Live Results Assembly Elections 2018

کاؤنسل میں ہوئے اہم فیصلے:انٹر اسٹیٹ ای۔وے بل ایک اپریل سے ہوگا نافذ GST

Mar 10, 2018 09:09 PM IST
1 of 4
  •  جی ایس ٹی کی میٹنگ میں کاروباریوں کو راحت دیتے ہوئے۔ریورس چارج کو ٹالنے پر فیصلہ کیا ہے۔وہیں ای۔وے بل 1اپریل سے ہوگا۔اس کے علاوہ 15اپریل سے انٹرا اسٹیٹ ای۔وے بل نافذ ہوگا۔آپ کو بتادیں کہ ریاست کے اندر ہی اسٹاک ٹرانسپورٹ کرنے کیلئے اسٹیٹ ای۔وے بل بنے گا۔جبلہ ایک ریاست سے دوسری ریاست میں سامان بھیجنے یا منگانے کیلئے انٹر اسٹیٹ ای۔وے بل بنے گا۔اس کے علاوہ جی ایس ٹی کاؤنسل کی 26 ویں میٹنگ میں ریٹرن کو آسان بنانے کو لیکر فی الحال کوئی فیصلہ نہیں ہو پایا ہے۔

    جی ایس ٹی کی میٹنگ میں کاروباریوں کو راحت دیتے ہوئے۔ریورس چارج کو ٹالنے پر فیصلہ کیا ہے۔وہیں ای۔وے بل 1اپریل سے ہوگا۔اس کے علاوہ 15اپریل سے انٹرا اسٹیٹ ای۔وے بل نافذ ہوگا۔آپ کو بتادیں کہ ریاست کے اندر ہی اسٹاک ٹرانسپورٹ کرنے کیلئے اسٹیٹ ای۔وے بل بنے گا۔جبلہ ایک ریاست سے دوسری ریاست میں سامان بھیجنے یا منگانے کیلئے انٹر اسٹیٹ ای۔وے بل بنے گا۔اس کے علاوہ جی ایس ٹی کاؤنسل کی 26 ویں میٹنگ میں ریٹرن کو آسان بنانے کو لیکر فی الحال کوئی فیصلہ نہیں ہو پایا ہے۔

  • جی ایس ٹی کاؤنسل کے فیصلہ کی میٹنگ میں ای۔وے بل کی تیاریوں کا جائیزہ لیا گیا۔اس کے بعد کاؤنسل نے فیصلہ لیا کہ ملک بھر میں انٹر اسٹیٹ ای۔وے بل 1اپریل سے نافذ ہوگا۔وہیں انٹرا اسٹیٹ ای۔وے بل15 اپریل سے مرحلہ وار طریقے سے ریاست میں نافذ ہوگا،فی الحال انٹراسٹیٹ ای۔وے بل تینوں ریاستوں کیرالہ،کرناٹک،تمل ناڈو میں 15 اپریل سے نافذ ہوگا اور اس کے بعد دیگر ریاستوں میں نافذ کیا جائیگا۔اس کے علاوہ کاؤنسل نے ایکسپورٹس کو مل رہی چھوٹ کو بھی 6 مہینے کیلئے بڑھا دیاہے۔اگلی سلائڈ میں جانئے کیا ہے ای۔وے بل۔۔۔

    جی ایس ٹی کاؤنسل کے فیصلہ کی میٹنگ میں ای۔وے بل کی تیاریوں کا جائیزہ لیا گیا۔اس کے بعد کاؤنسل نے فیصلہ لیا کہ ملک بھر میں انٹر اسٹیٹ ای۔وے بل 1اپریل سے نافذ ہوگا۔وہیں انٹرا اسٹیٹ ای۔وے بل15 اپریل سے مرحلہ وار طریقے سے ریاست میں نافذ ہوگا،فی الحال انٹراسٹیٹ ای۔وے بل تینوں ریاستوں کیرالہ،کرناٹک،تمل ناڈو میں 15 اپریل سے نافذ ہوگا اور اس کے بعد دیگر ریاستوں میں نافذ کیا جائیگا۔اس کے علاوہ کاؤنسل نے ایکسپورٹس کو مل رہی چھوٹ کو بھی 6 مہینے کیلئے بڑھا دیاہے۔اگلی سلائڈ میں جانئے کیا ہے ای۔وے بل۔۔۔

  • کیا ہے ای وے بل؟ جی ایس ٹی نافذ ہونے کے بعد 50 ہزار روپئے یا زیادہ کے مال کو ایک ریاست سے دوسری ریاست یا ریاست کے اندر 50 کلو میٹر یا زیادہ دوری تک لے جانے کیلئے الیکٹرانک پرمٹ کی ضرورت ہوگی۔اس الیکٹرانک بک کو ہی ای۔وے بل کہتے ہیں۔جو جی ایس ٹی کے تحت آتا ہے۔اگلی سلائیڈ میں جانئے کیا ہے ریورس چارج میکینزم۔۔۔

    کیا ہے ای وے بل؟ جی ایس ٹی نافذ ہونے کے بعد 50 ہزار روپئے یا زیادہ کے مال کو ایک ریاست سے دوسری ریاست یا ریاست کے اندر 50 کلو میٹر یا زیادہ دوری تک لے جانے کیلئے الیکٹرانک پرمٹ کی ضرورت ہوگی۔اس الیکٹرانک بک کو ہی ای۔وے بل کہتے ہیں۔جو جی ایس ٹی کے تحت آتا ہے۔اگلی سلائیڈ میں جانئے کیا ہے ریورس چارج میکینزم۔۔۔

  •   ریورس چارج میکینزم:جی ایس ٹی میں عام طور پر سپلائر یعنی سامان یا کسی بھی طرح کی سروس کو بیچنے والا شخص خریدنے والے سے جی ایس ٹی چارج کرتا ہے اور حکومت کو جمع کرواتا ہے۔لیکن کچھ حالات میں جی ایس ٹی کی ذمہ داری سپلائر پر نہ ہو کر ریسیور یعنی خریدنے والے شخص پر ہوتی ہے۔اسے ہی ریورس چارج میکینزم ر(آر سی ایم) کہتے ہیں۔ریورس چارج میں خریدنے والا جی ایس ٹی کی ادائیگی بیچنے والے کو نہ کرکے سیدھا حکومت کو جمع کر واتا ہے۔بھی ہوتا ہے۔ کچھ حالات میں   (Partial Reverse Charge) یعنی کہ جی ایس ٹی کے کچھ حصے کی ذمہ داری خریدار پر اور باقی حصے کی ذمہ داری بیچنے والے پر ہوتی ہے۔

    ریورس چارج میکینزم:جی ایس ٹی میں عام طور پر سپلائر یعنی سامان یا کسی بھی طرح کی سروس کو بیچنے والا شخص خریدنے والے سے جی ایس ٹی چارج کرتا ہے اور حکومت کو جمع کرواتا ہے۔لیکن کچھ حالات میں جی ایس ٹی کی ذمہ داری سپلائر پر نہ ہو کر ریسیور یعنی خریدنے والے شخص پر ہوتی ہے۔اسے ہی ریورس چارج میکینزم ر(آر سی ایم) کہتے ہیں۔ریورس چارج میں خریدنے والا جی ایس ٹی کی ادائیگی بیچنے والے کو نہ کرکے سیدھا حکومت کو جمع کر واتا ہے۔بھی ہوتا ہے۔ کچھ حالات میں (Partial Reverse Charge) یعنی کہ جی ایس ٹی کے کچھ حصے کی ذمہ داری خریدار پر اور باقی حصے کی ذمہ داری بیچنے والے پر ہوتی ہے۔

  • جی ایس ٹی کاؤنسل کے فیصلہ کی میٹنگ میں ای۔وے بل کی تیاریوں کا جائیزہ لیا گیا۔اس کے بعد کاؤنسل نے فیصلہ لیا کہ ملک بھر میں انٹر اسٹیٹ ای۔وے بل 1اپریل سے نافذ ہوگا۔وہیں انٹرا اسٹیٹ ای۔وے بل15 اپریل سے مرحلہ وار طریقے سے ریاست میں نافذ ہوگا،فی الحال انٹراسٹیٹ ای۔وے بل تینوں ریاستوں کیرالہ،کرناٹک،تمل ناڈو میں 15 اپریل سے نافذ ہوگا اور اس کے بعد دیگر ریاستوں میں نافذ کیا جائیگا۔اس کے علاوہ کاؤنسل نے ایکسپورٹس کو مل رہی چھوٹ کو بھی 6 مہینے کیلئے بڑھا دیاہے۔اگلی سلائڈ میں جانئے کیا ہے ای۔وے بل۔۔۔
  • کیا ہے ای وے بل؟ جی ایس ٹی نافذ ہونے کے بعد 50 ہزار روپئے یا زیادہ کے مال کو ایک ریاست سے دوسری ریاست یا ریاست کے اندر 50 کلو میٹر یا زیادہ دوری تک لے جانے کیلئے الیکٹرانک پرمٹ کی ضرورت ہوگی۔اس الیکٹرانک بک کو ہی ای۔وے بل کہتے ہیں۔جو جی ایس ٹی کے تحت آتا ہے۔اگلی سلائیڈ میں جانئے کیا ہے ریورس چارج میکینزم۔۔۔
  •   ریورس چارج میکینزم:جی ایس ٹی میں عام طور پر سپلائر یعنی سامان یا کسی بھی طرح کی سروس کو بیچنے والا شخص خریدنے والے سے جی ایس ٹی چارج کرتا ہے اور حکومت کو جمع کرواتا ہے۔لیکن کچھ حالات میں جی ایس ٹی کی ذمہ داری سپلائر پر نہ ہو کر ریسیور یعنی خریدنے والے شخص پر ہوتی ہے۔اسے ہی ریورس چارج میکینزم ر(آر سی ایم) کہتے ہیں۔ریورس چارج میں خریدنے والا جی ایس ٹی کی ادائیگی بیچنے والے کو نہ کرکے سیدھا حکومت کو جمع کر واتا ہے۔بھی ہوتا ہے۔ کچھ حالات میں   (Partial Reverse Charge) یعنی کہ جی ایس ٹی کے کچھ حصے کی ذمہ داری خریدار پر اور باقی حصے کی ذمہ داری بیچنے والے پر ہوتی ہے۔

تازہ ترین تصاویر