بابری مسجد - رام مندر کیس : ہم کورٹ کو نہیں مانتے، عدالت سے پوچھ کر نہیں چلائی تھی تحریک : سنجے راوت

Jul 13, 2017 05:54 PM IST | Updated on: Jul 13, 2017 05:55 PM IST

ممبئی : شیوسینا کے لیڈر سنجے راوت نے بابری مسجد -رام مندر معاملہ کی کورٹ میں جاری سماعت کو لے کر جمعرات کو انتہائی متنازع بیان دیا ہے۔ شیوسینا کے ممبر پارلیمنٹ نے کہا کہ ایودھیا میں رام مندر کا مطالبہ کر رہے لوگ بابری مسجد تنازع پر کورٹ کے فیصلے کو تسلیم نہیں کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے رام مندر کی تحریک کورٹ سے پوچھ کر نہیں چلائی تھی۔

نیوز ایجنسی اے این آئی سے بات چیت کے دوران شیوسینا کے لیڈر راوت نے کہا کہ ہم کورٹ کو اس معاملہ (رام مندر معاملے) میں نہیں تسلیم کرتے ہیں ، کورٹ سے پوچھ کی تحریک نہیں چلائی تھی۔

بابری مسجد - رام مندر کیس : ہم کورٹ کو نہیں مانتے، عدالت سے پوچھ کر نہیں چلائی تھی تحریک : سنجے راوت

خیال رہے کہ بابری مسجد انہدام سے وابستہ دو معاملات ہیں۔ ایک کیس لکھنؤ اور دوسرا رائے بریلی میں ہے۔ رائے بریلی کورٹ میں بھارتیہ جنتا پارٹی اور وشو ہندو پریشد کے لیڈروں کے خلاف کیس کی سماعت کی جارہی ہے تو وہیں دوسرا معاملہ کارسیوکوں کے خلاف لکھنؤ ٹرائل کورٹ میں زیر التوا ہے۔

قابل ذکر ہے کہ 30 مئی کو سپریم کورٹ نے بی جے پی لیڈروں اڈوانی، جوشی اور اوما بھارتی کے خلاف سازش کا الزام برقرار رکھا تھا۔ ان تمام کو دیگر کارسیوکوں کے ساتھ مشترکہ ٹرائل کا سامنا کرنا پڑے گا۔ سپریم کورٹ نے دونوں کیسوں کو ایک ساتھ کرکے کیس کو رائے بریلی کورٹ سے لکھنؤ کورٹ منتقل کر دیا تھا ۔ ساتھ ہی ججوں کو 2 سال کے اندر اندر ٹرائل پورا کرنے کی بھی ہدایت جاری کی تھی ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز