بی ایس تھری گاڑیوں پر بڑی بڑی رعایتوں سے شورومس کے باہر لوگوں کی بھیڑ ، کئی جگہوں پر اسٹاک ختم

Mar 31, 2017 05:29 PM IST
1 of 12
  • گریڈ تھری گاڑیوں کی فروخت کی میعاد آج ختم ہو رہی ہے۔ ایسے میں کمپنیاں مختلف ماڈلوں پر بڑے بڑے ڈسكاونٹس آفر کر رہی ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ شوروم میں خریداروں کا ہجوم امڈ پڑا ہے۔ دہلی قومی دارالحکومت علاقہ کے کئی شوروم میں گریڈ  تھری گاڑیاں آوٹ آف اسٹاک ہو چکی ہیں

    گریڈ تھری گاڑیوں کی فروخت کی میعاد آج ختم ہو رہی ہے۔ ایسے میں کمپنیاں مختلف ماڈلوں پر بڑے بڑے ڈسكاونٹس آفر کر رہی ہیں۔ یہی وجہ ہے کہ شوروم میں خریداروں کا ہجوم امڈ پڑا ہے۔ دہلی قومی دارالحکومت علاقہ کے کئی شوروم میں گریڈ تھری گاڑیاں آوٹ آف اسٹاک ہو چکی ہیں

  • بڑی بڑی چھوٹ کی وجہ سے لوگوں کا یہ کریز دیگر شہروں میں بھی دیکھا جا رہا ہے۔  اب بھی بہت سارے اسٹوروں  کے باہر لوگوں کی بڑی بھیڑ موجود ہے۔

    بڑی بڑی چھوٹ کی وجہ سے لوگوں کا یہ کریز دیگر شہروں میں بھی دیکھا جا رہا ہے۔ اب بھی بہت سارے اسٹوروں  کے باہر لوگوں کی بڑی بھیڑ موجود ہے۔

  • خیال رہے کہ یکم اپریل سے گریڈ تھری گاڑیوں کی مینوفیکچرنگ، فروخت اور رجسٹریشن پر سپریم کورٹ کی روک لگ گئی ہے۔ اس کا وہیلر مینوفیکچررس نے جم کر فائدہ اٹھایا۔

    خیال رہے کہ یکم اپریل سے گریڈ تھری گاڑیوں کی مینوفیکچرنگ، فروخت اور رجسٹریشن پر سپریم کورٹ کی روک لگ گئی ہے۔ اس کا وہیلر مینوفیکچررس نے جم کر فائدہ اٹھایا۔

  • دہلی این سی آر میں تو کئی مقامات پر اسٹاک ختم ہو گیا۔ فرید آباد میں ہیرو موٹر سائیکل ایجنسیوں پر یہی حال رہا۔

    دہلی این سی آر میں تو کئی مقامات پر اسٹاک ختم ہو گیا۔ فرید آباد میں ہیرو موٹر سائیکل ایجنسیوں پر یہی حال رہا۔

  • صرف گڑگاؤں میں جمعرات کو تقریبا 18 سے 20 ہزار گاڑیوں کی فروخت ہوئی اور جمعہ کو بھی بھیڑ لگی رہی۔

    صرف گڑگاؤں میں جمعرات کو تقریبا 18 سے 20 ہزار گاڑیوں کی فروخت ہوئی اور جمعہ کو بھی بھیڑ لگی رہی۔

  • فرید آباد میں بھی کئی مقامات پر اسٹاک ختم ہو گیا ہے۔ ٹووہیلر گاڑیوں کے شوروم آپریٹرز کا کہنا ہے کہ انہیں ڈر تھا کہ پرانے اسٹاک کا کیا ہوگا، لیکن لوگوں نے دیکھتے ہی دیکھتے موٹر سائیکلیں خرید لیں۔

    فرید آباد میں بھی کئی مقامات پر اسٹاک ختم ہو گیا ہے۔ ٹووہیلر گاڑیوں کے شوروم آپریٹرز کا کہنا ہے کہ انہیں ڈر تھا کہ پرانے اسٹاک کا کیا ہوگا، لیکن لوگوں نے دیکھتے ہی دیکھتے موٹر سائیکلیں خرید لیں۔

  • جہاں پر اسٹاک اب ہے ، وہاں خریدنے کے لئے بھیڑ لگی ہوئی ہے۔ انشورنس کا آفر دے کر بھی انہیں لبھايا گیا۔ لوگوں 9000 سے 22 ہزار روپے تک کی چھوٹ دی جارہی ہے۔

    جہاں پر اسٹاک اب ہے ، وہاں خریدنے کے لئے بھیڑ لگی ہوئی ہے۔ انشورنس کا آفر دے کر بھی انہیں لبھايا گیا۔ لوگوں 9000 سے 22 ہزار روپے تک کی چھوٹ دی جارہی ہے۔

  • خیال رہے کہ سپریم کورٹ نے بی ایس تھری گاڑیوں پر روک لگا دی ہے۔ اس حکم سے 8 لاکھ نئی گاڑیوں پر اثر پڑا ہے، جن میں سے تقریبا 6.71 لاکھ وہیلر گاڑی ہیں۔

    خیال رہے کہ سپریم کورٹ نے بی ایس تھری گاڑیوں پر روک لگا دی ہے۔ اس حکم سے 8 لاکھ نئی گاڑیوں پر اثر پڑا ہے، جن میں سے تقریبا 6.71 لاکھ وہیلر گاڑی ہیں۔

  • اگرچہ گاڑی مینوفیکچررس کی تنظیم کی جانب سے کہا گیا تھا کہ کمپنیوں کو یہ اسٹاک نکالنے کے لئے تقریبا ایک سال کا وقت چاہئے۔

    اگرچہ گاڑی مینوفیکچررس کی تنظیم کی جانب سے کہا گیا تھا کہ کمپنیوں کو یہ اسٹاک نکالنے کے لئے تقریبا ایک سال کا وقت چاہئے۔

  • آئی ایم ایس ایم ای آف انڈیا کے چیئرمین راجیو چاولہ کے مطابق کچھ گاڑی کمپنیوں کی گاڑیاں تو فروخت ہوگئی ہیں ، لیکن کچھ کا اسٹاک پڑا ہوا ہے۔

    آئی ایم ایس ایم ای آف انڈیا کے چیئرمین راجیو چاولہ کے مطابق کچھ گاڑی کمپنیوں کی گاڑیاں تو فروخت ہوگئی ہیں ، لیکن کچھ کا اسٹاک پڑا ہوا ہے۔

  • ابھی بی ایس -4 والی گاڑیوں کو بنانے میں کمپنیوں کو وقت بھی درکار ہو گا۔ ایسے میں وینڈروں کا کام بھی متاثر ہونے کا امکان ہے۔

    ابھی بی ایس -4 والی گاڑیوں کو بنانے میں کمپنیوں کو وقت بھی درکار ہو گا۔ ایسے میں وینڈروں کا کام بھی متاثر ہونے کا امکان ہے۔

  •  سال 2010 سے مارچ 2017 تک 41 گاڑی کمپنیوں نے 13 کروڑ گریڈ تھری گاڑیاں بازار میں اتاری تھیں۔

    سال 2010 سے مارچ 2017 تک 41 گاڑی کمپنیوں نے 13 کروڑ گریڈ تھری گاڑیاں بازار میں اتاری تھیں۔

  • بڑی بڑی چھوٹ کی وجہ سے لوگوں کا یہ کریز دیگر شہروں میں بھی دیکھا جا رہا ہے۔  اب بھی بہت سارے اسٹوروں  کے باہر لوگوں کی بڑی بھیڑ موجود ہے۔
  • خیال رہے کہ یکم اپریل سے گریڈ تھری گاڑیوں کی مینوفیکچرنگ، فروخت اور رجسٹریشن پر سپریم کورٹ کی روک لگ گئی ہے۔ اس کا وہیلر مینوفیکچررس نے جم کر فائدہ اٹھایا۔
  • دہلی این سی آر میں تو کئی مقامات پر اسٹاک ختم ہو گیا۔ فرید آباد میں ہیرو موٹر سائیکل ایجنسیوں پر یہی حال رہا۔
  • صرف گڑگاؤں میں جمعرات کو تقریبا 18 سے 20 ہزار گاڑیوں کی فروخت ہوئی اور جمعہ کو بھی بھیڑ لگی رہی۔
  • فرید آباد میں بھی کئی مقامات پر اسٹاک ختم ہو گیا ہے۔ ٹووہیلر گاڑیوں کے شوروم آپریٹرز کا کہنا ہے کہ انہیں ڈر تھا کہ پرانے اسٹاک کا کیا ہوگا، لیکن لوگوں نے دیکھتے ہی دیکھتے موٹر سائیکلیں خرید لیں۔
  • جہاں پر اسٹاک اب ہے ، وہاں خریدنے کے لئے بھیڑ لگی ہوئی ہے۔ انشورنس کا آفر دے کر بھی انہیں لبھايا گیا۔ لوگوں 9000 سے 22 ہزار روپے تک کی چھوٹ دی جارہی ہے۔
  • خیال رہے کہ سپریم کورٹ نے بی ایس تھری گاڑیوں پر روک لگا دی ہے۔ اس حکم سے 8 لاکھ نئی گاڑیوں پر اثر پڑا ہے، جن میں سے تقریبا 6.71 لاکھ وہیلر گاڑی ہیں۔
  • اگرچہ گاڑی مینوفیکچررس کی تنظیم کی جانب سے کہا گیا تھا کہ کمپنیوں کو یہ اسٹاک نکالنے کے لئے تقریبا ایک سال کا وقت چاہئے۔
  • آئی ایم ایس ایم ای آف انڈیا کے چیئرمین راجیو چاولہ کے مطابق کچھ گاڑی کمپنیوں کی گاڑیاں تو فروخت ہوگئی ہیں ، لیکن کچھ کا اسٹاک پڑا ہوا ہے۔
  • ابھی بی ایس -4 والی گاڑیوں کو بنانے میں کمپنیوں کو وقت بھی درکار ہو گا۔ ایسے میں وینڈروں کا کام بھی متاثر ہونے کا امکان ہے۔
  •  سال 2010 سے مارچ 2017 تک 41 گاڑی کمپنیوں نے 13 کروڑ گریڈ تھری گاڑیاں بازار میں اتاری تھیں۔

تازہ ترین تصاویر