آئی ایس آئی کیلئے جاسوسی کے الزام میں ساتارام مہیشوری ، ونود کمار اور سنیل کمار گرفتار، اہم فوجی دستاویزات برآمد

ملک کی فوجی سرگرمیوں، اہم اسٹریٹجک اہداف کی خفیہ اطلاعات اور فوٹو گراف پاکستانی انٹیلی جنس ایجنسی آئی ایس آئی کو بھیجنے کے الزام میں تین پاکستانی جاسوسوں کو گرفتار کیا گیا ہے۔

Mar 05, 2017 05:40 PM IST | Updated on: Mar 05, 2017 05:40 PM IST

جیسلمیر: ملک کی فوجی سرگرمیوں، اہم اسٹریٹجک اہداف کی خفیہ اطلاعات اور فوٹو گراف پاکستانی انٹیلی جنس ایجنسی آئی ایس آئی کو بھیجنے کے الزام میں تین پاکستانی جاسوسوں کو گرفتار کیا گیا ہے۔ جمعہ کی صبح باڑ میر سے گرفتار کئے گئے پاکسانی جاسوس ساتارام مہیشوری اور جودھپور میں پکڑے گئے پاکستانی شہری ونود کمار باڑ میر، جیسلمیر، جودھپور، پوكرن فوجی مشق، آرمی موومنٹ اور فضائیہ کی سرگرمیوں کے بارے میں پاکستانی انٹیلی جنس ایجنسی آئی ایس آئی کو مسلسل معلومات بھیج رہے تھے۔

ان کے قبضے سے کئی اقسام کے فوجی دستاویزات، فوٹوگرافس اور خفیہ دستاویزات ملے ہیں۔ یہ جاسوس پاکستان جانے والے اپنے رشتہ داروں اور دیگر لوگوں کے ساتھ ملک کی خفیہ اور اسٹریٹجک اطلاعات پاکستان آئی ایس آئی کو بھیجتے تھے، ان کا مسلسل پاکستان آنا جانا رہتا تھا۔ اس کے علاوہ ان دونوں کے ساتھ جمعہ کو گرفتار کئے گئے مشتبہ جاسوس سنیل کمار سے اب بھی پوچھ گچھ چل رہی ہے۔

آئی ایس آئی کیلئے جاسوسی کے الزام میں ساتارام مہیشوری ، ونود کمار اور سنیل کمار گرفتار، اہم فوجی دستاویزات برآمد

اس کی تصدیق کرتے ہوئے ایڈیشنل پولیس ڈائریکٹر جنرل (خفیہ) يوآرساهو نے بتایا کہ باڑ میر میں گرفتار کئے گئے ساتارام مہیشوري 1973 میں پہلے پاکستان سے خاندان کے ساتھ ہندوستان آ گیا تھا اور 2009 میں اسے ہندوستانی شہریت بھی مل گئی تھی، وہ ان دنوں باڑمیر کے چوهٹن علاقے میں رہائش پزیر تھا لیکن گزشتہ کئی دنوں سے اس سرگرمیاں کافی مشتبہ تھیں اور وہ انٹیلی جنس ایجنسیوں کے رڈار پر تھا۔ انہوں نے بتایا کہ اس کے بارے میں مسلسل معلومات مل رہی تھی کہ وہ آئی ایس آئی کا ایجنٹ ہے اور ملک کی خفیہ اطلاعات اور تصاویر آئی ایس آئی کو مہیا کرتا ہے جس کے لئے آئی ایس آئی اسے خطیر رقم بھی فراہم کرتی ہے۔

مسٹر ساہو نے بتایا کہ ساتارام نے سرحدی باڑ میر علاقے کے کئی سرحدی علاقوں میں فوجی سرگرمیوں، سرحدی چوکیوں کی کئی اہم اسٹریٹجک اطلاعات اور فوٹو گراف پاکستان بھیجی ہیں۔ یہ مسلسل فون پر پاکستان میں آئی ایس آئی کو ملک کی اطلاعات مہیا کراتا تھا۔ انہوں نے بتایا کہ اس کا بھتیجا ونود کمار 2015 میں پاکستان سے ہندوستان آیا تھا اور لانگ ٹرم ویزا پر ان دنوں جودھپور میں رہائش پزیر ہے۔ اسے ابھی ہندوستانی شہریت نہیں مل پائی ہے۔ تحقیقات کے دوران جو معلومات حاصل ہوئی ہیں ان کی بنیاد پریہ باتیں سامنے آئی ہیں کہ ساتارام نے اپنے بھتیجے کو آئی ایس آئی کے حکام سے متعارف کرایا اور اسے بھی قوم مخالف سرگرمیوں کی اسٹریٹجک اطلاعات سرحد پار بھجوانے کے لئے تیار کر لیا۔

انہوں نے بتایا کہ ونود بھی پاکستان جاتا رہتا تھا اور پاکستان جا رہے دوسرے لوگوں کے ساتھ حساس مقامات کی تصاویر اور دیگر اطلاعات اپنے رشتےداروں اور دیگر لوگوں کے ساتھ بھجواتا رہتا تھا، اس کے علاوہ جودھپور کے کئی حساس مقامات اور دیگر فوجی سرگرمیوں کے بارے میں فون پر آئی ایس آئی کو معلومات فراہم کرتا رہتا تھا۔ اس کی مشتبہ سرگرمیاں سامنے آنے پر اس پر بھی سخت نگرانی رکھی جا رہی تھی۔

مسٹر ساہو نے بتایا کہ دونوں کے خلاف ملک مخالف سرگرمیوں میں ملوث ہونے کے پختہ ثبوت ملنے کے بعد جمعہ کو پوچھ گچھ کے لئے انہیں حراست میں لیا گیا۔ پوچھ گچھ میں ملک مخالف سرگرمیوں میں ملوث ہونے اور ملک کی خفیہ اطلاعات سرحد پار بھجوانے کی معلومات سامنے آنے کے بعد ہفتہ کو انہیں آفیشیل سیکرٹ ایکٹ کے تحت انہیں گرفتار کرکے جے پور لے جایا گیا ہیں جہاں ان سے انتہائی پوچھ گچھ کی جائے گی۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز