دلتوں اور مسلمانوں کی آواز کو بلند کرنے کیلئے نئی تنظیم کی تشکیل پر زور، جگنیش میوانی اور مسلم دانشوران آئے ایک ساتھ

Jan 19, 2018 09:27 PM IST
1 of 8
  • گجرات میں دلت اورمسلم برادری کےلوگوں کوعام طور پرکسی نہ کسی مسئلہ کولے کر پریشان کیا جاتا ہے، اس لئےدلت مسلم اتحاد کی جھلک بار بار دیکھنےکو ملتی ہے۔ کچھ اسی طرح کا نظارہ اس وقت دیکھنے کوملا جب دلت لیڈرجگنیش میوانی اورمسلم دانشوران ایک ساتھ اسٹیج شیئر کرتے ہوئے نظرآئے۔ احمدآباد کے سرخیز علاقہ میں ہماری آواز نامی تنظیم کی جانب سے ہونے والے دلت مسلم اتحاد پروگرام میں جم کر دلت -مسلم اتحاد کا نعرہ بلند کیا گیا ۔ ساتھ ہی ساتھ اس بات پر بھی زور دیا گیا کہ کس طرح مسلم برادری کے لوگوں کو اچھی سے اچھی تعلیم فراہم کی جا سکتی ہے۔

    گجرات میں دلت اورمسلم برادری کےلوگوں کوعام طور پرکسی نہ کسی مسئلہ کولے کر پریشان کیا جاتا ہے، اس لئےدلت مسلم اتحاد کی جھلک بار بار دیکھنےکو ملتی ہے۔ کچھ اسی طرح کا نظارہ اس وقت دیکھنے کوملا جب دلت لیڈرجگنیش میوانی اورمسلم دانشوران ایک ساتھ اسٹیج شیئر کرتے ہوئے نظرآئے۔ احمدآباد کے سرخیز علاقہ میں ہماری آواز نامی تنظیم کی جانب سے ہونے والے دلت مسلم اتحاد پروگرام میں جم کر دلت -مسلم اتحاد کا نعرہ بلند کیا گیا ۔ ساتھ ہی ساتھ اس بات پر بھی زور دیا گیا کہ کس طرح مسلم برادری کے لوگوں کو اچھی سے اچھی تعلیم فراہم کی جا سکتی ہے۔

  •  علاوہ ازیں پروگرام میں یہ بھی فیصلہ کیا گیا کہ آنے والے دنوں میں ایک ایسی تنظیم بنائی جائے گی ، جس کے تحت دلت اور مسلم برادری کے لوگوں کی دبی اور کچلی آواز کو بلند کی جا سکے۔ پروگرام میں بڑی تعداد میں دلتوں اور مسلمانوں نے شرکت کی ۔

    علاوہ ازیں پروگرام میں یہ بھی فیصلہ کیا گیا کہ آنے والے دنوں میں ایک ایسی تنظیم بنائی جائے گی ، جس کے تحت دلت اور مسلم برادری کے لوگوں کی دبی اور کچلی آواز کو بلند کی جا سکے۔ پروگرام میں بڑی تعداد میں دلتوں اور مسلمانوں نے شرکت کی ۔

  •  پروگرام کے پہلے سیشن میں سویڈن میں رہنے والی گجرات کی مسلم ڈاکٹر سمیہ شیخ کو بلایا گیا،  جنہوں نے مسلم عورتیں کس طرح تعلیم سے وابستہ سکتی ہیں ،  اس کے بارے میں جانکاری دی ۔ انہوں نے کہا کہ ایسے پروگرام کئی معنوں میں خاص ہوتے ہیں، کیونکہ دلت -مسلم اتحاد کےساتھ ہی ساتھ مسلمان کس طریقہ سےتعلیم کےمیدان میں آگے بڑھ سکتے ہیں، اس کے بارے میں جانکاری حاصل کرنا ضروری ہے۔

    پروگرام کے پہلے سیشن میں سویڈن میں رہنے والی گجرات کی مسلم ڈاکٹر سمیہ شیخ کو بلایا گیا، جنہوں نے مسلم عورتیں کس طرح تعلیم سے وابستہ سکتی ہیں ، اس کے بارے میں جانکاری دی ۔ انہوں نے کہا کہ ایسے پروگرام کئی معنوں میں خاص ہوتے ہیں، کیونکہ دلت -مسلم اتحاد کےساتھ ہی ساتھ مسلمان کس طریقہ سےتعلیم کےمیدان میں آگے بڑھ سکتے ہیں، اس کے بارے میں جانکاری حاصل کرنا ضروری ہے۔

  • سرخیز علاقہ میں موجود كرسینٹ اسکول میں ہونے والے دلت مسلم اتحاد کے پروگرام کے دوسرے حصہ میں گجرات کے دلت لیڈر جگنیش میوانی ممبر اسمبلی بننے کے بعد پہلی مرتبہ مسلم برادری کے لوگوں کے علاقہ میں ہونے والے پروگرام میں شریک ہوئے۔

    سرخیز علاقہ میں موجود كرسینٹ اسکول میں ہونے والے دلت مسلم اتحاد کے پروگرام کے دوسرے حصہ میں گجرات کے دلت لیڈر جگنیش میوانی ممبر اسمبلی بننے کے بعد پہلی مرتبہ مسلم برادری کے لوگوں کے علاقہ میں ہونے والے پروگرام میں شریک ہوئے۔

  •  انہوں نےگجرات میں ہونے والے وکاس پر سوال اٹھایا اورکہا اگر گجرات میں ترقی ہوئی ہے ، تو دلت اور مسلم برادری کے لوگوں کے علاقہ کے ساتھ امتیازی سلوک کیوں کیا جا رہا ہے۔

    انہوں نےگجرات میں ہونے والے وکاس پر سوال اٹھایا اورکہا اگر گجرات میں ترقی ہوئی ہے ، تو دلت اور مسلم برادری کے لوگوں کے علاقہ کے ساتھ امتیازی سلوک کیوں کیا جا رہا ہے۔

  • میوانی نے مزید کہا کہ گجرات میں گائے کے نام پر سب سے زیادہ دلت اور مسلم برادری کے لوگوں کو پریشان کیا جا رہا ہے، اس لئے آج سب سے زیادہ ضروری ہو گیا ہےکہ دلت اور مسلم برادری کے لوگ ایک ہو جائیں ۔

    میوانی نے مزید کہا کہ گجرات میں گائے کے نام پر سب سے زیادہ دلت اور مسلم برادری کے لوگوں کو پریشان کیا جا رہا ہے، اس لئے آج سب سے زیادہ ضروری ہو گیا ہےکہ دلت اور مسلم برادری کے لوگ ایک ہو جائیں ۔

  •  انہوں نے کہا کہ جگنیش میوانی کو اس مقام پر پہچانے کے لئے جتنی محنت دلت برادری کے لوگوں نے کی ہے ، اتنی ہی محنت مسلم برادری کے لوگوں نے کی بھی ہے۔ اسلئے اب ضروری ہو گیا ہے کہ دلت اور مسلم برادری کے مسائل کو گجرات اسمبلی میں پورے زور اور شور سے اٹھایا جائے ۔

    انہوں نے کہا کہ جگنیش میوانی کو اس مقام پر پہچانے کے لئے جتنی محنت دلت برادری کے لوگوں نے کی ہے ، اتنی ہی محنت مسلم برادری کے لوگوں نے کی بھی ہے۔ اسلئے اب ضروری ہو گیا ہے کہ دلت اور مسلم برادری کے مسائل کو گجرات اسمبلی میں پورے زور اور شور سے اٹھایا جائے ۔

  • پروگرام آرگنائزر اور ہماری آواز تنظیم کے كنوينرکوثرعلی سید نے کہا کہ ہم آنے والےدنوں میں ایک ایسی تنظیم بنانے کے بارے میں سوچ رہےہیں، جس کے ذریعہ دلت اور مسلم برادری کے لوگوں کی دبی اور کچلی آواز کو بلند کی جا سکے۔

    پروگرام آرگنائزر اور ہماری آواز تنظیم کے كنوينرکوثرعلی سید نے کہا کہ ہم آنے والےدنوں میں ایک ایسی تنظیم بنانے کے بارے میں سوچ رہےہیں، جس کے ذریعہ دلت اور مسلم برادری کے لوگوں کی دبی اور کچلی آواز کو بلند کی جا سکے۔

  •  علاوہ ازیں پروگرام میں یہ بھی فیصلہ کیا گیا کہ آنے والے دنوں میں ایک ایسی تنظیم بنائی جائے گی ، جس کے تحت دلت اور مسلم برادری کے لوگوں کی دبی اور کچلی آواز کو بلند کی جا سکے۔ پروگرام میں بڑی تعداد میں دلتوں اور مسلمانوں نے شرکت کی ۔
  •  پروگرام کے پہلے سیشن میں سویڈن میں رہنے والی گجرات کی مسلم ڈاکٹر سمیہ شیخ کو بلایا گیا،  جنہوں نے مسلم عورتیں کس طرح تعلیم سے وابستہ سکتی ہیں ،  اس کے بارے میں جانکاری دی ۔ انہوں نے کہا کہ ایسے پروگرام کئی معنوں میں خاص ہوتے ہیں، کیونکہ دلت -مسلم اتحاد کےساتھ ہی ساتھ مسلمان کس طریقہ سےتعلیم کےمیدان میں آگے بڑھ سکتے ہیں، اس کے بارے میں جانکاری حاصل کرنا ضروری ہے۔
  • سرخیز علاقہ میں موجود كرسینٹ اسکول میں ہونے والے دلت مسلم اتحاد کے پروگرام کے دوسرے حصہ میں گجرات کے دلت لیڈر جگنیش میوانی ممبر اسمبلی بننے کے بعد پہلی مرتبہ مسلم برادری کے لوگوں کے علاقہ میں ہونے والے پروگرام میں شریک ہوئے۔
  •  انہوں نےگجرات میں ہونے والے وکاس پر سوال اٹھایا اورکہا اگر گجرات میں ترقی ہوئی ہے ، تو دلت اور مسلم برادری کے لوگوں کے علاقہ کے ساتھ امتیازی سلوک کیوں کیا جا رہا ہے۔
  • میوانی نے مزید کہا کہ گجرات میں گائے کے نام پر سب سے زیادہ دلت اور مسلم برادری کے لوگوں کو پریشان کیا جا رہا ہے، اس لئے آج سب سے زیادہ ضروری ہو گیا ہےکہ دلت اور مسلم برادری کے لوگ ایک ہو جائیں ۔
  •  انہوں نے کہا کہ جگنیش میوانی کو اس مقام پر پہچانے کے لئے جتنی محنت دلت برادری کے لوگوں نے کی ہے ، اتنی ہی محنت مسلم برادری کے لوگوں نے کی بھی ہے۔ اسلئے اب ضروری ہو گیا ہے کہ دلت اور مسلم برادری کے مسائل کو گجرات اسمبلی میں پورے زور اور شور سے اٹھایا جائے ۔
  • پروگرام آرگنائزر اور ہماری آواز تنظیم کے كنوينرکوثرعلی سید نے کہا کہ ہم آنے والےدنوں میں ایک ایسی تنظیم بنانے کے بارے میں سوچ رہےہیں، جس کے ذریعہ دلت اور مسلم برادری کے لوگوں کی دبی اور کچلی آواز کو بلند کی جا سکے۔

تازہ ترین تصاویر