افراز الاسلام قتل کیس : 2018 میں جیل سے الیکشن لڑ سکتا ہے قتل کا ملزم شنبھو لال

راجستھان کے راجسمند میں 50 سالہ مسلم شخص افراز الاسلام کے قتل کا ملزم شنبھو لال ریگر ایک مرتبہ پھر سرخیوں میں ہے ۔

Dec 26, 2017 11:06 PM IST | Updated on: Dec 27, 2017 09:54 AM IST

جے پور : راجستھان کے راجسمند میں 50 سالہ مسلم شخص افراز الاسلام کے قتل کا ملزم شنبھو لال ریگر ایک مرتبہ پھر سرخیوں میں ہے ۔ ریاست میں متعدد ہندو تنظیمیں اسے ہیرو مانتے ہوئے اس کے حق میں ماحول بنانے میں مصروف ہوگئی ہیں ۔ ریاست میں 2018 میں اسمبلی انتخابات ہونے والے ہیں ۔ جیل میں بند شنبھو لال آزاد امیدوار کے طور پر الیکشن میں اتر سکتا ہے۔

شنبھو لال نے سوشل میڈیا پر قتل کا لائیو ویڈیو شیئر کر کے جو کیا تھا ، ویسا پہلے کبھی نہیں ہوا ۔ الیکشن کے پیش نظر مسلم تنظیمیں کوٹا ، ادے پور ، بھیلواڑہ اور جے پور میں ریلیا نکال کر ووٹروں کو آگاہ کررہی ہیں ۔ مسلم تنظیموں کی اپیل ہے کہ شنبھو لال ریگر کو دھیان میں رکھتے ہوئے ووٹنگ کا استعمال کریں ۔

افراز الاسلام قتل کیس : 2018 میں جیل سے الیکشن لڑ سکتا ہے قتل کا ملزم شنبھو لال

شنبھو لال ریگر ۔ فوٹو نیوز 18

شنبھو لال کے اہل خانہ کی مدد کررہی ہیں ہندو تنظیمیں

مسلم تنظیموں کی ریلی کے جواب میں کچھ ہندو تنظیمیں بھی میدان میں آگئی ہیں اور ریلیاں کررہی ہیں۔ ان تنظیموں نے شنبھو لال کے بچوں کی تعلیم کا خرچ اٹھانے کی بھی بات کہی ہے۔ کچھ ہندو تنظیموں نے شنبھو لال کے اہل خانہ کیلئے راشن کا بندوبست کرنے کی بھی یقین دہانی کرائی ہے۔

Loading...

فخر کرتے ہیں دوست

شنبھو لال نے جو بھی ، اس کے دوستوں کو اس پر فخر ہے ۔ شنبھو لال کے ایک دوست نے کہا کہ ہم کو تو فخر ہے اس پر ، اس میں شرم کی کوئی بات نہیں ہے۔ لو جہاد کا ایک معاملہ ہے ، ہمارے محلہ میں ہی اگر ایک دو کیس ہیں تو سوچئے پورے ملک میں کتنے معاملات ہوں گے ۔ شنبھو لال نے ایسے کنبوں کے دلوں میں ڈر پیدا کردیا ہے ۔ یہ ایک وارننگ ہے۔

Loading...

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز