گجرات کے نوجوانوں کی آواز کو دبانا اور خریدنا چاہتی ہے مودی حکومت: راہل گاندھی

راہل گاندھی نے کہا کہ گجرات کا سماج آج سڑکوں پر آ گیا ہے، آندولن لڑ رہا ہے۔

Oct 23, 2017 05:36 PM IST | Updated on: Oct 23, 2017 05:36 PM IST

احمدآباد۔ شمالی گجرات کے پاٹیدار رہنما نریندر پٹیل کے ذریعہ بی جے پی پر انہیں خریدنے کے لئے ایک کروڑ روپے کا الزام لگائے جانے کے ایک دن بعد کانگریس کے نائب صدر راہل گاندھی نے پیر کو حکمراں پارٹی پر نشانہ لگاتے ہوئے کہا کہ گجرات امولیہ ہے، اسے کبھی خریدا نہیں جا سکتا۔ راہل نے کہا کہ گجرات کے نوجوانوں کو دبایا نہیں جا سکتا اور نہ ہی خریدا جا سکتا ہے۔ آج کی حکومت اس قدر ڈر گئی ہے کہ وہ گجرات کے نوجوانوں کی آواز کو دبانا اور خریدنا چاہتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پچھلے سال حکومت نے بڑے صنعت کاروں کے کروڑوں روپے معاف کر دئیے جب کہ کسانوں نے قرض معافی کی مانگ کی تو ان کا قرض معاف نہیں کیا گیا۔

راہل گاندھی نے کہا کہ گجرات کا سماج آج سڑکوں پر آ گیا ہے، آندولن لڑ رہا ہے۔ انہوں نے میک ان انڈیا پر طنز کستے ہوئے کہا کہ مودی جی میک ان انڈیا کی بات کرتے ہیں اور گجرات میں آج 30 لاکھ بے روزگار نوجوان ہیں۔ یہ نوجوان روزگار کی تلاش میں روز نکلتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس پارٹی سب کی پارٹی ہے۔ کانگریس کی حکومت آئے گی تو وہ گجرات کی حکومت ہوگی۔ وہ ہر طبقے کی حکومت ہوگی۔ نوٹ بندی پر نشانہ سادھتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہم نے پہلے ہی بتایا تھا کہ جی ایس ٹی کانگریس کی سوچ ہے۔

گجرات کے نوجوانوں کی آواز کو دبانا اور خریدنا چاہتی ہے مودی حکومت: راہل گاندھی

کانگریس نائب صدر راہل گاندھی کی فائل فوٹو۔ پی ٹی آئی۔

Loading...

گجرات اسمبلی الیکشن کی تاریخوں کا اعلان بھلے ہی نہ ہوا ہو، لیکن سیاسی جماعتوں میں اس کے لئے سرگرمیاں بڑھتی ہی جا رہی ہیں۔ گزشتہ 22 دنوں میں پی ایم مودی نے تین دفعہ گجرات کا دورہ کیا۔ اب کانگریس کے نائب صدر راہل گاندھی پیر کو گجرات پہنچے۔ راہل اگلے تین دن تک یہاں رہیں گے۔

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز