پی پی پانڈے کی سبکدوشی کی پیشکش قبول کرنے کی سپریم کورٹ کی حکومت گجرات کو اجازت

Apr 03, 2017 06:19 PM IST | Updated on: Apr 03, 2017 06:19 PM IST

نئی دہلی۔  سپریم کورٹ نے آج گجرات کے پولیس ڈائریکٹر جنرل پی پی پانڈے کی سبکدوشی کی پیشکش قبول کرنے کی حکومت گجرات کو اجازت دے دی جس کے ساتھ ان کی ملازمت میں توسیع کے خلاف دائر عرضی نمٹا دی گئی۔ گجرات حکومت کی جانب سے اڈیشنل سالیسٹر جنرل تشار مہتا نے چیف جسٹس جے ایس کیہر اور جسٹس ڈی وائی چندرچوڑ کی بینچ کو با خبر کیا کہ مسٹر پانڈے نے فوری طور سے سبکدوش ہو جانے کی حکومت کو پیش کش کی ہے۔ مسٹر مہتا نے بتایا کہ ریاست کے سب سے اعلیٰ پولیس افسر نے حکومت کو خط لکھ کر یہ پیش کش کی تھی۔

اس کے بعد عدالت نے کہا کہ ریاستی حکومت کی دلیلوں کے پیش نظر مسٹر پانڈے کی سروس میں توسیع کے خلاف دائر پٹیشن غیر مؤثر ہو چکی ہے۔ اس عرضی کو نمٹا جاتا ہے۔

پی پی پانڈے کی سبکدوشی کی پیشکش قبول کرنے کی سپریم کورٹ کی حکومت گجرات کو اجازت

ریاستی حکومت نے مسٹر پانڈے کی ملازمت میں تین ماہ کی توسیع کی تھی جس کی مدت 30 اپریل کو ختم ہو رہی تھی۔ سروس میں توسیع کے خلاف دائر عرضی پر عدالت نے ریاستی حکومت کو گذشتہ 31 مارچ کو نوٹس جاری کرکے جواب طلب کیا تھا۔ پانڈے اس زمانے میں ریاست میں کرائم برانچ کی سربراہ تھے جب سالہ عشرت جہاں [19]، جاوید شیخ عرف پرنیش پلے، امجد علی اکبر علی رانا اور ذیشان جوہر ایک مبینہ پولیس انکاونٹر میں احمد آباد کے نواح میں مارے گئے تھے۔ یہ واقعہ 2004 میں 15 جون کو پیش آیا تھا۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز