مہاراشٹر میں آٹھ دنوں میں 34 اورآٹھ مہینے میں 580 کسانوں نے کر لی خودکشی

Aug 17, 2017 09:09 PM IST | Updated on: Aug 17, 2017 09:09 PM IST

ممبئی۔ مہاراشٹر کی قحط سالی کا شکار پسماندہ مراٹھوڑہ علاقے میں کسانوں کی خودکشی کا سلسلہ دوبارہ شروع ہوگیا ہے اور اورنگ آباد علاقائی کمشنر کے اعداد و شمارکے مطابق ہر روزاوسطاً چارکسان خودکشی کررہے ہیں ۔ بتایا جاتا ہے کہ گزشتہ 8 دنوں میں 34 کسانوں نے خودکشی کی ہے اور ان میں اورنگ آباد ضلع میں 5، بیڑ میں 12، ناندیڑ میں 9، پربھنی میں 7، جالنہ میں 6، لاتور میں 5، عثمان آباد میں 4 اورہنگولی ضلع میں ایک کسان نے خود کشی کی ۔

علاقائی کمشنر کی رپورٹ کے مطابق جنوری 2017 سے 15 اگست 2017 تک مراٹھواڑہ میں 580 کسانوں نے خود کشی کی ہے، اگرچہ سرکاری طور پر ان خودکشی کی وجہ صاف نہیں کی گئی ہے، لیکن مراٹھواڑہ میں اس سال دوبارہ خشک سالی جیسے حالات کو اس کی اہم وجہ سمجھا جا رہا ہے۔ گزشتہ 48 دنوں سے مراٹھواڑہ میں ایک بوند بھی بارش نہیں ہوئی ہے۔مذکورہ خطہ کے کئی اضلاع میں کسانوں کی پہلی بوائی کم بارش کی نذر چڑھنے کے بعد دوسری بوائی بھی برباد ہو گئی ہے۔

مہاراشٹر میں آٹھ دنوں میں 34 اورآٹھ مہینے میں 580 کسانوں نے کر لی خودکشی

علامتی تصویر

مراٹھواڑہ میں چھوٹے، درمیانی اور بڑے ملا کر 34 لاکھ 82 ہزار 643 کسان ہیں۔ چھوٹے کسانوں کی تعداد 14 لاکھ 3 3 ہزار 341 ہے۔ ان میں 2 ایکڑ یا کم زرعی زمین ہے۔ اس کے علاوہ، 2 سے 5 ایکڑ زراعت کی درمیانی عمر کے کسانوں کی تعداد 13 لاکھ 55 ہزار 559 ہے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز