‘‘رام دیو کے ’’کمبھو‘‘ کے پلے اسٹور سے ہٹنے پر اڑا مذاق، ’’ملکی ایپ پر پاکستانی اداکارہ کی فوٹو

Jun 02, 2018 12:12 PM IST
1 of 7
  • یوگ گرو بابا رام دیو کی کمپنی پتنجلی نے بدھ کے روز دنیا کی سب سے بڑی میسجنگ ایپ واٹس ایپ کا مقابلہ کرنے کے لئے ’ کمبھو‘ ایپ لانچ کیا ہے۔ لیکن گوگل پلے اسٹور اور آئی او ایس سے اس ایپ کو لانچ کے کچھ گھوٹیوں میں ہی ہٹا لیا گیا۔ کمپنی نے ٹویٹ کر کہا کہ کمبھو پر زیادہ ٹریفک کے مدنظر ہم اپنی سرویس کو اپگریڈ کر رہے ہیں اور ہم جلد ہی واپس آپیں گے۔ ہمارے ساتھ بنے رہیں۔

    یوگ گرو بابا رام دیو کی کمپنی پتنجلی نے بدھ کے روز دنیا کی سب سے بڑی میسجنگ ایپ واٹس ایپ کا مقابلہ کرنے کے لئے ’ کمبھو‘ ایپ لانچ کیا ہے۔ لیکن گوگل پلے اسٹور اور آئی او ایس سے اس ایپ کو لانچ کے کچھ گھوٹیوں میں ہی ہٹا لیا گیا۔ کمپنی نے ٹویٹ کر کہا کہ کمبھو پر زیادہ ٹریفک کے مدنظر ہم اپنی سرویس کو اپگریڈ کر رہے ہیں اور ہم جلد ہی واپس آپیں گے۔ ہمارے ساتھ بنے رہیں۔

  • مگر خبر کے مطابق پلے اسٹور سے ہٹنے کی کوئی آور بھی وجہ بتائی جا رہی ہے ۔ اس ایپ کو مکمل طور پر ملکی بتایا گیا اور کہا گیا کہ یہ واٹس ایپ کا مقابلہ کرےگا۔ حالانکہ کچھ وقت بعد ہی یہ لوگوں کی نظروں میں آگیا اور ایسا پایا گیا کہ بابا کا یہ ایپ ایک امریکی میسجنگ ایپ ’’ بولو ‘‘ کی کاپی ہے جسے کیلیفورنہ کی ایک فریمونٹ نام کی کمپنی نے بنایا ہے۔

    مگر خبر کے مطابق پلے اسٹور سے ہٹنے کی کوئی آور بھی وجہ بتائی جا رہی ہے ۔ اس ایپ کو مکمل طور پر ملکی بتایا گیا اور کہا گیا کہ یہ واٹس ایپ کا مقابلہ کرےگا۔ حالانکہ کچھ وقت بعد ہی یہ لوگوں کی نظروں میں آگیا اور ایسا پایا گیا کہ بابا کا یہ ایپ ایک امریکی میسجنگ ایپ ’’ بولو ‘‘ کی کاپی ہے جسے کیلیفورنہ کی ایک فریمونٹ نام کی کمپنی نے بنایا ہے۔

  • خبروں کے مطابق الٹ نیوز نے اس پر تحقیقات کی اور انہوں نے پہلے انڈائڈ فون پر پلے اسٹور سے کمبھو ایپ کو ڈاونلوڈ کیا تو انہیں پتہ چلا کہ ایپ کو ہٹا دیا گیا ہے اور ساتھ  دیکھا کہ کئی جگہوں پر ’’ بولو ‘‘ ایپ پر ریفر کیا جا رہا ہے ۔ جس سے یہ بات واضح ہوئی کی کمبھو ایپ کو ’’ بولو چیٹ ‘‘ سے ریبرانڈ کیا گیاہے۔

    خبروں کے مطابق الٹ نیوز نے اس پر تحقیقات کی اور انہوں نے پہلے انڈائڈ فون پر پلے اسٹور سے کمبھو ایپ کو ڈاونلوڈ کیا تو انہیں پتہ چلا کہ ایپ کو ہٹا دیا گیا ہے اور ساتھ  دیکھا کہ کئی جگہوں پر ’’ بولو ‘‘ ایپ پر ریفر کیا جا رہا ہے ۔ جس سے یہ بات واضح ہوئی کی کمبھو ایپ کو ’’ بولو چیٹ ‘‘ سے ریبرانڈ کیا گیاہے۔

  • قابل غور ہے کہ لانچ کے کچھ وقت بعد ہی اس ایپ کو لوگو نے جلدی سے ڈاونلوڈ کیا اور گھنٹے کے اندر 50 ہزار ڈانلوڈ ہو گئے ۔ حالانکہ اس کے پلے اسٹور سے ہٹ جانے پر ٹوتٹر پر یوزرس نے خوب مذاق اڑایا۔

    قابل غور ہے کہ لانچ کے کچھ وقت بعد ہی اس ایپ کو لوگو نے جلدی سے ڈاونلوڈ کیا اور گھنٹے کے اندر 50 ہزار ڈانلوڈ ہو گئے ۔ حالانکہ اس کے پلے اسٹور سے ہٹ جانے پر ٹوتٹر پر یوزرس نے خوب مذاق اڑایا۔

  • تصویر

    تصویر

  • تصویر

    تصویر

  • تصویر

    تصویر

  • مگر خبر کے مطابق پلے اسٹور سے ہٹنے کی کوئی آور بھی وجہ بتائی جا رہی ہے ۔ اس ایپ کو مکمل طور پر ملکی بتایا گیا اور کہا گیا کہ یہ واٹس ایپ کا مقابلہ کرےگا۔ حالانکہ کچھ وقت بعد ہی یہ لوگوں کی نظروں میں آگیا اور ایسا پایا گیا کہ بابا کا یہ ایپ ایک امریکی میسجنگ ایپ ’’ بولو ‘‘ کی کاپی ہے جسے کیلیفورنہ کی ایک فریمونٹ نام کی کمپنی نے بنایا ہے۔
  • خبروں کے مطابق الٹ نیوز نے اس پر تحقیقات کی اور انہوں نے پہلے انڈائڈ فون پر پلے اسٹور سے کمبھو ایپ کو ڈاونلوڈ کیا تو انہیں پتہ چلا کہ ایپ کو ہٹا دیا گیا ہے اور ساتھ  دیکھا کہ کئی جگہوں پر ’’ بولو ‘‘ ایپ پر ریفر کیا جا رہا ہے ۔ جس سے یہ بات واضح ہوئی کی کمبھو ایپ کو ’’ بولو چیٹ ‘‘ سے ریبرانڈ کیا گیاہے۔
  • قابل غور ہے کہ لانچ کے کچھ وقت بعد ہی اس ایپ کو لوگو نے جلدی سے ڈاونلوڈ کیا اور گھنٹے کے اندر 50 ہزار ڈانلوڈ ہو گئے ۔ حالانکہ اس کے پلے اسٹور سے ہٹ جانے پر ٹوتٹر پر یوزرس نے خوب مذاق اڑایا۔
  • تصویر
  • تصویر
  • تصویر

تازہ ترین تصاویر