سعودی ولی عہد محمد بن سلمان نے ایران کے مرشد اعلی علی خامنہ ای کو مشرق وسطی کا نیا ہٹلر قرار دیا

سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز نے ایران کے سپریم لیڈر علی خامنہ ای کو "مشرق وسطیٰ کا نیا ہٹلر" قرار دیا ہے

Nov 24, 2017 09:36 PM IST | Updated on: Nov 24, 2017 09:36 PM IST

دبئی: سعودی عرب کے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز نے ایران کے سپریم لیڈر علی خامنہ ای کو "مشرق وسطیٰ کا نیا ہٹلر" قرار دیا ہے، جس کے فوری ردعمل میں دونوں ملکوں کے درمیان لفظی جنگ تیز ہوگئی ہے۔ سنی مسلمانوں کے رہنما ملک سعودی عرب اور شیعہ مکتب فکر کا علمبردار ملک ایران خطے میں وقوع پذیر ہونے والے تمام سیاسی بحرانوں اور تنازعات میں ایک دوسرے کے مخالفین کا ساتھ دیتے ہيں۔

دارلحکومت ریاض میں امریکی اخبار 'نیویارک ٹائمز کے ساتھ تفصیلی انٹرویو میں سعودی ولی عہد نے کہا کہ "ایرانی رہبر مرشد اعلی مشرق وسطیٰ کا نیا ہٹلر" ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ علی خامنہ ای کی رہنمائی میں جمہوریہ ایران کی مبینہ توسیع پسندی کی کوششوں کا مقابلہ کرنا ضروری ہے۔

سعودی ولی عہد محمد بن سلمان نے ایران کے مرشد اعلی علی خامنہ ای کو مشرق وسطی کا نیا ہٹلر قرار دیا

انہوں نے مزید کہا کہ" یورپ سے ہمیں یہی سبق ملتا ہے کہ ایسی صورتحال کے سامنے سر تسلیم خم کرنا کامیابی نہیں ہے۔ ہم نہیں چاہتے کہ نیا ہٹلر وہ سب کچھ یہاں کر گزرے جو یورپ میں کیا گیا"۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز