سپریم کورٹ کے حکم پر ناندیڑ ضلع انتظامیہ نے 600 سے زائد شراب کی دکانیں بند کروائیں

Apr 05, 2017 01:05 PM IST | Updated on: Apr 05, 2017 01:05 PM IST

ناندیڑ۔ سپریم کورٹ نے اپنے ایک حکم نامہ میں نیشنل اوراسٹیٹ ہائی ویز سے پانچ سو میٹر کے حدود میں واقع تمام شراب کی دکانیں بند کرنے کے احکامات جاری کیے ہیں ۔سپریم کورٹ کے اس حکم نامے پر سختی سے عمل آوری شروع ہوچکی ہے۔ مہاراشٹر کے دیگر اضلاع کی طرح ناندیڑ میں بھی عدالت کے فیصلے پر عمل آوری کرتے ہوئے ناندیڑ ضلع میں بھی ہائی ویز پر واقع شراب کی دکانیں بند کرنے کی کارروائی کی جارہی ہے ۔

سپریم کورٹ  کے فیصلہ پر سختی سے عمل کرتے ہوئے ناندیڑ ضلع انتظامیہ نے اب تک 6 سو سے زائد شراب کی دکانیں بند کروائی ہیں اور انہیں سیل کردیا گیا ہے ۔ کارروائی کا یہ عمل دیہی علاقوں کے علاوہ شہری حدود میں بھی جاری ہے ۔ یہی وجہ ہے کہ اس کی وجہ سے ناندیڑ شہرمیں شامل شراب کی 60 دکانیں بھی بند ہوگئی ہیں ۔ان دکانوں کو بچانے کی غرض سے ایک تجویز میونسپل کارپوریشن کے جنرل باڈی اجلاس میں منظور کی گئی ہے ۔اس قرارداد کے تحت شہری حدود میں شامل ہائی ویز کو بلدیہ نے اپنے ذمہ لینے کا فیصلہ کیا ہے ۔ اس فیصلہ سے شراب کی دکانیں سپریم کورٹ کے فیصلہ کے اثر سے بچ جائیں گی ۔ اس معاملے میں بلدیہ کی میئر سے استفسار کرنے پر انہوں نے اس معاملے میں کچھ اس انداز میں صفائی پیش کی ۔

سپریم کورٹ کے حکم پر ناندیڑ ضلع انتظامیہ نے 600 سے زائد شراب کی دکانیں بند کروائیں

کارپوریشن اجلاس میں منظور کی گئی  اس قرارداد کی مخالفت بھی شروع ہوگئی ہے ۔ بر سر اقتدار کارنگریس پارٹی کے سینئر کاپوریٹر عبدالستار نے اس معاملے میں میونسپل انتظامیہ کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا ہے اور شراب کے دکان مالکان کو فائدہ پہنچانے اور کارپوریشن کا معاشی نقصان کرنے کا الزام لگایا ہے ۔ ساتھ ہی اس معاملے میں کھلی بحث کروانے کی مانگ کی ہے ۔عام آدمی پارٹی نے بھی اس معاملے میں میونسپل انتظامیہ پر زبردست تنقید کی ہے ۔ ناندیڑ میونسپل کارپوریشن کی مالی حالت ویسی ہی بہت خراب چل رہی ہے ۔شہر میں ترقیاتی کاموں کو انجام دینے کیلئے حال ہی میں کارپوریشن انتظامیہ نے ڈیڑھ سو کروڑ روپئے کا قرض لیا ہے ۔ شہر کی سڑکوں کی دیکھ ریکھ اور مرمت کے لیے بجٹ کی کمی ہے ایسے میں ہائی ویز کی سڑکوں کو اپنے ذمہ لینے سے سرکاری تجوری پر مزید بوجھ بڑھے گا اور اس فیصلہ سے فائدہ سے نقصانات ہونے والے ہیں۔ایسے میں صاف طورپر یہ محسوس ہورہاہے کہ کارپوریشن انتظامیہ نے یہ فیصلہ شراب کی دکانوں کو بچانے کیلئے ہی کیا ہے ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز