Live Results Assembly Elections 2018

ٹرین میں لڑکی سے ریپ : معاملے میں 24 گھنٹے بعد بھی ایف آئی آر درج نہیں ، واقعے کو دبانے کوشش

متاثرہ لڑلی کی حالت ابھی بھی خراب ہے۔ وہ کچھ بولنے کی حالت میں نہیں ہے۔ چکردھرپور ریلوے اسپتال میں اس کا علاج چل رہا ہے

Oct 11, 2018 06:41 PM IST | Updated on: Oct 11, 2018 06:46 PM IST

ہاوڑا ۔ ممبئی ریلوے  پر چکر دھر پور اور جمشید پور کے درمیان پیسنجر ٹرین میں لڑکی کے ساتھ ریپ کے معاملے میں پولیس کی کارروائی بیحد سست چال سے چل رہی ہے۔ معاملے میں ایک دن گزر جانے کے بعد بھی ایف آئی آر درج نہیں ہوئی ہے۔ متاثرہ کا میڈیکل ٹیسٹ بھی نہیں کرایا گیا ہے۔

اس معاملے میں جی آر پی ، آر پی ایف اور مقامی تھانہ اپنے سطح سے جانچ میں مصروف ہوئے ہیں لیکن کسی نتیجے پر نہیں پہنچے ہیں۔ سبھی ایک دوسرے پر تھوپنے اور معاملے کو کسی طرح دبانے کی کوشش کر رہے ہیں۔ چکر دھرپور ریلوے کے ڈی آر ایم چھرسال نے اس معاملے کو ریلوے کا معاملہ نہ بتاتے ہوئے سیدھے تینوں سکیورٹی ایجنسیوں پر تھوپ دیا ہے۔

ٹرین میں لڑکی سے ریپ : معاملے میں 24 گھنٹے بعد بھی ایف آئی آر درج نہیں ، واقعے کو دبانے کوشش

اسپتال میں متاثرہ کی حالت نازک

ادھر متاثرہ لڑلی کی حالت ابھی بھی خراب ہے۔ وہ کچھ بولنے کی حالت میں نہیں ہے۔ چکردھرپور ریلوے اسپتال میں اس کا علاج چل رہا ہے لیکن اس کی حالت میں خاص سدھار نہیں ہے۔ ت یوں سکیرٹی ایجنسی لڑکی کے ہوش میں آنے کا انتظار کر رہی ہیں۔ حالانکہ چکر دھرپور مہیلا تھانہ انچارج نے لڑکی کی حالت دیکھنے کے بعد میڈیکل کرانے کا حکم دیا ہے۔

Loading...

در اصل متاثرہ لڑکی آر پی ایف کے ہی ایک جوان کی بیٹی ہے۔ اس لئے معاملے کو دبانے کی پر زار کوشش ہو رہی ہے۔ جی آرپی کے ڈی ایس پی رام منوہر شرما نے کہا کہ پیسینجر ٹرین سے بے سدھ  کی حالت میں لڑکی ملی تھی اور اس نے ریلوے کے ڈاکٹر کو کاغذ پر لکھ کر ریپ کی بات کہی لیکن پولیس اسے صحیح نہیں مان رہی ہے۔ ڈی ایس پی نے کہا کہ پرچی میں لڑکی کے دستخط نہیں ہیں۔  حالانکہ معاملے کی جانچ جاری ہے۔

یہ بھی پڑھیں : آرمی جوان نے بنایا نابالغ لڑکے ۔ لڑکی کا برہنہ ویڈیو ، کی چھیڑ چھاڑ

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز