پوسٹ میٹرک اسکالرشپ اسکیم کی معلومات دینے کے لئے ناندیڑ میں ورکشاپ کا انعقاد

Jul 29, 2017 05:39 PM IST | Updated on: Jul 29, 2017 05:39 PM IST

 ناندیڑ۔ اقلیتی طلبہ کے لئے چلائی جارہی پوسٹ میٹرک اسکالرشپ اسکیم کی عمل آوری میں ناندیڑ ضلع کو پوری ریاست میں پہلا مقام حاصل ہوا ہے ۔ اس کے لئے ضلع پریشد کے محکمہ تعلیمات میں خدمات انجام دینے والے شیخ رستم نے غیر معمولی کوششیں کی ہیں ۔ انہوں نے  پوسٹ میٹرک اسکالرشپ اسکیم کی معلومات دینے کے لئے  لگاتار ورک شاپ کئے ہیں ۔ ضلع پریشد کے محکمہ تعلیمات میں خدمات انجام دینے والے شیخ رستم نے اپنی کارکردگی سے یہ ثابت کیا ہے کہ سنجیدگی اور سچی لگن سے کام کیا جائے تو حکومت کی اسکیم کا فائدہ طلبہ کو دلایا جاسکتا ہے ۔ اس بار بھی پوسٹ میٹرک اسکالرشپ کے تحت درخواستیں جمع کی جارہی ہیں۔

 اسکالرشپ کے معاملے میں پچھلے دوسالوں سے ناندیڑ ضلع کو پوری ریاست میں پہلا مقام حاصل ہوا ہے ۔ پچھلے سال پوسٹ میٹرک اسکالرشپ اسکیم کے تحت ناندیڑ ضلع میں اقلیتی طلبہ کو 18 کروڑ روپئے کی اسکالرشپ حاصل ہوئی ہے ۔اتنی بڑی رقم طلبہ کو دلانے کیلئے محنت بھی ویسے ہی کرنی پڑی ۔ درخواست فارم جمع کرنے سے لیکر اسکالرشپ وصول ہونے تک ہر مرحلے میں شیخ رستم نے سرگرمی دکھائی،  جس کی وجہ سے طلبہ کو یہ فائدہ مل رہا ہے ۔ شیخ رستم کی کارکردگی سے اساتذہ بھی کافی خوش ہیں ۔

پوسٹ میٹرک اسکالرشپ اسکیم کی معلومات دینے کے لئے ناندیڑ میں ورکشاپ کا انعقاد

سچر کمیٹی نے اپنی رپورٹ میں مسلم طلبہ کی تعلیمی پسماندگی کے کئی اسباب کا انکشاف کیا تھا جن میں غریبی اور وسائل کی کمی کو ایک اہم سبب بتایا گیا تھا ۔اقلیتی طلبہ کی تعلیمی ترقی کے لئے اسکالرشپ اسکیمیں شروع کرنے کا مشورہ دیا گیا ۔اس پر عمل کرتے ہوئے پر ی میٹرک اور پوسٹ میٹرک اسکالرشپ شروع کی گئی اور ان اسکیموں کو ناندیڑ میں نہایت ہی موثر انداز میں نافذ کیا جا رہا ہے ۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز