صدر چین کا نام اور نظریہ پارٹی کے آئین میں شامل

Oct 24, 2017 09:04 PM IST | Updated on: Oct 24, 2017 09:04 PM IST

بیجنگ۔ حکمراں چینی کمیونسٹ پارٹی نے ملک کے صدر شی جن پنگ کو گزرنے والی صدیوں کا طاقت ور ترین لیڈر تسلیم کرتے ہوئے ان کے نام اور نظریئے کو پارٹی کے آئین میں شامل کرلیا ہے۔ یہ فیصلہ چینی کمیونسٹ پارٹی کی ایک اہم کانفرنس کے دوران کیا گیا ۔ کہا گیا ہے کہ عصری چینی خصوصیات کے حامل شی جن پنگ کے سوشلزم کے تصور کو پارٹی آئین میں شامل کیا گیا ہے۔

شی جن پنگ کی مسلح فوج پر مطلق حکمرانی، ان کی خارجہ پالیسی کے مزید فروغ اور ’ون بیلٹ ون روڈ‘ کے نام سے مشہور منصوبے کے بنیادی ڈھانچے کے اقدامات کو آئین میں شامل کرنے کے لئے پارٹی آئین میں ترمیم سے کام لیا گیا ہے۔ واضح رہے کہ چین اس وقت دنیا کی دوسری سب سے بڑی اقتصادی طاقت ہے جبکہ انٹرنیشنل مانیٹرنگ فنڈ (آئی ایم ایف) کے مطابق چین فی کس سالانہ آمدنی میں 79ویں نمبر پر موجود ہے۔دوسری طرف مسٹر شی جن پنگ 2021 میں پارٹی کی صد سالہ سالگرہ تک چینی معاشرے کو ایک ترقی یافتہ معاشرہ بنانے کے عہد بند ہیں۔

صدر چین کا نام اور نظریہ پارٹی کے آئین میں شامل

چین کے صدر شی جن پنگ : فائل فوٹو۔

متعلقہ اسٹوریز

ری کمنڈیڈ اسٹوریز