کمشنر کی معرفت صدر جمہوریہ کو مطالباتی میمورنڈم روانہ کیا گیا ۔ میمورنڈم میں  گئو رکشا کے نام پر مارے جانے والے افراد کے لواحقین کو فی کس ایک کروڑ روپئے معاوضہ دینےکا مطالبہ کیا گیا۔ ساتھ ہی قصور واروں کے خلاف سخت قانونی کارروائی کا مطالبہ کیا گیا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز