گوا میں پاریکر کے بیف والے بیان پر وشو ہندو پریشد چراغ پا، مانگا استعفی

Jul 19, 2017 11:29 AM IST | Updated on: Jul 19, 2017 11:31 AM IST

پناجی۔ بیف کے معاملے پر وشو ہندو پریشد نے گوا کے وزیر اعلی کا استعفی مانگا ہے۔ وی ایچ پی لیڈر سریندر جین نے کہا ہے کہ پاریکر بی جے پی کی شبیہ خراب کر رہے ہیں اور انہیں استعفی دینا چاہئے۔ بتا دیں کہ منگل کو گوا کے وزیر اعلی منوہر پاریکر نے اسمبلی میں کہا تھا کہ ریاست میں بیف کی کمی نہیں آنے دی جائے گی۔ ضرورت پڑنے پر پڑوسی ریاست کرناٹک سے بھی بیف دوبارہ منگایا جا سکتا ہے۔

نیوز 18 انڈیا سے بات کرتے ہوئے سریندر جین نے کہا کہ گوا اور کرناٹک کے اندر گئو کشی غیر قانونی ہے۔ ایسے میں وہ گوا میں تو قانون توڑ ہی رہے ہیں اور کرناٹک کو بھی قانون توڑنے کے لئے اس کی حوصلہ افزائی کر رہے ہیں۔ وہ بیف کو انجوائے کرنے کے لئے کہہ رہے ہیں۔ یہ شرمناک ہے۔ بی جے پی کو اس پر کارروائی کرنی چاہئے۔ ایسا شخص وزیر اعلی بننے کے قابل نہیں ہے۔

گوا میں پاریکر کے بیف والے بیان پر وشو ہندو پریشد چراغ پا، مانگا استعفی

منوہر پاریکر: گیٹی امیجیز

اس سے پہلے سریندر جین نے ٹویٹ کیا، بی جے پی بیف انجوائے پارٹی بن چکی ہے؟ پارٹی کی شبیہ کو صاف کرنے کے لئے پاریکر کو استعفی دینا چاہئے۔ ایک اور ٹویٹ میں کہا، کیا بی جے پی اب بیف پارٹی بننے کی سمت میں جا رہی ہے؟

بتا دیں کہ پاریکر نے اسمبلی میں کہا تھا کہ گوا میں بیف کی کمی کے مسئلے سے نمٹنے کے لئے دوسری جگہوں سے بھی بیف منگانے کا متبادل کھلا ہے۔ بی جے پی ممبر اسمبلی نيلیش كبرال کے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا، 'میں آپ کو یقین دلاتا ہوں کہ پڑوسی ریاست سے آنے والے بیف کی تحقیقات مناسب اور سرکاری میڈیکل ڈاکٹر کے ذریعہ کرائیں گے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز