وی ایچ پی لیڈر پروین توگڑیا کا پدماوتی کی نمائش اور لو جہاد روکنےکیلئے قانون بنانے کا مطالبہ

وشو ہندو پریشد کےصدر پروین توگڑیا نے مرکزی حکومت سے سنجے لیلا بھنسالی کی فلم پدماوتي پر روک لگانے کا مطالبہ کرتے ہوئے متنبہ کیا ہے کہ فلم کی نمائش کی گئی تو سنیما گھروں میں ایسا منظر ہوگا جو تاریخ میں کبھی نہیں ہوا۔

Nov 30, 2017 05:10 PM IST | Updated on: Nov 30, 2017 05:11 PM IST

جے پور: وشو ہندو پریشد کےصدر پروین توگڑیا نے مرکزی حکومت سے سنجے لیلا بھنسالی کی فلم پدماوتي پر روک لگانے کا مطالبہ کرتے ہوئے متنبہ کیا ہے کہ فلم کی نمائش کی گئی تو سنیما گھروں میں ایسا منظر ہوگا جو تاریخ میں کبھی نہیں ہوا۔ مسٹر توگڑیا نے آج یہاں پدماوتي فلم کے بارے میں پوچھے گئے سوال پر میڈیا کو بتایا کہ آزادی کے نام پر کسی کو بھی تاریخ سے چھیڑ چھاڑ کرنے کی اجازت نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت کو اپنے حقوق کا استعمال کرتے ہوئے اس فلم پر پابندی عائدکرنی چاہئے.

لو جہاد‘ کے بارے میں پوچھے گئے سوال پر مسٹر توگڑیا نے کہا کہ یہ ’لو‘ نہیں جہاد ہے جسے روکنے کے لئے قانون بننا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ صرف محبت ہوتی ہے تو اس میں تبدیلی مذہب نہیں ہوتا لیکن ہندو لڑکیوں کا مذہب تبدیل کیا جا رہا ہے۔ اس سے یہ ثابت ہوتا ہے کہ یہ محبت نہیں جہاد ہے۔

وی ایچ پی لیڈر پروین توگڑیا کا پدماوتی کی نمائش اور لو جہاد روکنےکیلئے قانون بنانے کا مطالبہ

fiel photo

کشمیری پنڈتوں کی گھر واپسی نہیں ہونے پر مرکزی حکومت کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے توگڑیا نے کہا کہ جب تک کشمیری پنڈتوں کو واپس نہیں بسایا جاتا ہے تب تک هندوتو کی بات کرنا ہی بیکار ہے۔ رام مندر کی تعمیر کے لئے روحانی پیشوا شری شری روی شنکر کی کوششوں کے بارے میں پوچھے گئےسوال پر انہوں نے کہا کہ اس میں دوسرا فریق کہیں دکھائی نہیں دے رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ 1991 میں رام مندر مسئلے پر ہندو اور مسلمانوں کے درمیان بات چیت ہوئی تھی اس بار دوسرا فریق سامنے نہیں آیا۔

کانگریس لیڈر راہل گاندھی کے مندروں میں درشن کرنے کے بارے میں سوال پر انہوں نے کہا کہ مندر میں آنے والوں کا استقبال ہے۔ ایک سوال کے جواب میں توگڑیا نے کہا کہ وہ گجرات میں انتخابی پرچار نہیں کرنے جا رہے ہیں۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز