بی جے پی کو جھٹکا ، صدر کے عہدہ کا امیدوار منتخب کرنے کا پورا حق وزیر اعظم کو دینے سے شیوسینامتفق نہیں

Jun 18, 2017 06:00 PM IST | Updated on: Jun 18, 2017 06:01 PM IST

ممبئی: صدارتی انتخابات کے لئے قومی جمہوری اتحاد (این ڈی اے) میں عام رائے بنانے کی بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی کوششوں کو زبردست جھٹکا لگا ہے، کیونکہ ذرائع کے مطابق صدر کے عہدہ کا امیدوار منتخب کرنے کا پورا اختیار وزیر اعظم مودی کو دینے پر این ڈی اے کی اتحادی پارٹی شیوسینا نے عدم رضامندی ظاہری کی ہے۔

خیال رہے کہ بی جے پی کے صدر امت شاہ نے آج یہاں شیوسینا سربراہ ادھو ٹھاکرے سے ان کی رہائش گاہ پر ملاقات کی۔ دونوں رہنماؤں کے درمیان ملاقات تقریبا ایک گھنٹے تک جاری رہی۔ اس موقع پر مہاراشٹر کے وزیر اعلی دیویندر فڑنويس بھی موجود تھے۔ مسٹر شاہ صدر جمہوریہ کے عہدے کے امیدوار کے تعلق سے اتفاق رائے قائم کرنے کی غرض سے مختلف سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں کے ساتھ ملاقات کر رہے ہیں۔

بی جے پی کو جھٹکا ، صدر کے عہدہ کا امیدوار منتخب کرنے کا پورا حق وزیر اعظم کو دینے سے شیوسینامتفق نہیں

بتایا جاتا ہے کہ میٹنگ میں بی جے پی کی جانب سے پیشکش کی گئی کہ صدارتی انتخابات میں امیدوار منتخب کرنے کا پورا حق این ڈی اے میں وزیر اعظم مودی کو دیا گیا ہے ، سو، شیوسینا بھی اس کی حمایت کرے۔ تاہم شیو سینا نے اس سے اختلاف ظاہر کیا ہے۔

مسٹر شاہ اور مسٹر ٹھاکرے کی ملاقات کو اس لیے بھی کافی اہم سمجھا جا رہا ہے، کیونکہ بی جے پی کی اتحادی شیوسینا نے گذشتہ دو موقعوں پر صدارتی عہدے کے لئے ترقی پسند اتحاد (یو پی اے) کے امیدوار کو ترجیح دی تھی۔ شیوسینا کے لوک سبھا کے 16 ارکان ، راجیہ سبھا کے تین اور 63 ممبران اسمبلی ہیں ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز