تصاویر :  سہ روزہ عالمی تبلیغی اجتماع کا دوسرا دن ، 6.5 لاکھوں فرزندان توحید پہنچ چکے ہیں بھوپال

Nov 25, 2017 09:59 PM IST
1 of 13
  • مدھیہ پردیش کے بھوپال میں سہ روزہ عالمی تبلیغی اجتماع کا آج دوسرا دن ہے ۔ در س قران کے ساتھ شروع ہوئے عالمی تبلیغی اجتماع میں ملک و بیرون ملک سے جماعتوں کے آنے کا سلسلہ جاری ہے اور اب تک ساڑھے چھ لاکھ سے زیادہ فرزندان توحید بھوپال پہنچ چکے ہیں۔

    مدھیہ پردیش کے بھوپال میں سہ روزہ عالمی تبلیغی اجتماع کا آج دوسرا دن ہے ۔ در س قران کے ساتھ شروع ہوئے عالمی تبلیغی اجتماع میں ملک و بیرون ملک سے جماعتوں کے آنے کا سلسلہ جاری ہے اور اب تک ساڑھے چھ لاکھ سے زیادہ فرزندان توحید بھوپال پہنچ چکے ہیں۔

  • عالمی تبلیغی اجتماع کے پہلے دن چار سیشن میں علمائے دین کے بیانات ہوئے ۔ ان سیشنوں میں علمائے دین نے توحید اورعبادت کا مفہوم، خدمت خلق، جدید تعلیم اور قران،اسلام میں خواتین کا مقام جیسے موضوع پر اپنے خیالا ت کا اظہار کیا۔

    عالمی تبلیغی اجتماع کے پہلے دن چار سیشن میں علمائے دین کے بیانات ہوئے ۔ ان سیشنوں میں علمائے دین نے توحید اورعبادت کا مفہوم، خدمت خلق، جدید تعلیم اور قران،اسلام میں خواتین کا مقام جیسے موضوع پر اپنے خیالا ت کا اظہار کیا۔

  • عالمی تبلیغی اجتماع میں پہلے دن اجتماعی نکاح بھی ہوئے ۔ ممتاز عالم مولانا سعد احمد صاحب نے 410 جوڑوں کا نکاح پڑھایا اور دعا کروائی۔

    عالمی تبلیغی اجتماع میں پہلے دن اجتماعی نکاح بھی ہوئے ۔ ممتاز عالم مولانا سعد احمد صاحب نے 410 جوڑوں کا نکاح پڑھایا اور دعا کروائی۔

  • بھوپال کا سہ روزہ عالمی تبلیغی اجتماع اینٹ کھیڑی میں ہورہا  ہے۔ 70 ویں سہ روزہ عالمی تبلیغی اجتماع کا آغازبعد نماز فجردرس قران کےساتھ شروع کیا گیا۔

    بھوپال کا سہ روزہ عالمی تبلیغی اجتماع اینٹ کھیڑی میں ہورہا ہے۔ 70 ویں سہ روزہ عالمی تبلیغی اجتماع کا آغازبعد نماز فجردرس قران کےساتھ شروع کیا گیا۔

  • پہلے روز درس قران کے بعد علمائےدین نے اجتماع کے پہلے سیشن میں ایمان اور یقین پر اپنے خیالات کا اظہار کیا۔

    پہلے روز درس قران کے بعد علمائےدین نے اجتماع کے پہلے سیشن میں ایمان اور یقین پر اپنے خیالات کا اظہار کیا۔

  • علمائے دین نے اپنے بیان میں قران کا حوالے دیتے ہوئے بندہ مومن سےاللہ کے راستے پر چلنے اورانسانوں کے حقوق ادا کرنے کی تلقین کی۔

    علمائے دین نے اپنے بیان میں قران کا حوالے دیتے ہوئے بندہ مومن سےاللہ کے راستے پر چلنے اورانسانوں کے حقوق ادا کرنے کی تلقین کی۔

  • علمائے دین نے اپنے بیان میں بندہ مومن سے اپنے رب کو پہچاننے اور اس کی تعلیمات پر عمل پیرا ہونے کی بھی تلقین کی ۔

    علمائے دین نے اپنے بیان میں بندہ مومن سے اپنے رب کو پہچاننے اور اس کی تعلیمات پر عمل پیرا ہونے کی بھی تلقین کی ۔

  •  علما کا کہنا تھا کہ انسان مادی خواہشات میں اتنا آگے نکل چکا ہے کہ وہ اپنے رب کو اور اللہ کے حبیب کی تعلیمات کو بھول گیا ہے ۔ جب انسان اپنے رب کو جاننے اور قران کی تعلیمات پر عمل کرنے کیلئے اپنےگھر سے نکلتا ہےاور اپنے چین و سکون کو اللہ کا قرب حاصل کرنے کے لئے قربان کردیتا ہے تو اسے نہ صرف اللہ کا قرب حاصل ہوتا ہے بلکہ اس کے دل میں انسان سے محبت بھی پیدا ہوتی ہے۔ وہ انسان کا حق ادا کرنے والا بنتا ہے ۔

    علما کا کہنا تھا کہ انسان مادی خواہشات میں اتنا آگے نکل چکا ہے کہ وہ اپنے رب کو اور اللہ کے حبیب کی تعلیمات کو بھول گیا ہے ۔ جب انسان اپنے رب کو جاننے اور قران کی تعلیمات پر عمل کرنے کیلئے اپنےگھر سے نکلتا ہےاور اپنے چین و سکون کو اللہ کا قرب حاصل کرنے کے لئے قربان کردیتا ہے تو اسے نہ صرف اللہ کا قرب حاصل ہوتا ہے بلکہ اس کے دل میں انسان سے محبت بھی پیدا ہوتی ہے۔ وہ انسان کا حق ادا کرنے والا بنتا ہے ۔

  •  اجتماع کا مقصد بیان کرتےہوئے علما نے کہا کہ اس کا مقصدہے کہ اللہ کے ماننے والوں میں تعلیم کو عام کیا جائے اور انسان انسان کا حق ادا کرنے والا بن جائے۔ اس کے عمل سے کسی کا دل نہ دکھے ، بلکہ اس کا ہرعمل انسان کی خوشیوں کا ضامن بنے۔

    اجتماع کا مقصد بیان کرتےہوئے علما نے کہا کہ اس کا مقصدہے کہ اللہ کے ماننے والوں میں تعلیم کو عام کیا جائے اور انسان انسان کا حق ادا کرنے والا بن جائے۔ اس کے عمل سے کسی کا دل نہ دکھے ، بلکہ اس کا ہرعمل انسان کی خوشیوں کا ضامن بنے۔

  • عالمی اجتماع کے لئے بھوپال کے اینٹ کھیڑی میں 60 ایکڑ میں خاص پینڈال بنایا گیا ہے جبکہ 200 میں پارکنگ کے ساتھ کھانے کے لئے 45 زون بنائے گئے ہیں۔

    عالمی اجتماع کے لئے بھوپال کے اینٹ کھیڑی میں 60 ایکڑ میں خاص پینڈال بنایا گیا ہے جبکہ 200 میں پارکنگ کے ساتھ کھانے کے لئے 45 زون بنائے گئے ہیں۔

  •  اجتماع گاہ میں پالیتھن، بیڑی، سگریٹ اور گٹکے کے استعمال پر پوری طرح سے پابندی لگائی گئی ہے۔

    اجتماع گاہ میں پالیتھن، بیڑی، سگریٹ اور گٹکے کے استعمال پر پوری طرح سے پابندی لگائی گئی ہے۔

  • عالمی اجتماع کی خاص بات یہ ہے کہ اس کے لئے کسی قسم کا کوئی چندہ نہیں کیا جاتا ہے ۔ بلکہ یہ تمام خدما ت رضا کارانہ طور پر کی جاتی ہیں اوراہل بھوپال اسے اپنے لئے بڑی سعادت سمجھتےہیں۔

    عالمی اجتماع کی خاص بات یہ ہے کہ اس کے لئے کسی قسم کا کوئی چندہ نہیں کیا جاتا ہے ۔ بلکہ یہ تمام خدما ت رضا کارانہ طور پر کی جاتی ہیں اوراہل بھوپال اسے اپنے لئے بڑی سعادت سمجھتےہیں۔

  • بھوپال اسٹیشن سے اجتماع گاہ تک مقامی پولیس کے ساتھ پانچ ہزار رضاکار کو تعینات کیا گیا ہے ۔ تاکہ باہر سے آنے والی جماعتوں کو کسی قسم کی مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑا۔

    بھوپال اسٹیشن سے اجتماع گاہ تک مقامی پولیس کے ساتھ پانچ ہزار رضاکار کو تعینات کیا گیا ہے ۔ تاکہ باہر سے آنے والی جماعتوں کو کسی قسم کی مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑا۔

  • عالمی تبلیغی اجتماع کے پہلے دن چار سیشن میں علمائے دین کے بیانات ہوئے ۔ ان سیشنوں میں علمائے دین نے توحید اورعبادت کا مفہوم، خدمت خلق، جدید تعلیم اور قران،اسلام میں خواتین کا مقام جیسے موضوع پر اپنے خیالا ت کا اظہار کیا۔
  • عالمی تبلیغی اجتماع میں پہلے دن اجتماعی نکاح بھی ہوئے ۔ ممتاز عالم مولانا سعد احمد صاحب نے 410 جوڑوں کا نکاح پڑھایا اور دعا کروائی۔
  • بھوپال کا سہ روزہ عالمی تبلیغی اجتماع اینٹ کھیڑی میں ہورہا  ہے۔ 70 ویں سہ روزہ عالمی تبلیغی اجتماع کا آغازبعد نماز فجردرس قران کےساتھ شروع کیا گیا۔
  • پہلے روز درس قران کے بعد علمائےدین نے اجتماع کے پہلے سیشن میں ایمان اور یقین پر اپنے خیالات کا اظہار کیا۔
  • علمائے دین نے اپنے بیان میں قران کا حوالے دیتے ہوئے بندہ مومن سےاللہ کے راستے پر چلنے اورانسانوں کے حقوق ادا کرنے کی تلقین کی۔
  • علمائے دین نے اپنے بیان میں بندہ مومن سے اپنے رب کو پہچاننے اور اس کی تعلیمات پر عمل پیرا ہونے کی بھی تلقین کی ۔
  •  علما کا کہنا تھا کہ انسان مادی خواہشات میں اتنا آگے نکل چکا ہے کہ وہ اپنے رب کو اور اللہ کے حبیب کی تعلیمات کو بھول گیا ہے ۔ جب انسان اپنے رب کو جاننے اور قران کی تعلیمات پر عمل کرنے کیلئے اپنےگھر سے نکلتا ہےاور اپنے چین و سکون کو اللہ کا قرب حاصل کرنے کے لئے قربان کردیتا ہے تو اسے نہ صرف اللہ کا قرب حاصل ہوتا ہے بلکہ اس کے دل میں انسان سے محبت بھی پیدا ہوتی ہے۔ وہ انسان کا حق ادا کرنے والا بنتا ہے ۔
  •  اجتماع کا مقصد بیان کرتےہوئے علما نے کہا کہ اس کا مقصدہے کہ اللہ کے ماننے والوں میں تعلیم کو عام کیا جائے اور انسان انسان کا حق ادا کرنے والا بن جائے۔ اس کے عمل سے کسی کا دل نہ دکھے ، بلکہ اس کا ہرعمل انسان کی خوشیوں کا ضامن بنے۔
  • عالمی اجتماع کے لئے بھوپال کے اینٹ کھیڑی میں 60 ایکڑ میں خاص پینڈال بنایا گیا ہے جبکہ 200 میں پارکنگ کے ساتھ کھانے کے لئے 45 زون بنائے گئے ہیں۔
  •  اجتماع گاہ میں پالیتھن، بیڑی، سگریٹ اور گٹکے کے استعمال پر پوری طرح سے پابندی لگائی گئی ہے۔
  • عالمی اجتماع کی خاص بات یہ ہے کہ اس کے لئے کسی قسم کا کوئی چندہ نہیں کیا جاتا ہے ۔ بلکہ یہ تمام خدما ت رضا کارانہ طور پر کی جاتی ہیں اوراہل بھوپال اسے اپنے لئے بڑی سعادت سمجھتےہیں۔
  • بھوپال اسٹیشن سے اجتماع گاہ تک مقامی پولیس کے ساتھ پانچ ہزار رضاکار کو تعینات کیا گیا ہے ۔ تاکہ باہر سے آنے والی جماعتوں کو کسی قسم کی مشکلات کا سامنا نہ کرنا پڑا۔

تازہ ترین تصاویر