عالمی یوم یونانی میڈیسن کے موقع پر طبّی کانگریس کا ستائیسواں نیشنل کنونشن منعقد

Feb 13, 2017 07:51 PM IST | Updated on: Feb 13, 2017 07:51 PM IST

جے پور۔ حسب سابق آل انڈیا یونانی طبی کانگریس کے زیراہتمام امسال ’عالمی یوم یونانی میڈیسن‘ کے موقع پر ستائیسویں نیشنل کنونشن کی شاندار تقریب کا انعقاد جے پور میں ہوا۔ کنونشن کی صدارت ڈاکٹر ایس آر آر آیوروید یونیورسٹی جودھپور کے وائس چانسلر پروفیسر رادھے شیام شرما نے کی۔ انہوں نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ راجستھان فروغ طب یونانی کا مکمل صوبہ ہے کیونکہ آزادی کے بعد ایک گورنمنٹ یونانی میڈیکل کالج ٹونک میں قائم کرنے میں ہم کامیاب ہوئے اور اس سے قبل صوبہ میں طب یونانی کا علاحدہ محکمہ بھی قائم ہوا اور محکمہ یونانی کے قیام سے طب یونانی کی ترقی کے سارے دروازے کھلے۔ البتہ یونانی دواسازی اور تحقیقی مرکز کے قیام کے لیے کوششیں ہونی چاہئیں کیونکہ سنٹرل کونسل فار ریسرچ اِن یونانی میڈیسن، مرکزی حکومت کے زیرکنٹرول ہے، ایسی صورت میں ہماری جانب سے تمام تر کوششیں جاری رہنی چاہئیں تاکہ جلد از جلد تحقیقی مرکز برائے طب یونانی کاقیام عمل میں آسکے۔

اس موقع پر سنٹرل کونسل آف انڈین میڈیسن (سی سی آئی ایم)، حکومت ہند کے سابق صدر ڈاکٹر راشداللہ خاں نے کہا کہ مرکزی حکومت کے محکمہ آیوش کی سکریٹری محترمہ جے لجا کی صدارت میں 18 اگست 2010 کو لیے گئے فیصلے کے مطابق 12 فروری کو نیشنل یونانی میڈیسن ڈے منائے جانے کا سلسلہ شروع ہوا، جس کا سہرا آل انڈیا یونانی طبّی کانگریس کے سر جاتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس سال مرکزی حکومت کے وزیر آیوش عزت مآب شری پد نائک جی نے باضابطہ آیوروید اور یوگا کی طرح سرکاری سطح پر نیشنل یونانی میڈیسن ڈے منائے جانے کا اعلان کیا، ہم اس کا خیر مقدم کرتے ہیں۔ ڈاکٹر سنیل کمار شرما (چیئرمین، گیان وہار یونیورسٹی، جے پور) نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ ہمارے تحقیقی مواد کی پیشکش عالمی معیار کی ہونی چاہیے، تب ہمارے دعوے سچے ثابت ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے طریقہ علاج میں بہت طاقت ہے مگر اس کی پیشکش کا معیار بہت کمزور ہوتا ہے جس کے سبب ہمارے دعوے کی سچائی دنیا کے سامنے نہیں آپاتی۔ آل انڈیا یونانی طبّی کانگریس کے قومی صدر پروفیسر مشتاق احمد نے کہا کہ مرکزی حکومت کی جانب سے ہرممکن تعاون حاصل ہے مگر ہماری جانب سے جو کوششیں ہونی چاہئیں اس میں بڑی کوتاہی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ مرکزی حکومت کی جانب سے ایمس یونانی کی پروگریس جاری ہے اور آل انڈیا یونانی طبّی کانگریس کے ذریعہ عالمی یونانی میڈیسن ڈے کے اہتمام سے عوام میں طب یونانی کے تئیں بے داری لانے میں بڑی حد تک کامیابی حاصل ہوئی۔ راجستھان اور اترپردیش میں محکمہ یونانی کا علاحدہ ہونا ہماری جدوجہد کا ہی نتیجہ ہے۔ اسی طرح کانگریس پارٹی کی جانب سے 2009 کے جاری منشور میں نیشنل یونانی یونیورسٹی کے قیام کا وعدہ بھی آل انڈیا یونانی طبّی کانگریس کی ہی کوششوں کا نتیجہ ہے۔ امید کرتے ہیں کہ ہم نیشنل یونانی یونیورسٹی قائم کرنے میں کامیاب ہوں گے۔

عالمی یوم یونانی میڈیسن کے موقع پر طبّی کانگریس کا ستائیسواں نیشنل کنونشن منعقد

اس موقع پر جناب محمد نوشاد (مینیجنگ ڈائرکٹر، اسکائی ہربل فارمیسی پرائیویٹ لمیٹڈ) کو بہترین یونانی دواسازی کے لیے حکیم اجمل خاں ایوارڈ سے نوازا گیا۔ جبکہ بہترین آیورویدک دواسازی کے لیے دِین دیال انڈسٹریز لمیٹڈ کو بھی حکیم اجمل خاں ایوارڈ سے سرفراز کیا گیا۔ اسی طرح راجستھان ہربلز انٹرنیشنل (جھنجھنو، راجستھان) کے چیئرمین ڈاکٹر ایس ڈی چوپدار کو منشیات کے عادی مریضوں کی خدمات کے لیے اعزاز سے نوازا گیا۔ تعارفی کلمات آل انڈیا یونانی طبّی کانگریس کے اعزازی سکریٹری جنرل ڈاکٹر سیّد احمد خاں نے پیش کیے۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز