ممبرا میں بس ڈرائیورسلیم شیخ کا استقبال، سلمیٰ آغا نے دیا شہزادہ سلیم کا خطاب

Jul 22, 2017 08:31 PM IST
1 of 9
  • کشمیر میں امرناتھ یاترا کے دوران یاتریوں کی بس پر ہوئے دہشت گردانہ حملہ کی جس طرح سے نہ صرف پورے ملک میں بلکہ پوری دنیا میں مذمت کی جارہی ہے اسی طرح سے اس حملہ میں اپنی جان پر کھیل کر جس دانشمندی سے بس کے ڈرائیور سلیم شیخ نے 50 یاتریوں کی جان بچائی ہے چہار سو سلیم شیخ کے اس کارنامہ اور حوصلہ کی بھی پذیرائی کی جا رہی ہے۔ سلیم شیخ نے اس حادثہ میں نہ صرف 50 لوگوں کی جانیں بچائیں بلکہ انھوں نے دہشت گردوں کے منصوبوں کو بھی ناکام بنا دیا۔

    کشمیر میں امرناتھ یاترا کے دوران یاتریوں کی بس پر ہوئے دہشت گردانہ حملہ کی جس طرح سے نہ صرف پورے ملک میں بلکہ پوری دنیا میں مذمت کی جارہی ہے اسی طرح سے اس حملہ میں اپنی جان پر کھیل کر جس دانشمندی سے بس کے ڈرائیور سلیم شیخ نے 50 یاتریوں کی جان بچائی ہے چہار سو سلیم شیخ کے اس کارنامہ اور حوصلہ کی بھی پذیرائی کی جا رہی ہے۔ سلیم شیخ نے اس حادثہ میں نہ صرف 50 لوگوں کی جانیں بچائیں بلکہ انھوں نے دہشت گردوں کے منصوبوں کو بھی ناکام بنا دیا۔

  • ملک میں بڑھتی مذہبی منافرت، گؤ رکشا کے نام پر ہجومی تشدد ، اقلیتوں میں خوف وہراس کا ماحول اورایک طبقہ کی بڑھتی غنڈہ گردی جہاں عروج پر چل رہی ہے۔  ٹھیک ایسے ماحول میں مہاراشٹر کے جلگاؤں کے سلیم شیخ نامی ایک شخص جو ایک عرصہ سے مع  کنبہ کے گجرات کے ولساڑ میں قیام پذیر ہیں نے اپنی جان پر کھیل کر کشمیرمیں دہشت گردوں کے حملے سے 50 یاتریوں کی جان بچا نے میں کامیاب ہوکر ان فرقہ پرستوں کو منہ توڑ جواب دیا ہے جو ملک میں مذہب کے نام پر، جانور کے نام پر اور ذات پات کے نام پر منافرت پھیلانے کا کام کر رہے ہیں۔

    ملک میں بڑھتی مذہبی منافرت، گؤ رکشا کے نام پر ہجومی تشدد ، اقلیتوں میں خوف وہراس کا ماحول اورایک طبقہ کی بڑھتی غنڈہ گردی جہاں عروج پر چل رہی ہے۔ ٹھیک ایسے ماحول میں مہاراشٹر کے جلگاؤں کے سلیم شیخ نامی ایک شخص جو ایک عرصہ سے مع کنبہ کے گجرات کے ولساڑ میں قیام پذیر ہیں نے اپنی جان پر کھیل کر کشمیرمیں دہشت گردوں کے حملے سے 50 یاتریوں کی جان بچا نے میں کامیاب ہوکر ان فرقہ پرستوں کو منہ توڑ جواب دیا ہے جو ملک میں مذہب کے نام پر، جانور کے نام پر اور ذات پات کے نام پر منافرت پھیلانے کا کام کر رہے ہیں۔

  •  ایسے میں اس بہادر شخص کی حوصلہ افزائی کرنا یقیناً سماجی و قومی جذبہ ہی کہلائے گا۔

    ایسے میں اس بہادر شخص کی حوصلہ افزائی کرنا یقیناً سماجی و قومی جذبہ ہی کہلائے گا۔

  • اسی سلسلے میں ممبئی سے متصل مسلم اکثریتی شہر ممبرا میں یہاں کے ایم ایل اے جتیندر اوہاڈ، این سی پی کے صدر شمیم خان اور کارپوریٹر شانو پٹھان کی جانب سے سلیم کے اعزاز میں ایک استقبالیہ تقریب منعقد کی  گئی جس میں نہ صرف شہر کی معزز شخصیات نے شرکت کی بلکہ اس تقریب میں فلم اداکارہ سلمہ آغا، علی خان، گلوکار منوج راٹھور بھی شریک ہوئے ۔

    اسی سلسلے میں ممبئی سے متصل مسلم اکثریتی شہر ممبرا میں یہاں کے ایم ایل اے جتیندر اوہاڈ، این سی پی کے صدر شمیم خان اور کارپوریٹر شانو پٹھان کی جانب سے سلیم کے اعزاز میں ایک استقبالیہ تقریب منعقد کی گئی جس میں نہ صرف شہر کی معزز شخصیات نے شرکت کی بلکہ اس تقریب میں فلم اداکارہ سلمہ آغا، علی خان، گلوکار منوج راٹھور بھی شریک ہوئے ۔

  •  جہاں سملہ آغا نے سلیم شیخ کو شہزادہ سلیم کے خطاب سے نوازا ۔ اس تقریب میں سلیم شیخ کا پھولوں سے استقبال کرنے کے بعد انھیں سماجی تنظیم اتحاد ویلفئیر ٹرسٹ اور سلطانہ ویلفئیر ٹرسٹ کی جانب سے ایک لاکھ روپیہ کا چیک بطور نذرانہ پیش کیا گیا۔

    جہاں سملہ آغا نے سلیم شیخ کو شہزادہ سلیم کے خطاب سے نوازا ۔ اس تقریب میں سلیم شیخ کا پھولوں سے استقبال کرنے کے بعد انھیں سماجی تنظیم اتحاد ویلفئیر ٹرسٹ اور سلطانہ ویلفئیر ٹرسٹ کی جانب سے ایک لاکھ روپیہ کا چیک بطور نذرانہ پیش کیا گیا۔

  • اس تقریب کے دوران مقامی ایم ایل اے و پروگرام کے آرگنائزر ایم ایل اے جتیندر اوہاڈ نے کہا کہ آج جو لوگ ملک میں مذہب کے نام پر نفرت پھیلانے کا کام کر رہے ہیں انھیں معلوم ہونا چاہئے کہ امرناتھ میں بغیر مسلمانوں کے تعاون سے آپ کی بھکتی مکمل نہیں ہوتی ہے۔

    اس تقریب کے دوران مقامی ایم ایل اے و پروگرام کے آرگنائزر ایم ایل اے جتیندر اوہاڈ نے کہا کہ آج جو لوگ ملک میں مذہب کے نام پر نفرت پھیلانے کا کام کر رہے ہیں انھیں معلوم ہونا چاہئے کہ امرناتھ میں بغیر مسلمانوں کے تعاون سے آپ کی بھکتی مکمل نہیں ہوتی ہے۔

  • یہاں پھول بیچنے والا، آ پ کو اس گھاٹی میں پہنچانے والا اورپوجا کے سارے سامان بیچنے والا مسلمان ہی ملے گا یہاں تک کہ امرناتھ گپھا کو تلاش کرنے والا شخص بھی ایک مسلم چرواہا ہی تھا ۔

    یہاں پھول بیچنے والا، آ پ کو اس گھاٹی میں پہنچانے والا اورپوجا کے سارے سامان بیچنے والا مسلمان ہی ملے گا یہاں تک کہ امرناتھ گپھا کو تلاش کرنے والا شخص بھی ایک مسلم چرواہا ہی تھا ۔

  • سلیم نے بتایا کہ ان کے ا س کارنامہ سے پورا ملک خوش ہے۔ اس میں کیا ہندو اور کیا مسلمان سبھی انکا استقبال کر رہے ہیں۔

    سلیم نے بتایا کہ ان کے ا س کارنامہ سے پورا ملک خوش ہے۔ اس میں کیا ہندو اور کیا مسلمان سبھی انکا استقبال کر رہے ہیں۔

  • کشمیر، گجرات اور دیگر ریاستوں کی حکومتوں کے بھی فون آئے ہیں ان کی ہمت افزائی کے لئے۔

    کشمیر، گجرات اور دیگر ریاستوں کی حکومتوں کے بھی فون آئے ہیں ان کی ہمت افزائی کے لئے۔

  • ملک میں بڑھتی مذہبی منافرت، گؤ رکشا کے نام پر ہجومی تشدد ، اقلیتوں میں خوف وہراس کا ماحول اورایک طبقہ کی بڑھتی غنڈہ گردی جہاں عروج پر چل رہی ہے۔  ٹھیک ایسے ماحول میں مہاراشٹر کے جلگاؤں کے سلیم شیخ نامی ایک شخص جو ایک عرصہ سے مع  کنبہ کے گجرات کے ولساڑ میں قیام پذیر ہیں نے اپنی جان پر کھیل کر کشمیرمیں دہشت گردوں کے حملے سے 50 یاتریوں کی جان بچا نے میں کامیاب ہوکر ان فرقہ پرستوں کو منہ توڑ جواب دیا ہے جو ملک میں مذہب کے نام پر، جانور کے نام پر اور ذات پات کے نام پر منافرت پھیلانے کا کام کر رہے ہیں۔
  •  ایسے میں اس بہادر شخص کی حوصلہ افزائی کرنا یقیناً سماجی و قومی جذبہ ہی کہلائے گا۔
  • اسی سلسلے میں ممبئی سے متصل مسلم اکثریتی شہر ممبرا میں یہاں کے ایم ایل اے جتیندر اوہاڈ، این سی پی کے صدر شمیم خان اور کارپوریٹر شانو پٹھان کی جانب سے سلیم کے اعزاز میں ایک استقبالیہ تقریب منعقد کی  گئی جس میں نہ صرف شہر کی معزز شخصیات نے شرکت کی بلکہ اس تقریب میں فلم اداکارہ سلمہ آغا، علی خان، گلوکار منوج راٹھور بھی شریک ہوئے ۔
  •  جہاں سملہ آغا نے سلیم شیخ کو شہزادہ سلیم کے خطاب سے نوازا ۔ اس تقریب میں سلیم شیخ کا پھولوں سے استقبال کرنے کے بعد انھیں سماجی تنظیم اتحاد ویلفئیر ٹرسٹ اور سلطانہ ویلفئیر ٹرسٹ کی جانب سے ایک لاکھ روپیہ کا چیک بطور نذرانہ پیش کیا گیا۔
  • اس تقریب کے دوران مقامی ایم ایل اے و پروگرام کے آرگنائزر ایم ایل اے جتیندر اوہاڈ نے کہا کہ آج جو لوگ ملک میں مذہب کے نام پر نفرت پھیلانے کا کام کر رہے ہیں انھیں معلوم ہونا چاہئے کہ امرناتھ میں بغیر مسلمانوں کے تعاون سے آپ کی بھکتی مکمل نہیں ہوتی ہے۔
  • یہاں پھول بیچنے والا، آ پ کو اس گھاٹی میں پہنچانے والا اورپوجا کے سارے سامان بیچنے والا مسلمان ہی ملے گا یہاں تک کہ امرناتھ گپھا کو تلاش کرنے والا شخص بھی ایک مسلم چرواہا ہی تھا ۔
  • سلیم نے بتایا کہ ان کے ا س کارنامہ سے پورا ملک خوش ہے۔ اس میں کیا ہندو اور کیا مسلمان سبھی انکا استقبال کر رہے ہیں۔
  • کشمیر، گجرات اور دیگر ریاستوں کی حکومتوں کے بھی فون آئے ہیں ان کی ہمت افزائی کے لئے۔

تازہ ترین تصاویر