کولکاتہ میں روزہ داروں کے دسترخوان پر سب سے اہم ہوتی ہے حلیم

Jun 08, 2017 10:41 PM IST
1 of 5
  • رمضان کو قران کے نزول کا مہینہ کہا جاتا ہے ۔ اس ماہ کی عبادت خاص ہوتی ہے ۔ وہیں دن بھر کے روزے کے بعد روزہ داروں کے لئے سجنے والا افطار کا دسترخوان بھی خاص ہوتا ہے ۔کولکاتا میں میں یوں تو کئی ایسی خاص ڈشیں ہیں ، جو افطار میں سجائی  جاتی ہیں ۔ تاہم ان سب میں اہمیت حلیم کو حاصل ہے ، جو نہ صرف گھروں میں بنائی  جائی ہے ، بلکہ بازروں میں بھی اس کی فروخت خوب ہوتی ہے ۔

    رمضان کو قران کے نزول کا مہینہ کہا جاتا ہے ۔ اس ماہ کی عبادت خاص ہوتی ہے ۔ وہیں دن بھر کے روزے کے بعد روزہ داروں کے لئے سجنے والا افطار کا دسترخوان بھی خاص ہوتا ہے ۔کولکاتا میں میں یوں تو کئی ایسی خاص ڈشیں ہیں ، جو افطار میں سجائی جاتی ہیں ۔ تاہم ان سب میں اہمیت حلیم کو حاصل ہے ، جو نہ صرف گھروں میں بنائی جائی ہے ، بلکہ بازروں میں بھی اس کی فروخت خوب ہوتی ہے ۔

  • مختلف طرح کی دالوں سے تیار ہونے والا حلیم غذائیت سے بھرپور ہوتی ہے ۔ یہی وجہ ہے کے روزہ کے بعد حلیم کو خصوصی طور پر خوراک میں شامل کیا جاتا ہے۔

    مختلف طرح کی دالوں سے تیار ہونے والا حلیم غذائیت سے بھرپور ہوتی ہے ۔ یہی وجہ ہے کے روزہ کے بعد حلیم کو خصوصی طور پر خوراک میں شامل کیا جاتا ہے۔

  • رمضان میں روزے سے گھنٹوں پہلے ہی مختلف ریسٹورانوں میں حلیم کی خریداری کے لیے لمبی لمبی قطاریں دیکھی جاتی ہیں۔ ان میں دیر سے آنے والے کئی لوگوں کو مایوسی کا بھی سامنا کرنا پڑتا ہے ۔ کیونکہ بنگال کے لوگ کھانے پینے کے کافی شوقین ہوتے ہیں ، جس کی وجہ حلیم کے بغیر کولکاتہ کے لوگوں کا افطار ادھورا سمجھا جاتا ہے ۔

    رمضان میں روزے سے گھنٹوں پہلے ہی مختلف ریسٹورانوں میں حلیم کی خریداری کے لیے لمبی لمبی قطاریں دیکھی جاتی ہیں۔ ان میں دیر سے آنے والے کئی لوگوں کو مایوسی کا بھی سامنا کرنا پڑتا ہے ۔ کیونکہ بنگال کے لوگ کھانے پینے کے کافی شوقین ہوتے ہیں ، جس کی وجہ حلیم کے بغیر کولکاتہ کے لوگوں کا افطار ادھورا سمجھا جاتا ہے ۔

  • دکانداروں کے مطابق حلیم مختلف طرح کی دالوں سے بنائی جاتی ہے۔ اس لئے اسکا اصل نام دلیم ہے ، لیکن اسےحلیم کے نام سے شہرت ملی اور کولکاتہ میں بھی یہ حلیم کے نام سے جاتا جاتا ہے۔

    دکانداروں کے مطابق حلیم مختلف طرح کی دالوں سے بنائی جاتی ہے۔ اس لئے اسکا اصل نام دلیم ہے ، لیکن اسےحلیم کے نام سے شہرت ملی اور کولکاتہ میں بھی یہ حلیم کے نام سے جاتا جاتا ہے۔

  • یہاں مٹن ، چکن اور شاکاہاری حلیم بھی بنائی جاتی ہیں ، جو نہ صرف مسلم بلکہ غیر مسلم طبقے میں بھی کافی مقبول ہیں ۔ کولکاتہ میں حلیم کافی مہنگی ہوتی ہے تاہم ریسٹورینٹوں  کےعلاوہ مختلف علاقوں میں رمضان کے مہینے میں حلیم کے اسٹال لگائے جاتے ہیں جو کم قیمت پر دستیاب ہوتے ہیں اور اس کا ذائقہ بھی لاجواب ہوتا ہے۔

    یہاں مٹن ، چکن اور شاکاہاری حلیم بھی بنائی جاتی ہیں ، جو نہ صرف مسلم بلکہ غیر مسلم طبقے میں بھی کافی مقبول ہیں ۔ کولکاتہ میں حلیم کافی مہنگی ہوتی ہے تاہم ریسٹورینٹوں  کےعلاوہ مختلف علاقوں میں رمضان کے مہینے میں حلیم کے اسٹال لگائے جاتے ہیں جو کم قیمت پر دستیاب ہوتے ہیں اور اس کا ذائقہ بھی لاجواب ہوتا ہے۔

  • مختلف طرح کی دالوں سے تیار ہونے والا حلیم غذائیت سے بھرپور ہوتی ہے ۔ یہی وجہ ہے کے روزہ کے بعد حلیم کو خصوصی طور پر خوراک میں شامل کیا جاتا ہے۔
  • رمضان میں روزے سے گھنٹوں پہلے ہی مختلف ریسٹورانوں میں حلیم کی خریداری کے لیے لمبی لمبی قطاریں دیکھی جاتی ہیں۔ ان میں دیر سے آنے والے کئی لوگوں کو مایوسی کا بھی سامنا کرنا پڑتا ہے ۔ کیونکہ بنگال کے لوگ کھانے پینے کے کافی شوقین ہوتے ہیں ، جس کی وجہ حلیم کے بغیر کولکاتہ کے لوگوں کا افطار ادھورا سمجھا جاتا ہے ۔
  • دکانداروں کے مطابق حلیم مختلف طرح کی دالوں سے بنائی جاتی ہے۔ اس لئے اسکا اصل نام دلیم ہے ، لیکن اسےحلیم کے نام سے شہرت ملی اور کولکاتہ میں بھی یہ حلیم کے نام سے جاتا جاتا ہے۔
  • یہاں مٹن ، چکن اور شاکاہاری حلیم بھی بنائی جاتی ہیں ، جو نہ صرف مسلم بلکہ غیر مسلم طبقے میں بھی کافی مقبول ہیں ۔ کولکاتہ میں حلیم کافی مہنگی ہوتی ہے تاہم ریسٹورینٹوں  کےعلاوہ مختلف علاقوں میں رمضان کے مہینے میں حلیم کے اسٹال لگائے جاتے ہیں جو کم قیمت پر دستیاب ہوتے ہیں اور اس کا ذائقہ بھی لاجواب ہوتا ہے۔

تازہ ترین تصاویر