شیوسینا کا مودی فیسٹ پر طنز، بادشاہ بھلے ہی جشن منائے ، لیکن عوام شامل نہیں ہوتے تو پھیکا رہتا ہے جشن

May 18, 2017 10:54 PM IST | Updated on: May 18, 2017 10:54 PM IST

ممبئی: بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی قیادت والی مرکزی حکومت کے تین سال مکمل ہونے پر مودی فیسٹ جشن منانے کے فیصلے پر شیو سینا نے طنز کرتے ہوئے کہا ہے کہ کسان خودکشی کر رہے ہیں، سرحد پر جوانوں کا شہید ہونا عروج پر ہے اور ایسے میں بی جے پی کی جشن منانے والے گروپ کو مبارکباد۔ شیو سینا کے ترجمان اخبار 'سامنا کے آج کے اداریہ میں لکھا گیا ہے کہ بی جے پی حکومت کے تین سال مکمل ہونے پر ملک میں تمام مشکلات کے باوجود اگر 26 مئی سے جشن منانے والے گروپ نے ملک کا دل پڑھ لیا ہے تو شاید ایسا نہیں ہے۔بادشاہ بھلے ہی جشن منائے لیکن جب تک عوام اس میں شامل نہیں ہوتے جشن پھیکا رہتا ہے۔

اس جشن میں کروڑوں روپے خرچ ہوں گے۔ سوچھتا مہم میں بھی کروڑوں روپے خرچ کئے گئے لیکن صفائی ستھرائی نظر آتی ہے کیا۔ گنگا ندی کی صفائی کا خرچیلا کام جاری ہے لیکن لوگوں کے ذہنوں میں سوال ہے کہ گنگا ندی کا پانی صاف ہو رہا ہے یا ملک کی تجوری صاف ہو رہی ہے۔ اداریہ میں آگے لکھا ہے کہ مسٹر مودی کے اچھے دن کے نعرے اور بیرون ملک سے کالا دھن لا کر سب کے اکاؤنٹ میں 15 لاکھ روپے جمع کرانے کا یقین دلا کر مسٹر مودی نے پورے ملک میں الیکشن جیتا لیکن 15 لاکھ روپے کا کچھ نہیں ہوا بلکہ مودی حکومت نے نوٹوں کی منسوخی کر کے لوگوں جھٹکا دیا۔

شیوسینا کا مودی فیسٹ پر طنز، بادشاہ بھلے ہی جشن منائے ، لیکن عوام شامل نہیں ہوتے تو پھیکا رہتا ہے جشن

مرکز میں جب کانگریس حکومت تھی تب پاکستان کی جانب سے سرحد پر ہونے والے حملے کے لئے کانگریس کو ذمہ دار ٹھہرایا جاتا تھا اور اب جب حکومت تبدیل گئی ہے تو کیا سرحد پر جوان شہید نہیں ہو رہے۔ نکسلی عروج پر ہیں اور حکومت صرف وارننگ دے کر وقت ضائع کر رہی ہے۔

اسٹاک مارکیٹ میں لوگ دو روپے سے 100 روپے بنا رہے ہیں جبکہ پسینہ بہانے والا کسان 100 روپے کی لاگت میں دو روپے پا رہا ہے۔کسان پریشان ہیں۔ تین سال پہلے کانگریس حکومت کی جگہ پر موجودہ حکومت کو لانے میں شیوسینا نے بھی مدد کی۔ حزب اختلاف کے رہنما راہل گاندھی ہیں اس لئے ہمیں موقع ملا ہے اسے جشن منانے والے گروپ کو سمجھنا چاہئے اور کسانوں اور جوانوں کی شہادت کو فراموش نہیں کرنا چاہئے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز