اورنگ آباد میں اب تک تین درجن سے زائد عبادت گاہیں منہدم ، وقف بورڈ پہنچا ہائی کورٹ

Aug 03, 2017 11:48 PM IST
1 of 10
  •  اورنگ آباد میں سیاسی دباؤ اور دھمکیوں کے درمیان مذہبی مقامات کی انہدامی کارروائیوں کا سلسلہ جاری ہے ۔ اب تک شہر کی تین درجن سے زائد عبادت گاہوں کو منہدم کردیا گیا ہے۔ شیوسینا اسے مذہبی رنگ دینےکی کوشش کررہی ہے ۔ دوسری طرف وقف بورڈ نے سخت موقف اختیار کرتے ہوئے وقف جائیدادوں کے تحفظ کیلئے سپریم کورٹ تک جانے کا ارادہ ظاہر کیا  ہے ۔

    اورنگ آباد میں سیاسی دباؤ اور دھمکیوں کے درمیان مذہبی مقامات کی انہدامی کارروائیوں کا سلسلہ جاری ہے ۔ اب تک شہر کی تین درجن سے زائد عبادت گاہوں کو منہدم کردیا گیا ہے۔ شیوسینا اسے مذہبی رنگ دینےکی کوشش کررہی ہے ۔ دوسری طرف وقف بورڈ نے سخت موقف اختیار کرتے ہوئے وقف جائیدادوں کے تحفظ کیلئے سپریم کورٹ تک جانے کا ارادہ ظاہر کیا ہے ۔

  •   اورنگ آباد میں مذہبی مقامات کو ہٹائے جانے کےمعاملہ پرسیاست شروع ہوگئی ہے ۔ شیوسینا نے اسے مذہبی رنگ دیتے ہوئے پہلے مساجد کو منہدم کرنےکا مطالبہ کیا  ۔ اس تعلق سے شیوسینا کے درجنوں ورکروں نے میونسپل کمشنرکا گھیراؤ کیا اور ان پر جانبداری کا الزام عائد کیا۔

    اورنگ آباد میں مذہبی مقامات کو ہٹائے جانے کےمعاملہ پرسیاست شروع ہوگئی ہے ۔ شیوسینا نے اسے مذہبی رنگ دیتے ہوئے پہلے مساجد کو منہدم کرنےکا مطالبہ کیا ۔ اس تعلق سے شیوسینا کے درجنوں ورکروں نے میونسپل کمشنرکا گھیراؤ کیا اور ان پر جانبداری کا الزام عائد کیا۔

  •  جبکہ ایم آئی ایم اور دیگر مسلم لیڈروں نے کمشنر کوعدالتی حکم کی روشنی میں کام کرنے  کا مشورہ دیا ہے۔

    جبکہ ایم آئی ایم اور دیگر مسلم لیڈروں نے کمشنر کوعدالتی حکم کی روشنی میں کام کرنے کا مشورہ دیا ہے۔

  • ادھر مہاراشٹراسٹیٹ وقف بورڈ اور مائناریٹی ویلفیئر ٹرسٹ نے بامبے ہائی کورٹ اورنگ آباد بینچ کے فیصلہ پرعدالت میں انٹروین کیا ہے ۔ ہائی کورٹ نے ٹرسٹ اور بورڈ کی عرضی قبول کرلی ہے ۔

    ادھر مہاراشٹراسٹیٹ وقف بورڈ اور مائناریٹی ویلفیئر ٹرسٹ نے بامبے ہائی کورٹ اورنگ آباد بینچ کے فیصلہ پرعدالت میں انٹروین کیا ہے ۔ ہائی کورٹ نے ٹرسٹ اور بورڈ کی عرضی قبول کرلی ہے ۔

  •  وقف بورڈ کے چیئرمین کا کہنا ہے کہ 11 سو مذہبی مقامات میں جو 130 مساجد اور درگاہیں شامل ہیں، بورڈ کے پاس ان کا ریکارڈ موجود ہے ۔ بورڈ اسے عدالت کےعلم میں لائے گا۔

    وقف بورڈ کے چیئرمین کا کہنا ہے کہ 11 سو مذہبی مقامات میں جو 130 مساجد اور درگاہیں شامل ہیں، بورڈ کے پاس ان کا ریکارڈ موجود ہے ۔ بورڈ اسے عدالت کےعلم میں لائے گا۔

  • وقف بورڈ کے چیئرمین کاکہنا ہے کہ وقف جائیدادوں کو وقف بورڈ کی اجازت کے بغیر منہدم نہیں کیا جا سکتا ۔ اگر مساجد کو منہدم کیا گیا ، تو وقف بورڈ سپریم کورٹ جائے گا۔

    وقف بورڈ کے چیئرمین کاکہنا ہے کہ وقف جائیدادوں کو وقف بورڈ کی اجازت کے بغیر منہدم نہیں کیا جا سکتا ۔ اگر مساجد کو منہدم کیا گیا ، تو وقف بورڈ سپریم کورٹ جائے گا۔

  •  اورنگ آباد میونسپل کارپوریشن کی انہدامی کارروائیاں جاری ہیں۔ اب تک 30 سے زائد مذہبی مقامات کو منہدم کیا جاچکا ہے ، جن میں زیادہ تر چھوٹے مندر آستانے اور چھلے شامل ہیں ۔

    اورنگ آباد میونسپل کارپوریشن کی انہدامی کارروائیاں جاری ہیں۔ اب تک 30 سے زائد مذہبی مقامات کو منہدم کیا جاچکا ہے ، جن میں زیادہ تر چھوٹے مندر آستانے اور چھلے شامل ہیں ۔

  •  میونسپل کمشنر کا کہنا ہے کہ کسی بھی صورت میں عدالت کے احکام کی تعمیل ہوگی۔

    میونسپل کمشنر کا کہنا ہے کہ کسی بھی صورت میں عدالت کے احکام کی تعمیل ہوگی۔

  • بامبے ہائی کورٹ کی اورنگ آباد بینچ میں مذہبی مقامات کی انہدامی کارروائی سے متعلق اگلی سماعت 8 اگست کو ہوگی۔ وقف بورڈ کو امید ہے کہ انھیں اسٹے مل جائے گا ، لیکن اس کارروائی کو لے کر اقلیتی اور اکثریتی حلقوں میں تشویش کا اظہار کیا جارہا ہے ۔

    بامبے ہائی کورٹ کی اورنگ آباد بینچ میں مذہبی مقامات کی انہدامی کارروائی سے متعلق اگلی سماعت 8 اگست کو ہوگی۔ وقف بورڈ کو امید ہے کہ انھیں اسٹے مل جائے گا ، لیکن اس کارروائی کو لے کر اقلیتی اور اکثریتی حلقوں میں تشویش کا اظہار کیا جارہا ہے ۔

  •  اس پورے معاملے میں میونسپل کارپوریشن کی لیگل ایڈوائزر ارپنا تھیٹے اور دیگر سرکاری حکام کے خلاف محکمہ جاتی کارروائی کا مطالبہ کیا جارہا ہے ۔ لیگل ایڈوائزر پر الزام ہے کہ انہوں نے عدالت میں جو دستاویزات پیش کیے ہیں، اس کی روشنی میں عدالت نے سخت موقف اختیار کیا ۔

    اس پورے معاملے میں میونسپل کارپوریشن کی لیگل ایڈوائزر ارپنا تھیٹے اور دیگر سرکاری حکام کے خلاف محکمہ جاتی کارروائی کا مطالبہ کیا جارہا ہے ۔ لیگل ایڈوائزر پر الزام ہے کہ انہوں نے عدالت میں جو دستاویزات پیش کیے ہیں، اس کی روشنی میں عدالت نے سخت موقف اختیار کیا ۔

  •   اورنگ آباد میں مذہبی مقامات کو ہٹائے جانے کےمعاملہ پرسیاست شروع ہوگئی ہے ۔ شیوسینا نے اسے مذہبی رنگ دیتے ہوئے پہلے مساجد کو منہدم کرنےکا مطالبہ کیا  ۔ اس تعلق سے شیوسینا کے درجنوں ورکروں نے میونسپل کمشنرکا گھیراؤ کیا اور ان پر جانبداری کا الزام عائد کیا۔
  •  جبکہ ایم آئی ایم اور دیگر مسلم لیڈروں نے کمشنر کوعدالتی حکم کی روشنی میں کام کرنے  کا مشورہ دیا ہے۔
  • ادھر مہاراشٹراسٹیٹ وقف بورڈ اور مائناریٹی ویلفیئر ٹرسٹ نے بامبے ہائی کورٹ اورنگ آباد بینچ کے فیصلہ پرعدالت میں انٹروین کیا ہے ۔ ہائی کورٹ نے ٹرسٹ اور بورڈ کی عرضی قبول کرلی ہے ۔
  •  وقف بورڈ کے چیئرمین کا کہنا ہے کہ 11 سو مذہبی مقامات میں جو 130 مساجد اور درگاہیں شامل ہیں، بورڈ کے پاس ان کا ریکارڈ موجود ہے ۔ بورڈ اسے عدالت کےعلم میں لائے گا۔
  • وقف بورڈ کے چیئرمین کاکہنا ہے کہ وقف جائیدادوں کو وقف بورڈ کی اجازت کے بغیر منہدم نہیں کیا جا سکتا ۔ اگر مساجد کو منہدم کیا گیا ، تو وقف بورڈ سپریم کورٹ جائے گا۔
  •  اورنگ آباد میونسپل کارپوریشن کی انہدامی کارروائیاں جاری ہیں۔ اب تک 30 سے زائد مذہبی مقامات کو منہدم کیا جاچکا ہے ، جن میں زیادہ تر چھوٹے مندر آستانے اور چھلے شامل ہیں ۔
  •  میونسپل کمشنر کا کہنا ہے کہ کسی بھی صورت میں عدالت کے احکام کی تعمیل ہوگی۔
  • بامبے ہائی کورٹ کی اورنگ آباد بینچ میں مذہبی مقامات کی انہدامی کارروائی سے متعلق اگلی سماعت 8 اگست کو ہوگی۔ وقف بورڈ کو امید ہے کہ انھیں اسٹے مل جائے گا ، لیکن اس کارروائی کو لے کر اقلیتی اور اکثریتی حلقوں میں تشویش کا اظہار کیا جارہا ہے ۔
  •  اس پورے معاملے میں میونسپل کارپوریشن کی لیگل ایڈوائزر ارپنا تھیٹے اور دیگر سرکاری حکام کے خلاف محکمہ جاتی کارروائی کا مطالبہ کیا جارہا ہے ۔ لیگل ایڈوائزر پر الزام ہے کہ انہوں نے عدالت میں جو دستاویزات پیش کیے ہیں، اس کی روشنی میں عدالت نے سخت موقف اختیار کیا ۔

تازہ ترین تصاویر