سرکاری قرض بڑھنے سے ملک کی ساکھ متاثر ہوئی : ارجت پٹیل

Jan 11, 2017 10:11 PM IST | Updated on: Jan 11, 2017 10:11 PM IST

گاندھی نگر: ریزرو بینک کے گورنر ارجت پٹیل نے آج کہا کہ سرکاری قرض بڑھنے کی وجہ سے مجموعی گھریلو مصنوعات پر منفی اثر پڑ رہا ہے جس سے ملک کی ساکھ بھی متاثر ہو رہی ہے۔ مسٹر ارجت پٹیل نے یہاں آٹھویں وائبرینٹ گجرات کانفرنس میں کہا کہ حکومت کو وفاقی اور ریاستی حکومت کے قرضوں میں کمی کرنے کی سمت میں قدم اٹھانا چاہئے۔ انہوں نے بین الاقوامی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) کے اعداد و شمار کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان G 20 ممالک کے سب سے زیادہ مالی خسارے والے ممالک میں سے ایک ہے۔

انہوں نے کہا کہ آر بی آئی نے مہنگائی کی شرح کا ہدف چار فیصد رکھا ہے جسے حاصل کرنے کے لئے چھ رکنی کرنسی پالیسی کمیٹی قائم کی گئی هے۔ اب ہمیں یہ یقینی بنانا ہوگا کہ اب تک جو پیش رفت ہوئی ہے اس کے پیش نظر یہ ہدف پائیدار طریقے سے حاصل ہو۔ افراط زر کو کم کرنے میں مانیٹری پالیسی کے علاوہ حکومت کی معاون پالیسیوں کا بھی کوئی کم اہم کردار نہیں ہے۔

سرکاری قرض بڑھنے سے ملک کی ساکھ متاثر ہوئی : ارجت پٹیل

آر بی آئی کے گورنر نے کہا کہ قرض یا مستقبل کے وسائل کا استحصال کرنا ترقی کا کوئی شارٹ کٹ راستہ نہیں ہے۔ اس کے بدلے، بنیادی ڈھانچہ کو بہتر بنانے اور عوامی بنیادی ڈھانچے میں سرکاری خرچ کرنے کے طریقوں کو بدلنے سے ہونے والی ترقی مستقل ہوگی۔ پبلک ٹرانسپورٹ میں سرمایہ کاری خاص طور پر ریلوے اور شہری نقل و حمل پر خرچ کرنے سے اخراجات میں کمی آ سکتی ہے اور پیداور بڑھ سکتی ہے۔اس سے تیل درآمد کا بل کم ہو جائے گا اور شہروں کی فضائی آلودگی میں کمی کا اضافی فائدہ ہوگا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز