احمدآباد کی مشہور سیدی سعید کی جالی والی مسجد بنے گی ورچوئل میوزیم

Sep 28, 2017 08:38 PM IST | Updated on: Sep 28, 2017 08:38 PM IST

احمد آباد : وزیراعظم مودی نے گزشتہ دنوں جاپان کے وزیراعظم شنزو ابے کی میزبانی گجرات کے شہر احمدآباد میں کی تھی اوراس میں خاص بات یہ رہی تھی کہ مودی اور شنرو نے احمدآباد کی مشہور سیدی سعید کی جالی والی مسجد کا بھی دورہ کیا تھا۔ اس موقع پر سیدی سعید کی جالی پر کی گئی خوبصورت روشنی کو دیکھنے کے لئے دور دور سے لوگ آرہے تھے۔ اسی دوران سنی مسلم وقف کمیٹی کی جانب سے وزیراعظم مودی سے اس مسجد کو ورچوئل میوزیم بنانے کی درخواست کی گئی ،تو انہوں نے بھی اپنی رضامندی ظاہر کردی تھی ۔ جس کے پیش نظراب احمدآباد سنی مسلم وقف کمیٹی نے احمدآباد میونسپل کمشنر مکیش کمار سے ملاقات کر کے اس پروسیس کو آگے بڑھانے کی بات کی۔

مودی اور شنروابے کے سیدی سعید کی جالی والی مسجد کے دورہ کے دوران احمدآباد سنی مسلم وقف کمیٹی کے صدر رضوان قادری نے ان سے گذارش کی تھی کہ ٹورزم کو مد نظر رکھتے ہوئے اس مسجد کی جالی کو صحیح طریقے سے ڈیولپ کیا جائے اور مسجد کے اطراف میں گارڈن، لیڈ اسکیپنگ اور مسجد میں خوبصورت روشنی کی جائے۔ اس پر وزیر اعظم مودی نے کہا تھا کہ اس سے بہتر ہے کہ اس مسجد کو ورچوئل میوزیم بنا دیا جائے ۔

احمدآباد کی مشہور سیدی سعید کی جالی والی مسجد بنے گی ورچوئل میوزیم

رضوان قادری نے بتایا کہ اس کے بعد ہم نے احمدآباد میونسپل کمشنر اور اے ایس آئی کے ڈائریکٹر سے ملاقات کی تو پتہ چلا کہ وہ بھی اس سلسلہ میں آگے کام کرنا چاہتے ہیں کہ ایسا پر کشش نظارہ ہمیشہ لوگوں کو دیکھنے ملے۔ اس لئے ہیریٹیج ویک کے پہلے احمدآباد کی کئی تاریخی عمارتوں کو خوبصورت طریقہ سے سجانے کی بات میونسپل کمشنر نے میٹنگ کے دوران کی۔

واضح رہے کہ اس مسجد کی مغربی دیوار کی کھڑکیوں پر تراشی گئی جالیاں پوری دنیا میں مشہور ہیں اور تاریخی ورثہ میں بھی شامل ہیں ۔اس کھڑکی کو ایک دوسرے سے لپٹتی شاخوں والے درختوں کی منظر کشی کرتی یہ نقاشی پتھروں کو تراش کر کی گئی ہے۔ اس خوبصورت نقاشی کی وجہ سے یہ دنیا کی معروف مسجدوں میں شمار ہوتی ہے۔ سیدی سعید نے اس جالی والی مسجد کو 1573 میں تعمیرکرایا تھا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز