رجستھان : ایصال ثواب کیلئے دعوت کرنے پر وزیر ٹرانسپورٹ یونس خان قانون کی خلاف ورزی کے قصوروارقرر

راجستھان میں سیکر کی ایک عدالت نے وزیر ٹرانسپورٹ یونس خان کو والد کی موت کے بعد کھانے کی دعوت کرنے کے 12 سال پرانے معاملے میں قصوروار قرار دیا ہے

Sep 22, 2017 03:59 PM IST | Updated on: Sep 22, 2017 03:59 PM IST

سیکر: راجستھان میں سیکر کی ایک عدالت نے وزیر ٹرانسپورٹ یونس خان کو والد کی موت کے بعد کھانے کی دعوت کرنے کے 12 سال پرانے معاملے میں قصوروار قرار دیا ہے۔ ایڈیشنل ضلع و سیشن جج نے وزیر ٹرانسپورٹ یونس خان کو والد کے انتقال پر ضیافت کرکے قانون کی خلاف ورزی کرنے کا قصوروار ٹھہرایا ہے جبکہ اس معاملے میں اس وقت کے ضلع کلکٹر اور پولس سپرنٹنڈنٹ سمیت دیگر حکام کو بری کر دیا گیا ہے ۔

پیپلز یونین فار سول لبرٹیز کے کارکن کیلاش مینا نے 2005 میں لكشمن گڑھ کی عدالت میں مسٹر یونس خان کے خلاف اپنے والد تاجو خان ​​کی موت پر ضیافت منعقد کرکے قانون کی خلاف ورزی کرنے کا مقدمہ دائر کیا تھا۔ اس معاملے میں افسران پربھی الزام لگایا گیا تھا۔ مسٹر یونس خان نے موت پر ضیافت کا اشتہار اخبارات میں شائع کروایا تھا۔

رجستھان : ایصال ثواب کیلئے دعوت کرنے پر وزیر ٹرانسپورٹ یونس خان قانون کی خلاف ورزی کے قصوروارقرر

راجستھان وزیر ٹرانسپورٹ یونس خان

وسندھرا راجے حکومت میں وزیر ہوتے ہوئے قانون کی خلاف ورزی کرنے کے معاملے میں دائر اس مقدمے کو بعد میں ایڈیشنل ضلع و سیشن کورٹ میں ٹرانسفر کر دیا گیا تھا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز