ڈیبٹ کارڈ ٹرانزیکشنز پر کم کی گئی ایم ڈی آر قیمت 31 مارچ کے بعد بھی رہے گی جاری

مرکزی بینک نے 500 روپے اور ایک ہزار روپے کے پرانے نوٹوں کو بند کئے جانے کے بعد ڈیجیٹل ٹرانزیکشن کو فروغ دینے کی کوشش کے تحت یکم جنوری سے ایم ڈی آر میں کمی کی تھی

Mar 30, 2017 08:27 PM IST | Updated on: Mar 30, 2017 08:27 PM IST

ممبئی : ریزرو بینک آف انڈیا آر بی آئی نے آج کہا کہ ڈیبٹ کارڈ سے کیے جانے والے ٹرانزیکشنز پر لگنے والے مرچنٹ ڈسکاؤنٹ ریٹ (ایم ڈی آر) کی نوٹوں کی منسوخی کے پیش نظر کم کی گئی قیمتیں 31 مارچ کے بعد بھی جاری رہیں گی۔ مرکزی بینک نے 500 روپے اور ایک ہزار روپے کے پرانے نوٹوں کو بند کئے جانے کے بعد لوگوں کے پاس نقد رقم کی کمی اور ڈیجیٹل ٹرانزیکشن کو فروغ دینے کی کوشش کے تحت یکم جنوری سے 31 مارچ تک کے لئے ایم ڈی آر میں کمی کی تھی۔

ڈیبٹ کارڈ سے ایک ہزار روپے تک کے ٹرانزیکشن پر ایم ڈی آر کی زیادہ سے زیادہ حد 0.75 فیصد سے کم کرکے 0.25 فیصد اور ایک ہزار روپے سے دو ہزار روپے تک کے لئے 0.75 فیصد سے کم کرکے 0.50 فیصد کر دی گئی ہے۔ تاہم دو ہزار روپے سے زیادہ کے ٹرانزیکشن پر لگنے والے ایم ڈی آر کی زیادہ سے زیادہ حد کو ایک فیصد پر جوں کا توں رکھا گیا تھا۔

ڈیبٹ کارڈ ٹرانزیکشنز پر کم کی گئی ایم ڈی آر قیمت 31 مارچ کے بعد بھی رہے گی جاری

آر بی آئی نے بتایا کہ ایم ڈی آر میں مستقل تبدیلی کے لئے 16 فروری کو ہدایت جاری کی گئی تھی۔ اس پر بینکوں، غیر بینکاری اداروں، سرکاری محکموں / وزارتوں اور عام لوگوں کی تجاویز / تبصرے مل گئے ہیں اور ان پر غور کیا جا رہا ہے۔ اس نے کہا کہ آخری ہدایات جاری ہونے تک موجودہ نظام جاری رہے گا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز