پنویل میں 19 مئی سے منعقد ہوگا سہ روزہ مسلم۔ مراٹھی ساہیتہ سمیلن

Apr 18, 2017 07:32 PM IST | Updated on: Apr 18, 2017 07:32 PM IST

اورنگ آباد۔  مسلم ۔ مراٹھی ساہیتہ سانسکرتک منڈل کا گیارہواں اکِھل بھارتیہ مسلم مراٹھی ساہیتہ سمیلن پنویل میں ہونے والا ہے ۔  اس سہ روزہ سمیلن  کی صدارت معروف غزل گلوکارہ بی بی فاطمہ مجاور  کریں گی ۔  سہ روزہ  سمّیلن میں  مسلمانوں کے ملی اور   سماجی مسائل کے علاوہ قومی اور بین الاقوامی مسائل پر بھی  غور و خوض کیا جائیگا۔  مہاراشٹر کے  مسلمانو ں کے تعلق سے عموماً یہ رجحان پایا جاتا ہے کہ وہ مراٹھی نہیں جانتے ۔ اس غلط فہمی کو دور کرنے کے لیے سن 1990 کی دہائی میں مسلم مراٹھی سانسکرتک منڈل نامی تحریک شروع ہوئی ۔  اس تحریک کا مقصد ان مسلم قلمکاروں کو  منظرعام پر لانا رہا مراٹھی زبان جن کا اوڑھنا بچھونا رہی ہے ۔  پچھلے پچیس برسوں میں مسلم مراٹھی ساہیتہ منڈل کے پلیٹ فارم سے دس کل ہند سمیلن ہوچکے ہیں ۔ آئندہ 19 مئی سے گیارہواں  اکھل بھارتیہ سہ روزہ سمیلن پنویل میں ہونے والا ہے ۔

مسلم مراٹھی ساہیتہ سانسکرتک منڈل، اورنگ آباد کے  صدر ڈاکٹر شیخ  اقبال منے نے جانکاری دیتے ہوئے بتایا کہ معروف غزل گلوکارہ اور پنویل کالج کی پرنسپل  فاطمہ بی بی مجاور  کی صدارت میں  گیارہواں سہ روزہ  مسلم مراٹھی  ساہتیہ سمیلن ہوگا ۔   فاطمہ  بی بی کا  کہنا ہے کہ سمیلن میں خواتین کے مسائل پر بھی بات ہوگی ۔ ان کا کہنا ہے کہ میڈیا طلاق ثلاثہ پر بلاوجہ پروپگنڈہ کررہا ہے  ۔ اس مسئلہ کے حل کے لیے قران کی تعلیمات کافی ہیں ۔   مسلم مراٹھی ساہیتہ سنسکرتک منڈل کی پچیس سالہ  کارکردگی پر کامریڈ  ولاس سونونے نے روشنی ڈالی اور بتایا کہ اس تحریک سے غیر مسلموں کی غلط فہمیاں دور کرنے میں کافی مدد ملی ہے۔  سونونے کے مطابق مراٹھی سے  اردو ، فارسی اور دکھنی کے الفاظ نکال دیئے جائیں تو مراٹھی میں کچھ  بھی  باقی نہیں رہتا۔ انہوں نےبتایا کہ  پنویل میں ہونے والے اس سمیلن میں ریاست بھر سے ایک ہزار سے زائد مراٹھی کے ادیبوں ، شاعروں اور دانشوروں کی شرکت متوقع ہے ۔  اس کے علاوہ  ہزاروں کی تعداد میں سامعین بھی شرکت کررہے ہیں ۔ اس سہ روزہ  سمیلن کا  ایک مقصد مسلمانوں کے مسائل سے حکومت کو واقف کروانا  بھی ہے ۔

پنویل میں 19 مئی سے منعقد ہوگا سہ روزہ مسلم۔ مراٹھی ساہیتہ سمیلن

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز